جی این این سوشل

کھیل

پی ایس ایل 8 فائنل، قلندرز کا سلطانز کیخلاف بیٹنگ کا فیصلہ

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) سیزن 8 کے فائنل میچ میں  لاہور قلندرزنے ملتان سلطانز کے خلاف ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پی ایس ایل 8 فائنل، قلندرز کا سلطانز کیخلاف بیٹنگ کا فیصلہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

چیمپئن ٹیم کو خوبصورت ٹرافی کے علاوہ 12 کروڑ روپے کی خطیر انعامی رقم ملے گی جبکہ رنرز اپ کو 4 کروڑ 80 لاکھ روپے ملیں گے۔

یاد رہے کہ ایونٹ شروع ہونے سے قبل پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 8 کے فائنل کی تاریخ 19 مارچ بروز اتوار رکھی گئی تھی۔

تاہم لاہور میں خراب موسم اور ممکنہ طور پر ہونے والی بارش کے باعث پی سی بی نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے 18 مارچ بروز ہفتہ کو قذافی سٹیڈیم لاہور میں فائنل کروانے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ ریزرو ڈے کے طور پر سوموار کا دن رکھا گیا ہے۔

پاکستان

کہا ہے وہ لوگ جنہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کےلئے فارغ کیا جاتا ہے، نو منتخب صدر مسلم لیگ ن

آج سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا، نواز شریف

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کہا ہے وہ لوگ جنہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کےلئے فارغ کیا جاتا ہے، نو منتخب صدر مسلم لیگ ن

مسلم لیگ (ن) کے قائد اور نومنتخب صدر نواز شریف نے کہا ہے کہ آج ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا، بلائیں ان لوگوں کو جنہوں ںے فیصلہ دیا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کے لیے فارغ کیا جاتا ہے۔

پارٹی کے جنرل کونسل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ثاقب نثار نے مجھے زندگی بھر کے لیے پارٹی کی صدارت سے ہٹایا، آج لوگوں نے ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا، بلائیں ان لوگوں کو جنہوں ںے فیصلہ دیا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کے لیے فارغ کیا جاتا ہے مگر آج نواز شریف ایک بار پھر آپ کے سامنے کھڑا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میرے خلاف فیصلہ بھی کیا تھا؟ بیٹے سے تنخواہ نہ لینے کا؟ میں نے اپنے بیٹے سے تنخواہ نہیں لی تمہارے بیٹے سے تو تنخواہ نہیں مانگی تھی؟

نواز شریف نے کہا کہ میرے اور شہباز شریف کے رشتے کے درمیان دراڑیں ڈالنے کی کوشش کی، آفرین ہے شہباز شریف پر کہ وہ جھکے اور بکے نہیں اور اپنے بھائی کے ساتھ کھڑے رہے، مجھے اپنے بھائی پر فخر ہے، شہباز شریف کو کہا گیا کہ نواز شریف کو چھوڑیں اور آپ وزیراعظم بنیں اس پر میں گواہ ہوں کہ شہباز نے کہا میں ایسی وزارت عظمی کو ٹھوکر مارتا ہو جس میں بھائی سے بے وفائی کرنی پڑے، وہ جیل تک چلے گئے مگر اُف تک نہ کی۔

نواز شریف نے اپنی بیٹی مریم نواز کو مبارک باد دی اور کہا کہ مریم نے جیلیں کاٹیں، پارٹی کو متحرک کیا ہر امتحان میں پورا اتریں، حمزہ شہباز کو سراہتا ہوں کہ جواں مردی کے ساتھ جیل کاٹی اور جیل تک نہ کی میرے سامنے انہیں ہتھکڑیاں لگا کر لے جایا گیا، شاہد خاقان عباسی نے میرے ساتھ جیلیں کاٹیں اور اف تک نہ کی۔

انہوں نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ان کے خلاف تمام مقدمات درست ہیں اور ان پر بیرون ملک دھرنوں کے ذریعے حکومت کو کمزور کرنے کا الزام لگایا۔ نواز نے پی ٹی آئی پر تیسری قوت کی پیداوار ہونے کا الزام لگایا اور عمران خان کی دیانتداری پر سوالیہ نشان لگا دیا۔

انہوں نے کہا کہ 1990ء میں جب حکومت بنائی اور وزیراعظم بنا اور بیچ میں ٹانگیں کھینچنے والے نہ آتے تو یہاں غربت اور بے روزگاری نام کی چیز نہ ہوتی، 2017ء میں اشیا کی قیمتیں کیا تھیں اور اب کیا ہیں؟

نوازشریف نے کہا کہ وفا کے جرم میں شہبازشریف جیل تک گئے اُف تک نہیں کی، ہمارا رشتہ قائم و دائم اور پہلے سے زیادہ مضبوط رہے گا، مریم نواز نے بھی کڑے وقت میں پارٹی کو متحرک رکھا، مریم نواز بھی ہر امتحان میں پورا اتریں۔

ان کا کہناتھا کہ رانا ثنا اللہ، خواجہ سعد رفیق، حنیف عباسی، اسحاق ڈار، احسن اقبال، خواجہ آصف اور ہمارے دوست شاہد خاقان عباسی نے بھی مصیبتیں برداشت کیں، کبھی اُف تک نہیں کی۔

نوازشریف نے مزید کہا کہ جب بھی (ن) لیگ کی حکومت آئی ہم نے ملک کی تقدیر بدلی، اگر ہماری حکومتوں میں خلل نہ آتا تو پاکستان اس خطے کی بہت بڑی طاقت ہوتا، بدقسمتی سے ٹانگیں کھینچنے کا سلسلہ 1947ء سے لیکر آج تک جاری ہے، افسوس اس سلسلے نے پاکستان کو بہت کمزور کیا۔

صدر ن لیگ کا کہنا تھا کہ مان لینا چاہئے ہم نے اپنے پاؤں پر خود کلہاڑیاں ماری ہیں، 1990ء میں جب وزیراعظم بنا بیچ میں ٹانگیں کھینچنے والے نہ ہوتے تو آج پاکستان میں غربت، بے روزگاری نام کی کوئی چیز نہ ہوتی، میرے دورمیں ڈالر 104 روپے کا تھا، میں آج کے دور کی نہیں اپنے دور کی بات کروں گا۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ 2017ء میں جو کچھ ہوا قوم کو پتہ چلنا چاہئے، میرے دورمیں آٹا 35 روپے کلو تھا، روٹی 4 روپے، چینی 50 روپے، پٹرول 65 روپے لٹر تھا، سونا فی تولا 50 ہزار روپے کا تھا، سبزیاں10،10 روپے کلو ملتی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف ہمارے دور میں اس وقت کوئی کشکول نہیں تھا، ہم نے اس وقت سب کچھ اپنے وسائل سے کام کئے تھے، ہماری حکومت نے کراچی کا امن بحال کیا تھا، 1947ء سے لیکر 2024ء تک کسی نے کوئی موٹروے بنائی تو دکھائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

اسرائیل کے رفح میں فضائی حملے، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب

ہنگامی اجلاس الجزائر کی درخواست پر بلایا گیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسرائیل کے رفح میں فضائی حملے، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب

جنوبی غزہ کی پٹی کے شہر رفح کے قریب اسرائیل کے وحشیانہ فضائی حملے کے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ہنگامی اجلاس طلب کر لیا۔

منگل کو ہنگامی اجلاس الجزائر کی درخواست پر بلایا گیا ہے جو کہ 15 رکنی کونسل کے ایک غیر مستقل رکن ہےاور اسے سلووینیا کی حمایت حاصل ہے ۔

اتوار کے روز، اسرائیلی جنگی طیاروں نے رفح کے شمال مغرب میں اندرونی طور پر بے گھر افراد کی عارضی پناہ گاہوں پر آٹھ میزائل داغے، جس میں کم از کم 50 فلسطینی ہلاک ہوئے۔

عالمی رہنماؤں اور بین الاقوامی تنظیموں نے متاثرین کی پہلے سے مایوس کن صورتحال کا حوالہ دیتے ہوئے اس حملے کی شدید مذمت کی ہے۔

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے سوشل میڈیا پر پوسٹ میں کہا ہے کہ غزہ میں کوئی محفوظ جگہ نہیں ہے،یہ ہولناکی بند ہونی چاہیے۔

7 اکتوبر 2023 سے، غزہ میں اسرائیلی جنگ نے 36ہزارسےزیادہ فلسطینیوں، جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے شامل ہیں کی جانیں لے لی ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

چین پاکستان کی معاشی ترقی میں اہم شراکت دار ہے، وزیر اعظم

حکومت چینی صنعت کاروں اور سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی، شہباز شریف

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چین پاکستان کی معاشی ترقی میں اہم شراکت دار ہے، وزیر اعظم

وزیراعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ چین پاکستان کی معاشی ترقی میں اہم شراکت دار ہے، حکومت چینی صنعت کاروں اور سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی۔

وزیراعظم محمد شہباز شریف کی زیر صدارت پاکستان اور چین کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے حوالے سے اہم جائزہ اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں مختلف وفاقی وزارتوں کی جانب سے پاکستان چین دو طرفہ معاشی تعلقات کے حوالے سے تجاویز پیش کی گئیں۔

اجلاس کے شرکا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ چین پاکستان کی معاشی ترقی میں اہم شراکت دار ہے۔ چینی انڈسٹری خصوصاً چینی ٹیکسٹائل انڈسٹری کو پاکستان میں صنعتیں لگانے پر کی دعوت دیتے ہیں۔ حکومت چینی صنعت کاروں اور سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں مقیم چینی باشندوں کو فول پروف سیکورٹی فراہم کی جائے گی، چینی شہریوں کی سکیورٹی کے حوالے سے جامع پلان ترتیب دیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ چینی تعاون سے گوادر بندرگاہ کو لاجسٹکس کا حب بنایا جائے گا۔ ایگری کلچر ڈیمانسٹریشن زونز کا قیام سی پیک کے اگلے مرحلے کے حوالے سے اہم منصوبہ ہو گا۔ پاکستان چین کے ساتھ ترجیحی بنیادوں پر زراعت ،انفارمیشن ٹیکنالوجی ، توانائی اور متبادل توانائی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے اور چین میں پاکستانی مصنوعات کی برآمدات میں اضافے کا خواہاں ہے۔

وزیراعظم نے ہدایت کی کہ متعلقہ وزارتیں پاکستان چین کے تعاون کے نئے منصوبوں کے حوالے سے تیاری کریں اور بزنس ٹو بزنس روابط بڑھائے کے لئے اقدامات اٹھائیں۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی برآمدات بڑھانے کے حوالے سے حکمت عملی ترتیب دینے میں چین پاکستان کا مددگار ثابت ہو سکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll