جی این این سوشل

دنیا

آذربائیجان نے نگورنو کاراباخ کے سابق وزیر کو گرفتار کر لیا

سابق وزیر کی اہلیہ نے ایک بیان میں ان کی گرفتاری کی خبر کی تصدیق کی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آذربائیجان نے نگورنو کاراباخ کے سابق وزیر کو گرفتار کر لیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

آرمینیا: آذربائیجان نے نگورنو کاراباخ حکومت کے سابق وزیر روبن وردانیان کو اس وقت حراست میں لے لیا جب وہ سرحد عبور کر کے آرمینیا جانے کی کوشش کر رہے تھے۔

وردانیان نے فروری 2023 میں برطرفی سے قبل ناگورنو کاراباخ جمہوریہ کے وزیر مملکت کے طور پر خدمات انجام دیں۔

اس نے اس خطے میں شہرت حاصل کی تھی، جسے بہت سے آرمینیائی باشندوں میں آرٹسخ کے نام سے جانا جاتا تھا، اور ایک معروف شخصیت تھی۔

وردانیان نے 2022 میں خود ساختہ نگورنو کاراباخ جمہوریہ میں منتقل ہونے سے پہلے روس میں سرمایہ کاری کی تھی، جہاں اس نے وزیر مملکت کا کردار ادا کیا۔

اس کی گرفتاری نے تشویش پیدا کردی ہے، خاص طور پر آرمینیائی باشندوں میں، کیونکہ خطے میں کشیدگی جاری ہے۔

ان کی اہلیہ ویرونیکا زونابند نے ایک بیان میں ان کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اسے آذربائیجان کے حکام نے سرحد پر اس وقت گرفتار کیا جب ہزاروں آرمینیائی جاری تنازع سے فرار ہو رہے تھے۔

اپنی گرفتاری سے عین قبل بین الاقوامی میڈیا کے ساتھ ایک انٹرویو میں، روبن وردانیان نے تنازع میں آذربائیجانی افواج کے لیے ممکنہ ہدف ہونے کے بارے میں آگاہی کا اظہار کیا۔

اس نے خطرات کو تسلیم کرتے ہوئے کہا، "یہ زندگی ہے، اگر آپ اپنے ملک کے لیے مرنے کے لیے تیار ہیں، تو یہ ٹھیک ہے، یہ بری بات ہے، لیکن اگر آپ کوئی اہم کام کر رہے ہیں، تو آپ کو تیار رہنا چاہیے۔ مجھے معلوم تھا کہ کہانی بری طرح ختم ہو سکتی ہے۔ اور میں پہلے دن سے اس کے لیے تیار تھا۔"

جیسا کہ آذربائیجانی افواج نے مختلف علاقوں میں پیش قدمی کی ہے، کاراباخ کی 40 فیصد سے زیادہ آبادی 72 گھنٹوں کے مختصر عرصے میں بے گھر ہو گئی ہے۔

آذربائیجانی فوجیوں نے حال ہی میں مارتاکورت کے قصبے پر قبضہ کر لیا ہے، جو حملہ شروع ہونے کے بعد گرنے والی پہلی بڑی بستی ہے۔

ایسا معلوم ہوتا ہے کہ آذربائیجانی فوجیوں کی آمد سے پہلے ہی زیادہ تر آبادی انخلا کر چکی تھی۔

روبن وردانیان نے آذربائیجان کے صدر الہام علیئیف پر ناگورنو کاراباخ میں آرمینیائی باشندوں کے خلاف "نسلی صفائی" کی مہم شروع کرنے کا الزام لگایا ہے اور جاری تنازع کے جواب میں آذربائیجان کے خلاف پابندیوں کا مطالبہ کیا ہے۔

پاکستان

اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت اسرائیل کی ناکامی ، مولانا فضل الرحمان

شہداء کی شہادت صرف فلسطینی قوم کا ہی نہیں بلکہ پوری اسلامی دنیا کا نقصان ہے، سربراہ جے یو آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت اسرائیل کی ناکامی ، مولانا فضل الرحمان

سربراہ جمعیت علما اسلام فضل الرحمان نے اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت کو  اسرائیل کی ناکامی قرار دے دی۔

جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل رہنما نے حماس رہنما اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کی اسرائیلی حملے میں شہادت پر شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے انہیں تعزیتی خط ارسال کردیا۔

 مولانا فضل الرحمان نے اسماعیل ہنیہ کے نام بھیجے گئے خط میں اپنی اور جمعیت علما اسلام کی جانب سے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت پر تعزیت کرتے ہوئے لواحقین کے لیے صبر جمیل اور شہدا کی کامل مغفرت کے لیے دعا بھی کی۔

 اپنے خط میں مولانا فضل الرحمان نے لکھا کہ تحریک فلسطین کے قائدین کے خاندانوں اور اولادوں کو نشانہ بنانا دراصل دشمن کی ناکامی کا اعتراف ہے، اسرائیل کے جارحانہ اقدامات تحریک جہاد کی جرأت و بسالت اور بزدل صہیونی فوج کے مقابلے میں مضبوط منصوبہ بندی کا اعتراف ہیں۔

اُنہوں نے لکھا کہ شہداء کی شہادت صرف فلسطینی قوم کا ہی نہیں بلکہ پوری اسلامی دنیا کا نقصان ہے، انشاء اللہ شہدا کا خون رائیگاں نہیں جائے گا۔ ہم حماس کی جہاد میں کی گئی کوششوں کی تائید کرتے ہیں اور عالمی برادری سے فلسطینیوں پر جاری جبر و تشدد کے ہمیشہ کے لیے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

 اپنے خط میں فضل الرحمان نے لکھا کہ اسپتالوں اور پناہ گزینوں کے خیموں کو نشانہ بنانے کی مذمت اور اظہار افسوس کرتے ہیں، فلسطینی مسئلے کے منصفانہ حل کے لیے جمعیت علماء اسلام اپنی آواز بلند کرتی رہے گی اور قابل قبول حد تک فلسطینیوں کے شانہ بشانہ کھڑی رہے گی۔

 فضل الرحمان نے دعا کی کہ اللہ رب العزت شہدا کو اپنی رحمت سے جنت میں داخل فرمائے۔ (آمین)

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

ایشیائی ترقیاتی بینک کی رپورٹ حکومت کی مضبوط معاشی پالیسیوں کی توثیق ہے، احد چیمہ

وزیراعظم شہباز شریف کی قیادت میں مستحکم اور پائیدار معیشت کے لیے کام شروع ہو چکا ہے، وفاقی وزیر اقتصادی امور

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایشیائی ترقیاتی بینک کی  رپورٹ حکومت کی مضبوط معاشی پالیسیوں کی توثیق ہے، احد چیمہ

وفاقی وزیر اقتصادی امور احد چیمہ نے ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) کی ایشین ڈویلپمنٹ آوٹ لْک رپورٹ اپریل 2024 کو حکومت کی درست اقتصادی پالیسیوں کی توثیق قرار دیتے ہوئے کہا کہ ملک میں مہنگائی کم ہو رہی ہے، اس کی تصدیق عالمی مالیاتی ادارے بھی کر رہے ہیں۔

وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور احد چیمہ نے کہا کہ ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) کی آؤٹ لک رپورٹ حکومت کی مضبوط معاشی پالیسیوں کی توثیق ہے۔اے ڈی بی کی رپورٹ میں پاکستان کی معیشت کے بارے میں مثبت امکانات کا اظہار کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شہباز شریف کی قیادت میں مستحکم اور پائیدار معیشت کے لیے کام شروع ہو چکا ہے۔ اس کی تصدیق بین الاقوامی مالیاتی اداروں نے بھی کی ہے کہ ملک میں مہنگائی کم ہو رہی ہے۔ مالیاتی نظم و ضبط کو بہتر بنانے اور سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے کام کر رہے ہیں۔

احد چیمہ نے کہا کہ پاکستان کا زرعی شعبہ مضبوط ہے اور اس میں اضافی ترقی کی صلاحیت موجود ہے، حکومت ایشیائی ترقیاتی بینک کی سفارشات پر عمل کرنے کے لئے پرعزم ہے۔ ہم ایک ایسی معیشت بنانے کے لئے کام جاری رکھیں گے جس میں تمام پاکستانیوں کے لئے مواقع دستیاب ہوں۔

واضح رہے کہ ایشیائی ترقیاتی بینک نے ایشین ڈویلپمنٹ آوٹ لْک رپورٹ اپریل 2024ء جاری کی ہے، ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کے لئے اقتصادی اصلاحات کو اہم قرار دیا ہے اور رواں مالی سال کے دوران پاکستان کی شرح نمو 1.9 فیصد رہنے کی توقع کا اظہار کیا ہے۔

آئوٹ لک رپورٹ میں پاکستان کی آئندہ مالی سال کے لئے شرح نمو 2.8 فیصد ہونے کا تخمینہ  لگایا  گیا  ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان میں آئندہ مالی سال کے دوران مہنگائی میں مزید کمی آنے کی امید ہے جبکہ مہنگائی کی شرح 15 فیصد تک آ جائے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

سینیئر جج جسٹس اشتیاق ابراہیم قائم مقام چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ تعینات

صدر زرداری نے آئین کے آرٹیکل 196 کے تحت جسٹس اشتیاق ابراہیم کی بطور قائم مقام چیف جسٹس ہائیکورٹ تعیناتی کی منظوری دی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سینیئر جج جسٹس اشتیاق ابراہیم قائم مقام چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ تعینات

پشاور ہائیکورٹ کے سینیئر جج جسٹس اشتیاق ابراہیم کو قائم مقام چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ تعینات کردیا گیا جبکہ صدر آصف علی زرداری نے سندھ ہائیکورٹ میں 6 ایڈیشنل ججز کا تقرر بھی کردیا، جس کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا۔

وزارت قانون کی جانب سے جاری کیے گئے نوٹیفکیشن کے مطابق جسٹس اشتیاق ابراہیم کو قائم مقام چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ تعینات کردیا گیا۔

صدر مملکت آصف علی زرداری نے آئین کے آرٹیکل 196 کے تحت جسٹس اشتیاق ابراہیم کی بطور قائم مقام چیف جسٹس ہائیکورٹ تعیناتی کی منظوری دی۔

نوٹیفیکیشن کے مطابق، جسٹس اشتیاق ابراہیم کو پارلیمانی کمیٹی کی منظوری کے بعد پشاور ہائیکورٹ کا مستقل چیف جسٹس تعینات کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ 30 سال تک عدلیہ میں اپنی خدمات سرانجام دینے کے بعد چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس محمد ابراہیم خان 14 اپریل کو اپنے عہدے سے سبکدوش ہو رہے ہیں جبکہ حال ہی میں انہوں نے اپنی مدت ملازمت کے دوران سپریم کورٹ کے لیے اپنا نام زیر غور نہ آنے پر نہایت سلیقے سے شکوہ کا اظہار کی تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll