جی این این سوشل

پاکستان

روس سے ایل پی جی کی پہلی کھیپ پاکستان پہنچ گئی

100 ہزار میٹرک ٹن کی مقدار میں ایل پی جی کی پہلی کھیپ ایران کے اقتصادی زون کے ذریعے فراہم کی ہے،روسی سفارت خانہ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

روس سے ایل پی جی کی پہلی کھیپ پاکستان پہنچ گئی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پاکستان میں روسی سفارتی مشن نے ایران کے راستے پاکستان کو ایک لاکھ میٹرک ٹن ایل پی جی کی فراہمی کی تصدیق کر دی۔ یہ فراہمی دونوں ممالک کے درمیان توانائی کی تجارت میں ایک توسیعی اقدام کے تحت ہوئی ہے۔ اس سے قبل 11 جون کو پاکستان نے ایک لاکھ ٹن روسی خام تیل رعایتی قیمت پر درآمد کیا تھا

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر ایل پی جی کی ترسیل کا اعلان کرتے ہوئے روسی سفارت خانے کا کہنا تھا کہ روس نے پاکستان کو 100 ہزار میٹرک ٹن کی مقدار میں ایل پی جی کی پہلی کھیپ ایران کے سرخس خصوصی اقتصادی زون کے ذریعے فراہم کی ہے جبکہ دوسری کھیپ پر مشاورت جاری ہے۔

پاکستان پہلے ہی خلیجی منڈیوں سے درآمد شدہ خام تیل کو روسی تیل کے ساتھ باہم ملانا شروع کر چکا ہے۔ پاکستان آئل ریفائنری کے ایک اعلیٰ عہدیدار زاہد میر نے گذشتہ ماہ میڈیا کو بتایا تھا کہ ملک نے روسی خام تیل کو کامیابی سے پراسیس کر لیا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ماسکو کے ساتھ سپاٹ ڈیل تکنیکی اور تجارتی دونوں لحاظ سے قابلِ عمل تھی۔

توانائی کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لیے پاکستان اپنے خام تیل کا تقریباً 20 فیصد رعایتی نرخوں پر روس سے درآمد کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ پیٹرولیم کلب پاکستان کے مرتب کردہ اعداد و شمار کے مطابق 4,600 میٹرک ٹن کی کل سالانہ کھپت کے ساتھ پاکستان مقامی پیداوار کے ذریعے اپنی ایل پی جی کی ضروریات کا تقریباً 43 فیصد پورا کرتا ہے۔

پاکستان

باڈر لائن کے دونوں جانب آج کشمیری یوم شہدا منا رہے ہیں

مقبوضہ جموں و کشمیر میں مکمل ہڑتال کی جائے گی اور سرینگر کے علاقے نقشبند صاحب میں واقع شہداقبرستان کی طرف مارچ کیا جائے گا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

باڈر لائن کے دونوں جانب آج  کشمیری یوم شہدا منا رہے ہیں

کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج یوم شہدائے کشمیر منا رہے ہیں جس کا مقصد 13 جولائی 1931 اورتحریک آزادی کشمیرکے ان تمام شہداکو خراج عقیدت پیش کرنا ہے ۔جنہوں نے بھارتی غلامی سے آزادی کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔ مقبوضہ جموں و کشمیر میں مکمل ہڑتال کی جائے گی اور سرینگر کے علاقے نقشبند صاحب میں واقع شہداقبرستان کی طرف مارچ کیا جائے گا جہاں 13 جولائی کے شہدامدفون ہیں۔ ہڑتال کی اپیل کل جماعتی حریت کانفرنس کی نظر بند قیادت نے کی ہے۔

1931 میں آج کے روزڈوگرہ مہاراجہ کے فوجیوں کی گولیوں کا نشانہ بننے والے 22 کشمیری شہداکو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے آزاد کشمیر اور دنیا بھر کے بڑے شہروں میں ریلیوں، سیمینارزاور دیگر تقریبات کا اہتمام کیا جائے گا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

عمران خان کو کمزور کرنے کیلئے ان پر مزید کیسز بنائے جا رہے ہیں ، بیرسٹر گوہر

بیرسٹر گوہرنے کہا کہ یہ واحد کیس بچ گیا تھا اب کوئی اور کیس نہیں ہے، بانی پی ٹی آئی کے خلاف 2 کیسزتھے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عمران خان کو کمزور کرنے کیلئے ان پر مزید کیسز بنائے جا رہے ہیں ، بیرسٹر گوہر

بیرسٹرگوہرنے کہا ہے کہ بانی پی ٹی آئی کو مجبورکرنے کیلئے کیسزبنائے گئے، بانی پی ٹی آئی چاہتے ہیں آئین وقانون کی بالادستی ہو۔

اسلام آباد میں پی ٹی آئی رہنماؤں کے ہمران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹرگوہرنے کہا کہ عدلیہ اب مزید مضبوط ہوگی، بیرسٹر گوہرنے کہا کہ بانی پی ٹی آئی کومجبورکرنے کیلئے کیس بنایا گیا، بانی پی ٹی آئی سپریم کورٹ کے کل کے فیصلے سے خوش تھے، انہوں نے کہا کہ یہ تمام کیسزسیاسی بنیادوں پر بنائے گئے تھے۔ بانی پی ٹی آئی چاہتے ہیں آئین وقانون کی بالادستی ہو۔

بیرسٹر گوہرنے کہا کہ یہ واحد کیس بچ گیا تھا اب کوئی اور کیس نہیں ہے، بانی پی ٹی آئی کے خلاف 2 کیسزتھے، آج بانی پی ٹی آئی کی رہائی ہونی چاہیے، مشکلات میں ساتھ دینے والوں کا شکریہ اداکرتے ہیں۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

علاقائی

شدید بارشوں کے باعث سیلاب کا خدشہ ، پی ڈی ایم اے کا الرٹ جاری

آئندہ 48 گھنٹوں کے اندر دریائے راوی کے ندی نالوں میں پانی کا بہاؤ بڑھے گا، جس سے سیلابی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

شدید بارشوں کے باعث سیلاب کا خدشہ ، پی ڈی ایم اے کا الرٹ جاری

پی ڈی ایم اے نے پنجاب میں شدید بارشوں کے باعث سیلابی صورتحال کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے الرٹ جاری کر دیا۔

حکومت نےآئندہ چند ہفتوں میں سیلابی صورتحال کے امکان کے پیش نظر حادثات سے بچنے کے لیے تمام متعلقہ محکموں سے ایکشن پلان مانگ لیا۔

ذرائع کے مطابق آئندہ 48 گھنٹوں کے اندر دریائے راوی کے ندی نالوں میں پانی کا بہاؤ بڑھے گا، جس سے سیلابی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے۔  

پی ڈی ایم اے کے مطابق دریائے چناب کے بالائی علاقوں میں بھی پانی کے بہاؤ میں اضافہ متوقع ہے، جس کے نتیجے میں دریائے چناب کے قریبی علاقوں میں شدید سیلاب کے آنے کا امکان ہے۔

15 جولائی تک ڈیرہ غازی خان اور راجن پور کے پہاڑی سلسلے میں نچلے درجے کی فلیش فلڈنگ کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب حکومت نے ممکنہ سیلاب سے بچاؤ کے اقدامات کے لیے متعلقہ محکموں میں ایمرجنسی نافذ کر دی۔

کسی بھی ہنگامی صورتحال سے بچنے کے لیے ندی نالوں کے مضافات میں رہنے والے لوگوں کو نقل مکانی کرنے کے احکامات جاری کر دیے گئے۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll