جی این این سوشل

علاقائی

سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ کیخلاف اندراج مقدمہ کی درخواست خارج

سابق کمشنر کیخلاف الیکشن کمیشن اور محکمانہ انکوائری ہو رہی ہے، مقدمے کے اندراج کا کوئی جواز نہیں بنتا، عدالت

پر شائع ہوا

کی طرف سے

سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ کیخلاف اندراج مقدمہ کی درخواست خارج
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

سیشن عدالت راولپنڈی نے سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ کیخلاف اندراج مقدمہ کی درخواست خارج کر دی۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راولپنڈی حاکم خان نے 2 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔

عدالت نے کہا کہ سابق کمشنر کیخلاف الیکشن کمیشن کے علاوہ محکمانہ انکوائری بھی ہو رہی ہے، الیکشن کمیشن اور محکمانہ انکوائری میں الزامات ثابت ہونے پر قانونی کارروائی یقینی ہے،اس صورتحال میں الگ مقدمے کے اندراج کا کوئی جواز نہیں بنتا۔

یاد رہے کہ سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ نے 8 فروری کے انتخابات میں دھاندلی سے متعلق بیان دیا تھا جس پر ان کیخلاف انکوائری چل رہی ہے۔

سابق کمشنر لیاقت چٹھہ کے خلاف مقدمہ کے اندراج کیلئے درخواست راولپنڈی کے دو وکلا نے دائر کی تھی۔

تجارت

غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے اقدامات شروع

کمشنر پی آر اے مصباح نواز کی ہدایت پر لاہور میں موجود آرکیٹیکٹ فرمز کے نمائندگان سے ملاقاتیں شروع کر دی گئیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ  میں لانے کے اقدامات شروع

ترجمان پی آر اے کےمطابق پنجاب ریونیو اتھارٹی نے لاہور میں موجود غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لئے سرگرمیاں شروع کر دیں ،  انفورسمنٹ آفیسز علی رضا ہاشمی نے انسٹیٹیوٹ آف آرکیٹیکٹس پاکستان کی شراکت سے زوم میٹنگ کی ، زوم میٹنگ میں چیئرمین بورڈ آف آرکیٹیکٹ ایجوکیشن عمر سعید ، ایزیکٹیو ممبران نے خصوصی شرکت کی ۔

کمشنر پی آر اے مصباح نواز کی ہدایت پر لاہور میں موجود آرکیٹیکٹ فرمز کے نمائندگان سے ملاقاتیں شروع کر دی گئیں۔ 

اسکے علاوہ تقریبا 40 آرکیٹیکس نے بھی زوم میٹنگ میں شریک ہوئے ،ترجمان پی آر اے کےمطابق شرکاء کو سروس ٹیکس قوانین کے حوالے سے ذمہ داریوں کے بارے میں تفصیلی آگاہی فراہم کی گئ۔

اسکے علاوہ غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ کو رجسٹرڈ ہونے اور گوشوارے بروقت جمع کروانے کے حوالے سے رہنمائی کی گئ ۔

زوم میٹنگ میں شریک تمام شرکاء کے مختلف سوالات کے جوابات بھی دیے گئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

خیبر پختونخوا کا 1754 ارب روپے کا بجٹ صوبائی اسمبلی میں پیش

بجٹ میں کم سے کم ماہانہ اجرت 32 ہزار سے 36 ہزار کرنے کی تجویز دی گئی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

خیبر پختونخوا کا 1754 ارب روپے کا بجٹ صوبائی اسمبلی میں پیش

 

مالی سال 2024-25ء کیلئے 1754ارب  روپے حجم کا بجٹ جمعہ کو خیبرپختونخوا میں پشاور کی صوبائی اسمبلی میں پیش کیا گیا۔

بجٹ میں کم سے کم ماہانہ اجرت 32 ہزار سے 36 ہزار کرنے کی تجویز دی گئی ہے، تعلیم کے لیے 362ارب روپے، صحت کےلیے 232 ارب روپے جبکہ صحت کارڈ کےلیے 34ارب روپےمختص کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔

وزیر خزانہ خیبر پختونخوا آفتاب عالم نے بجٹ تقریر کے دوران کہا کہ کل محصولات 1754 ارب روپے اور کل اخراجات 1654 ارب روپے ہیں، بجٹ 100 ارب روپے سرپلس ہے۔

آفتاب عالم نے بتایا کہ  بجٹ میں عوامی خدمات کی فراہمی پر توجہ مرکوز کی، بجٹ میں صنعتی شعبے کے افراد کی مشاورت بھی شامل کی، صوبائی بجٹ میں آمدن کے دو حصہ ہیں، ایک صوبہ کے اپنے محاصل اور دوسرا وفاق سے ملنے والے فنڈز ہیں، وفاق کے ذمے مختلف مد میں بقایاجات واجب الادا ہیں، ضم اضلاع کے سالانہ 262 ارب روپے وفاق سے ملنے ہیں ، جو نہیں مل رہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ جاری

ہیلی کاپٹر کی باقیات سے گولیاں لگنے یا کسی تخریبی کاروائی کے کوئی شواہد نہیں ملے، رپورٹ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ جاری

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق ایران نے تحقیقاتی رپورٹ جاری کردی جس میں کسی قسم کی ’تخریبی کارروائی‘ کے تاثر کو مسترد کیا گیا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر میں بلندی سے ٹکرانے کے بعد آگ لگ گئی تاہم اس دعوے کی وجہ نہیں بتائی گئی اور اس رپورٹ کے دعوے کے مطابق یہ بھی واضح نہیں کہ ہیلی کاپٹر بلندی سے کیوں ٹکرایا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ہیلی کاپٹر کی باقیات سے گولیاں لگنے یا کسی تخریبی کاروائی کے کوئی شواہد نہیں ملے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر مقررہ راستے سے نہیں ہٹا اور جس ہیلی کاپٹر کو حادثہ پیش آیا اس کے پائلٹ نے حادثے سے ڈیڑھ منٹ قبل دو دیگر ہیلی کاپٹرز سے رابطہ کیا۔

اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ واچ ٹاور کی ہیلی کاپٹر کے عملے کے ساتھ گفتگو میں بھی کوئی مشکوک مواد سامنے نہیں آیا۔

رپورٹ کے آخر میں کہا گیا کہ کچھ حصوں اور دستاویزات کا جائزہ لینے کے لیے مزید وقت درکار ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll