جی این این سوشل

تجارت

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں تیزی،888 پوائنٹس کا اضافہ

کے ایس ای 100 انڈیکس میں 888 پوائنٹس اضافے کے بعد76 ہزار 2 پر پہنچ گیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں تیزی،888 پوائنٹس کا اضافہ
پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں تیزی،888 پوائنٹس کا اضافہ

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ٹریڈنگ کے دوران تیزی کا رجحان ہے، بینچ مارک کے ایس ای 100 انڈیکس 76 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا۔

پاکستان اسٹاک ایکسچینج کے مطابقکے ایس ای 100 انڈیکس میں 888 پوائنٹس اضافے کے بعد76 ہزار 2 پر پہنچ گیا، جو گزشتہ روز 75 ہزار 114 پر بند ہوا تھا۔

یاد رہے کہ 15 مئی کو انڈیکس 565 پوائنٹس اضافہ کے ساتھ 100 انڈیکس 75 ہزار 96 پوائنٹس کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا تھا۔

معاشی ماہرین کا کہنا تھا کہ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں تیزی اور اضافے کی ایک خاص وجہ متحدہ عرب امارات کی جانب سے گزشتہ روز 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا اعلان ہے۔ 

پاکستان

اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے، آصفہ بھٹو

نئے سال کا بجٹ عوام کی نمائندگی نہیں کرتا، رہنما پیپلز پارٹی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے، آصفہ بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن قومی اسمبلی آصفہ بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نئے سال کا بجٹ عوام کی نمائندگی نہیں کرتا، بجٹ میں کسانوں اور عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنا چاہیے تھا۔ کیا پاکستان کے لوگ اس عوام دشمن بجٹ کے مستحق ہیں؟ ، ہمیں عام آدمی کے ریلیف کے لیے آگے بڑھنا ہوگا، ہمیں کسان کو مضبوط کرنا ہوگا۔ پاکستان کے عوام بہتری کے مستحق ہیں، ہمیں بہتر کرنے کے لیے مل کر کام کرنا چاہیے۔

انکا کہنا تھا کہ ایسے وقت میں جب لوگ اپنے نظریاتی عقائد میں تقسیم ہیں، جب اختلافات کو ہتھیار بنا دیا جاتا ہے، اختلاف رائے کو تشدد سے حل کیا جاتا ہے، یہ ضروری ہے کہ ہم اس ایوان کے منتخب اراکین کی حیثیت سے اٹھیں اور اس پر بات کریں۔ رواداری کو تقریروں اور الفاظ تک محدود نہیں ہونا چاہیے، ہمیں اس پر عمل کرنا چاہیے، ہمیں تفرقہ انگیز سیاست کو مسترد کرنا چاہیے، عوام کے لیے اکٹھا ہونا چاہیے۔ ہمیں مل کر لوگوں کو ریلیف دینے کا راستہ تلاش کرنا ہے

آصفہ بھٹو نے کہا ہمیں اپنے انسانی وسائل کو ترقی دینے کے لئے استعمال کرنا چاہے۔ ہمیں ایسے طریقے تلاش کرنے چاہئیں جن سے غریب لوگوں کو براہ راست ریلیف ملے۔ امید ہے ہم سیاست میں ایک نیا دور دیکھنے کے قابل ہوں گے۔ جب صدر پاکستان اتحاد کی بات کرتے ہیں وہ وقت کی ضرورت ہے، کسی بھی مسلئے کا حل الزام تراشی نہیں ہے، اس گرمی میں سندھ میں بجلی نہیں یے، اس قیامت خیز گرمی میں 15 سے 20 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ عذاب ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں کسان کو مضبوط کرنا ہو گا، امید کرتی ہوں ایک نئے سیاسی کلچر آغاز جلد ہم دیکھیں گے، ہمیں تقسیم کی سیاست کو مسترد کرنا ہوگا، ہمیں گندم امپورٹ کرنے کے غلط فیصلوں کا بھی سامنا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پی ڈی ایم اے نے پنجاب میں مون سون ہواؤں کی پیش گوئی کردی

پی ڈی ایم اے کے نوٹیفکیشن کے مطابق جولائی کے پہلے ہفتے میں 15 سے 50 ملی میٹر اور دوسرے ہفتے میں 25 سے 35 ملی میٹر بارش کا امکان ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ڈی ایم اے نے پنجاب میں مون سون ہواؤں کی پیش گوئی کردی

لاہور: پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے) نے اتوار کو صوبے بھر کی انتظامیہ کو مون سون کی بارشوں کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال 35 فیصد زیادہ بارشوں کا امکان ہے۔

پی ڈی ایم اے نے یکم جولائی سے پنجاب میں مون سون بارشوں کے آغاز کی پیش گوئی کی ہے۔

پی ڈی ایم اے کے نوٹیفکیشن کے مطابق جولائی کے پہلے ہفتے میں 15 سے 50 ملی میٹر اور دوسرے ہفتے میں 25 سے 35 ملی میٹر بارش کا امکان ہے۔

نوٹیفکیشن میں بتایا گیا ہے کہ جولائی کے تیسرے ہفتے بالائی اور جنوبی پنجاب میں 15 سے 25 ملی میٹر جبکہ چوتھے ہفتے میں 50 سے 70 ملی میٹر بارش ہو سکتی ہے۔ بالائی، وسطی اور جنوبی پنجاب میں گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارش کا امکان ہے۔

پی ڈی ایم اے کے نوٹیفکیشن میں جولائی میں مون سون کی بارشوں کی وجہ سے جنوبی پنجاب میں شہری سیلاب اور پہاڑی طوفان کے خطرے سے خبردار کیا گیا ہے۔

وزیر اعلیٰ مریم نواز کی ہدایات کے مطابق متعلقہ محکموں کو الرٹ کر دیا گیا ہے۔

ڈی جی پی ڈی ایم اے عرفان علی کاٹھیا نے اس بات پر زور دیا کہ ضلعی انتظامیہ مون سون کی بارشوں سے قبل تمام احتیاطی تدابیر کو یقینی بنائے اور ندی نالوں اور نکاسی آب کے نظام کی صفائی کا کام جلد از جلد مکمل کیا جائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

جرم

عدالتیں مذہبی اقلیتوں اور معاشرے کے دیگر کمزور طبقات کے تحفظ کو یقینی بنائیں، وزیر قانون

وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ یہ ایوان اس بات پر یقین رکھتا ہے کہ زندگی کا حق سب سے زیادہ عزیز حق ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عدالتیں مذہبی اقلیتوں اور معاشرے کے دیگر کمزور طبقات کے تحفظ کو یقینی بنائیں، وزیر قانون

اسلام آباد: قومی اسمبلی نے اتوار کو ملک کے مختلف حصوں میں موب لنچنگ کے ہولناک اور المناک واقعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے قرارداد منظور کرلی۔

وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ یہ ایوان اس بات پر یقین رکھتا ہے کہ زندگی کا حق سب سے زیادہ عزیز حق ہے جیسا کہ پاکستان کے آئین میں درج ہے۔  انہوں  نے کہا کہ ہر شخص کے ساتھ قانون کے مطابق نمٹا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ایوان سوات اور سرگودھا میں جرائم کے الزام میں ہمارے شہریوں کی حالیہ ہجومی تشدد کا نوٹس لیتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ بات انتہائی تشویش ناک  ہے کہ حال ہی میں ملک کے مختلف حصوں میں ایسے واقعات میں اضافہ ہوا ہے جسے کسی بھی مہذب معاشرے میں برداشت نہیں کیا جا سکتا۔

 ایوان نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ تمام شہریوں بشمول مذہبی اقلیتوں اور معاشرے کے دیگر کمزور طبقات کے تحفظ کو یقینی بنائیں۔

ایوان نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ خیبرپختونخوا اور پنجاب کی صوبائی حکومتیں ان واقعات میں ملوث افراد کی شناخت، تفتیش اور متعلقہ قوانین کے تحت ان کے خلاف کارروائی کو یقینی بنانے کے لیے فوری طور پر تمام ضروری اقدامات کریں۔

قرارداد میں اس توقع کا اظہار کیا گیا کہ عدالتیں ان مقدمات میں فوری اور جلد انصاف کو یقینی بنائیں گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll