جی این این سوشل

تجارت

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان

پٹرولیم مصنوعات کی فی لیٹر قیمت میں 7.50روپے کمی کا امکان ہے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان

عالمی مارکیٹ میںپٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے رحجان کے باعث پاکستان میں بھی پٹرولیم مصنوعات کی فی لیٹر قیمت میں 7.50روپے کمی کا امکان ہے۔

ذرائع کے مطابق ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمتوں میں 6.25 روپے فی لیٹر تک کمی متوقع ہے۔ بین الاقوامی مارکیٹ میں پیٹرول اور ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمتوں میں بالترتیب 3.25 ڈالر اور 2.10 ڈالر فی بیرل کی کمی واقع ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ پٹرول پر درآمدی پریمیم گزشتہ پندرہ دن میں تقریباً 7 فیصد کم ہو کر 9.70 ڈالر فی بیرل سے 10.30 ڈالر فی بیرل ہو گیا ہے۔

یاد رہے کہ اس وقت پیٹرول کی فی لیٹر قیمت 273 روپے 10پیسے اور فی لیٹر ڈیزل 274 روپے 8 پیسے میں دستیاب ہے۔

پاکستان

ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں کسی قسم کے آپریشن کا ذکر نہیں ہوا، وزیر اعلیٰ کے پی

اپیکس کمیٹی اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پر اور ملک میں امن و امان پر  بات ہوئی، علی امین گنڈا پور

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں کسی قسم کے آپریشن کا ذکر نہیں ہوا، وزیر اعلیٰ کے پی

وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور نے کہا کہ ایپکس کمیٹی کی میٹنگ میں ایک پالیسی بتائی گئی، پالیسی تھی کہ امن و امان کا قیام، دہشت گردی کا خاتمہ ہونا چاہئے، میٹنگ میں عزم پاکستان کا نام آیا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کے پی علی امین گنڈا پور نے کہا کہ اپیکس کمیٹی اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پر اور ملک میں امن و امان پر  بات ہوئی، دہشتگردی کا خاتمہ ہونا چاہیے، اس حوالے سے سارے پاکستان بشمول کشمیر و گلگت میں ایک پالیسی ہونی چاہیے جس کو عزم پاکستان کا نام دیا گیا، اس میں آپریشن کا لفظ نہ پہلے ڈسکس ہوا نہ کبھی بعد میں اس کا ذکر ہوا۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے کہا کہ میری آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی سے کوئی ملاقات نہیں ہوئی، میں عسکری قیادت سے ملنا چاہتا ہوں آپریشن پر بات کرنا چاہتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ آپریشن کا لفظ نہ پہلے تھا نہ بعد میں، بانی پی ٹی آئی کی حکومت میں دہشتگردی میں کمی آئی، ہم نے سی ٹی ڈی کو بہتر کیا، ہماری پالیسی ہے عوام کو پہلے اعتماد میں لیا جائے، دہشت گردی کا مقابلہ عوام کے بغیر نہیں کر سکتے، صوبوں اور پارلیمان کو اعتماد میں لیے بغیر فیصلہ نہیں کر سکتے۔

علی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ ابھی تک تو پالیسی آئی ہی نہیں کہ انہوں نے کرنا کیا ہے، بلاول بھٹو نے پوری دنیا کا چکر لگایا مگر افغانستان نہیں گئے، ان کو ہمارے افواج پاکستان کے جوانوں اور سویلین جوانوں کی پرواہ نہیں، مقابلہ کرنے کیلئے ایک بہترین پالیسی اور بات چیت ہونی چاہئے۔

وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا کا کہنا تھا کہ ہم نے کہا ہے آپ افغانستان سے بات چیت کی پالیسی بنانا چاہتے ہیں تو کردار ادا کرسکتے ہیں، ہم پاکستان میں دہشت گردی کا خاتمہ چاہتے ہیں، اس کے لیے ہر حد تک جانے کیلئے تیار ہیں۔

اعلی امین گنڈا پور نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی پہلے بھی کہہ رہے تھے پاکستان کی خاطر مذاکرات کیلئے تیار ہوں، ہم بات کرنے کو تیار ہیں لیکن ٹرم اینڈ کنڈیشنڈ وہی ہوں گی، تحقیقات ہونی چاہئیں 9 مئی کیسے ہوا کس نے کیا؟، ہماری پہلی شرط ہے مینڈیٹ چوری، فارم 45 پر بات ہوگی۔

وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا نے کہا کہ ہمارا صوبہ بجلی بنانے والا ہے، آئین میں ہمارے حقوق ہیں، بجلی نہیں دی جا رہی، لوڈشیڈنگ کی ایک حد ہے، کہتے 12 گھنٹے تھے لیکن لوڈشیڈنگ 16 گھنٹے کی ہو رہی تھی، میں یہ چیزیں نہیں چاہتا لیکن عوام کی تکلیف دیکھنی پڑے گی۔

علی امین گنڈا پور نے کہا کہ میرے بجلی کی مد میں آپ نے 510 ارب روپے دینے ہیں، ہم نے حقوق کی جنگ لڑنی ہے، ملک کے حالات کو بھی دیکھ رہے ہیں، ہم نے ایک ماہ میں 1 ارب روپے کی ریکوری کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئینی طور پر گورنر کا صوبے میں کوئی کام نہیں، گورنر خیبرپختونخوا مجھ پر 50 الزام لگا چکے ہیں، گورنر خیبرپختونخوا کا سیاسی باتیں کرنے کا کام نہیں، گورنر خیبرپختونخوا گھومتے پھر رہے ہیں، میں برداشت کر رہا ہوں، میرے لوگوں کو اٹھایا گیا، توڑا گیا، لوگ بے وقوف نہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

این ڈی ایم اے نے جولائی میں مون سون ہواؤں کی پیش گوئی کردی

این ڈی ایم اے کے مطابق جولائی پہلے اور دوسرے ہفتے میں لاہور، سرگودھا ، فیصل آباد اورگوجرانوالہ اور اسلام آباد کے اضلاع میں مختلف مقامات پر پندرہ سے پچاس ملی میٹر بارش کا امکان ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

این ڈی ایم اے نے  جولائی میں مون سون ہواؤں کی پیش گوئی کردی

قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے نے آئندہ ماہ سے ملک کے مختلف حصوں میں مون سون بارشوں کے حوالے سے جامع پیشن گوئی جاری کردی ہے۔

این ڈی ایم اے کے مطابق جولائی پہلے اور دوسرے ہفتے میں لاہور، سرگودھا ، فیصل آباد اورگوجرانوالہ اور اسلام آباد کے اضلاع میں مختلف مقامات پر پندرہ سے پچاس ملی میٹر بارش کا امکان ہے ۔

ادھر مردان، مالاکنڈ اورخیبرپختونخوا کے ہزارہ ڈویژن کے مختلف مقامات پرجولائی کے تیسرے ہفتے میں بارش کا امکان ہے جبکہ گلگت بلتستان کے استور ضلع میں اور آزادکشمیر کے مختلف مقامات پر جولائی کے آخری ہفتے میں شدید بارش ہوگی جس سے ندی نالوں میں شدید طغیانی کا خدشہ ہے میرپورخاص، کراچی ، حیدرآباد، نواب شاہ ، لاڑکانہ اور ضلع سکھر میں آئندہ ماہ تیس سے پچھہتر ملی میٹر بارش کا امکان ہے ۔

این ڈی ایم اے نے قدرتی آفات سے نمٹنے کے صوبائی اداروں ، ضلعی حکام اور دیگر متعلقہ محکموں کو ہدایت کی ہے کہ وہ چوکنا رہیں اور کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار رہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

جنوبی کوریا فیکٹری میں آتشزدگی سے 22 افراد ہلاک

مقامی فائر آفیشل کم جن ینگ نے ٹیلی ویژن پر بریفنگ میں بتایا کہ سیئول کے بالکل جنوب میں واقع ہواسیونگ شہر میں واقع فیکٹری میں ریسکیو کارکنوں نے جائے وقوع کو تلاش کرنے کے بعد لاشوں کو نکال لیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

جنوبی کوریا فیکٹری میں آتشزدگی سے 22 افراد ہلاک

جنوبی کوریا کے دارالحکومت کے قریب لیتھیم بیٹری بنانے والی فیکٹری میں آگ لگنے سے کم از کم 22 افراد ہلاک ہو گئے ہیں ، 7 زخمی اور6 لاپتہ ہو گئے۔

مقامی فائر آفیشل کم جن ینگ نے ٹیلی ویژن پر بریفنگ میں بتایا کہ سیئول کے بالکل جنوب میں واقع ہواسیونگ شہر میں واقع فیکٹری میں ریسکیو کارکنوں نے جائے وقوع کو تلاش کرنے کے بعد لاشوں کو نکال لیا۔

کِم نے پہلے کہا تھا کہ لاپتہ ہونے والے زیادہ تر غیر ملکی شہری تھے جن میں چینی بھی شامل تھے۔ انہوں نے کہا کہ لاپتہ افراد کے موبائل فون سگنلز کو فیکٹری کی دوسری منزل تک ٹریک کیا گیا تھا۔ ایک عینی شاہد نے حکام کو بتایا کہ آگ بیٹریوں کے پھٹنے کے بعد شروع ہوئی جب کارکنان ان کی جانچ اور پیکنگ کر رہے تھے، لیکن اصل وجہ اب تک سامنے نہیں آسکی ہے جس کیلئے تحقیقات جاری ہیں۔ 
کم جن ینگ نے کہا کہ مردہ پائے جانے والے ممکنہ طور پر زمین پر سیڑھیوں کے ذریعے بھاگنے میں ناکام رہے۔ انہوں نے کہا کہ حکام اس بات کی تحقیقات کریں گے کہ آیا آگ بجھانے کے نظام نے کام کیا یا نہیں۔ کم نے بتایا کہ آگ لگنے سے پہلے فیکٹری میں کل۱۰۲؍ لوگ کام کر رہے تھے۔ ان کے دفتر کے مطابق، صدر یون سک یول نے قبل ازیں حکام کو زندہ بچ جانے والوں کی تلاش کیلئے تمام دستیاب اہلکاروں اور آلات کو متحرک کرنے کا حکم دیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll