جی این این سوشل

کھیل

پیرس اولمپکس میں خواتین کھلاڑیوں کے حجاب پہننے پر پابندی، یو این کی تنقید

کسی کو بھی خواتین کو یہ حکم نہیں دینا چاہیے کہ انہیں کیا پہننا چاہیے،ترجمان برائے انسانی حقوق

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پیرس اولمپکس میں خواتین کھلاڑیوں کے حجاب پہننے  پر پابندی، یو این کی تنقید
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

فرانس نے آئندہ سال منعقد ہونے والے پیرس اولمپکس کے دوران خواتین کھلاڑیوں کو حجاب پہننے سے روک دیا ،

دوسری جانب اقوام متحدہ نے سیکولرازم کے نام پر فرانس کی جانب سے اولمپک کھیلوں کے دوران فرانسیسی کھلاڑیوں کو حجاب پہننے سے روکنے کے جواب میں خواتین پرلباس کا ضابطہ اخلاق مسلط کرنے یا ان پر پابندی عائد کرنے کی اصولی مخالفت کی تجدید کی ہے۔

ہائی کمشنربرائے انسانی حقوق کی ترجمان مارٹا ہرٹاڈو نے کہا کہ عام طور پر انسانی حقوق کے ہائی کمشنر کے دفتر کا خیال ہے کہ کسی کو بھی خواتین کو یہ حکم نہیں دینا چاہیے کہ انہیں کیا پہننا چاہیے یا کیا نہیں پہننا چاہیے۔انہوں نے یاد دلایا کہ خواتین کے خلاف ہر قسم کے امتیازی سلوک کے خاتمے سے متعلق کنونشن تمام فریقین کواس معاملے میں فرانس کو کمتری یا برتری کے خیال کی بنیاد پر کسی بھی سماجی یا ثقافتی ماڈل میں ترمیم کرنے کے لیے ضروری تمام مناسب اقدامات کرنے کا پابند کرتا ہے۔

انہوں نے زور دیا کہ یہ امتیازی طرز عمل نقصان دہ نتائج کا حامل ہو سکتا ہے ،یہی وجہ ہے کہ بین الاقوامی انسانی حقوق کے معیار کے مطابق مذاہب یا عقائد کے اظہار پر پابندیاں جیسے کہ لباس کا انتخاب، صرف انتہائی مخصوص حالات میں قابل قبول ہے۔انہوں نے یہ بات فرانسیسی وزیر کھیل ایمیلی اوڈیا کاسٹیرا کے حالیہ بیانات کے جواب میں کہی ۔

واضح رہے کہ فرانسیسی وزیر نے دوروز قبل ملکی چینل ’’فرانس 3‘‘ پر وضاحت کی کہ حکومت ایک سخت سیکولر نظام کے لیے پرعزم ہے جس کا سختی سے کھیلوں کے میدان میں اطلاق ہوتا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ کسی بھی قسم کی تبلیغ پر پابندی لگا دی جائے، یہ عوامی خدمت کے لیے مکمل غیر جانبداری کا مطلب ہے اس لیے جو لوگ ہمارے وفود کی نمائندگی کرتے ہیں ہماری فرانسیسی ٹیموں میں حجاب نہیں پہن سکتے۔ فرانسیسی وزیر نے تسلیم کیا کہ بین الاقوامی اولمپک کمیٹی حجاب پہننے کو مذہبی عنصر کے طور پر نہیں بلکہ ایک ثقافتی عنصرکے طور پر سمجھنے پر مبنی منطق کے طور پر دیکھتی ہے۔

تجارت

پبلک ٹرانسپورٹ میں مزید 630 بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری

وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز کی زیر صدارت کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ و ترقی کا اجلاس ہوا جس میں سینئر صوبائی وزیر مریم اورنگزیب، وزیر خزانہ مجتبیٰ شجاع الرحمان، سینیٹر پرویز رشید، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل (آئی جی) نے شرکت کی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پبلک ٹرانسپورٹ   میں مزید 630  بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز نے  شہری علاقوں کے ٹرانسپورٹ سسٹم میں مزید 630 پبلک بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری دے دی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز کی زیر صدارت کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ و ترقی کا اجلاس ہوا جس میں سینئر صوبائی وزیر مریم اورنگزیب، وزیر خزانہ مجتبیٰ شجاع الرحمان، سینیٹر پرویز رشید، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل (آئی جی) نے شرکت کی ۔ پنجاب، چیئرمین پی اینڈ ڈی، سیکرٹری خزانہ، لوکل گورنمنٹ، اطلاعات اور دیگر حکام نے شرکت کی۔


ملاقات میں وزیراعلیٰ پنجاب کو مختلف ترقیاتی منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔


صوبائی کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے گورنمنٹ پائلٹ بوائز ہائی سکول وحدت روڈ کی اپ گریڈیشن کے لیے فنڈز کی منظوری دے دی۔ اجلاس میں محکمہ پولیس کی لیڈی پولیس افسران کے لیے 150 ای بائیکس کی بھی منظوری دی گئی۔


اجلاس میں پنجاب کے شہری علاقوں کے ٹرانسپورٹ سسٹم میں مزید 630 پبلک بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری دی گئی۔ منصوبے کے تحت لاہور، راولپنڈی، ملتان، فیصل آباد اور بہاولپور میں نئی ​​بسیں فراہم کی جائیں گی۔

قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے محکمہ انسداد دہشت گردی کے 332 انڈر افسران کے لیے خصوصی الاؤنس اور ساہیوال میں واٹر اینڈ سینی ٹیشن سروسز کمپنی بنانے کی بھی منظوری دی جب کہ لاہور کے ترقیاتی منصوبے میں 34 ارب کی ترقیاتی سکیموں کو شامل کرنے کی تجاویز کی بھی منظوری دی۔ .


یاد رہے کہ اجلاس کے دوران حکومت کو اپ گریڈ کرنے کی بھی اصولی منظوری دی گئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں، وزیر اعلیٰ کے پی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور نے الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ بے نقاب ہو گئے ہیں، ہم  آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ ہمیں ہماری مخصوص نشستیں واپس دیں۔

پشاور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈا پور نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر قانون پر عمل کریں اور پی ٹی آئی کی حمایت یافتہ سنی اتحاد کونسل کو ان کے جائز حقوق دیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر ای سی پی نے انہیں ان کا حق واپس نہ دیا تو وہ اپنے حقوق کی واپسی کے لیے ہر حد تک جائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مخصوص نشستوں کے حوالے سے اپنے حقوق کے لیے اپیل دائر کرنے کے لیے متعلقہ فورم سے رجوع کریں گے۔ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں۔

کے پی کے وزیراعلیٰ نے کہا کہ جو لوگ مینڈیٹ کے بغیر اقتدار میں بیٹھے ہیں وہ ہمیں مجبور نہ کریں۔ خیبر پختونخوا کے لیے ان کی واجب الادا رقم بھی حاصل کریں گےاور صوبے کے حقوق کے لیے آواز اٹھاتے رہیں گے۔ہم اس لاقانونیت کو مزید نہیں ہونے دیں گے۔ ہم اپنے صوبے کے لیے کھڑے ہوں گے۔

ضمنی انتخابات سے متعلق سوال کے جواب میں کے پی کے کے وزیراعلیٰ گنڈا پور نے کہا کہ پنجاب میں کل ہونے والے انتخابات میں بڑے پیمانے پر دھاندلی کی گئی۔

علی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ ہمارےامیدواروں کوانتخابی مہم نہیں چلانےدی گئی ، ہم نےخیبرپختونخوامیں سب کومکمل آزادی دی ، پنجاب میں کچھ نشستوں پرپہلےسےزیادہ ووٹ ملے۔

بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ پرعلی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ وفاق سےخط ملا کہ بجلی چوری پربات کرناچاہتےہیں، لیکن یہاں بات چیت سے پہلے ہی واپڈا کے ذریعے وفاق نے کارروائیاں شروع کر دیں۔

انہوں نے کہاکہ ہمارے لوگوں کوچورچورنہ کہا جائے، چوری ہم نہیں کرتے،آپ کاڈپارٹمنٹ کرواتاہے، مجھ سےبات کریں،عوام سےمیں بات کروں گا، اپنی عوام کیلئےچورکا لفظ برداشت نہیں کروں گا، اگر میں صوبے کا حق نہیں لےسکتا تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ صوبے لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کریں گے، اور انہوں نے انہیں ہیلتھ کارڈ کی سہولت فراہم کی کیونکہ وہ علاج کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی کل لاہور کا دورہ کریں گے

لاہور کے دورے کے بعد صدر رئیسی کراچی روانہ ہوں گے جہاں وہ قائد اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دیں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی کل لاہور کا دورہ کریں گے

لاہور: ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی جو اس وقت پاکستان کے تین روزہ دورے پر ہیں آج لاہور پہنچیں گے۔ اپنے دورے کے دوران وہ گورنر بلیغ الرحمان اور وزیر اعلیٰ مریم نواز سمیت پنجاب کی اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے اور کاروباری نمائندوں اور تاجروں سے بھی بات چیت کریں گے۔

صدر رئیسی کے وفد کی آمد کے پیش نظر پنجاب حکومت نے ضلع لاہور اور اس کے ماتحت دفاتر کے لیے مقامی تعطیل کا اعلان کیا ہے۔ تاہم چھٹی پنجاب سول سیکرٹریٹ، اس سے منسلک محکموں، یا علاقائی دفاتر میں نہیں کی جائے گی ۔


پیر کو اسلام آباد پہنچنے والے صدر ابراہیم  رئیسی پہلے ہی صدر آصف علی زرداری، وزیر اعظم شہباز شریف، وزیر خارجہ اسحاق ڈار اور دیگر معززین سے اہم ملاقاتیں کر چکے ہیں۔ ان کے لاہور کے سفر نامے میں صوبائی کابینہ کے وزراء، اعلیٰ حکام اور محکموں کے سربراہان کے ساتھ سخت حفاظتی اقدامات کے تحت مصروفیات بھی شامل ہوں گی۔

واضح رہے کہ لاہور کے دورے کے بعد صدر رئیسی کراچی روانہ ہوں گے جہاں وہ قائد اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll