جی این این سوشل

تجارت

پاکستان کا بجٹ آئی ایم ایف پروگرام کے لئے مذاکرات میں مددگار ثابت ہو گا، موڈیز

بڑھتی مہنگائی کے نتیجے میں عوامی ردعمل یا تناؤ حکومت کی جانب سے اصلاحات کے اقدامات متاثر ہوسکتے ہیں، عالمی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پاکستان کا بجٹ آئی ایم ایف پروگرام کے لئے مذاکرات میں مددگار ثابت ہو گا، موڈیز
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

عالمی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے پاکستان کے بجٹ کو آئی ایم ایف پروگرام کے لئے مذاکرات میں مددگار قرار ہوئے خبردار کیا کہ بڑھتی مہنگائی کے نتیجے میں عوامی ردعمل یا تناؤ حکومت کی جانب سے اصلاحات کے اقدامات متاثر ہوسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان مستقل میکرو اکنامک استحکام کا خواہاں ہے اور نئے قرض کےلئے آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں، وزیر خزانہ اورنگزیب نے اپنی بجٹ تقریر اور پوسٹ بجٹ پریس بریفنگ کے دوران کہا تھا کہ جولائی کے اوائل میں آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے کو حتمی شکل دی جا سکتی ہے۔

بین الاقوامی ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے پاکستانی بجٹ پرتبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کا آدھے سے زیادہ ریونیوسود کی ادائیگی پرخرچ ہوگا، پاکستان کا بجٹ آئی ایم ایف کےساتھ قرض پروگرام کیلئےمذاکرات میں مددگارہوگا۔

موڈیز کے مطابق شرح نموکا ہدف 3.6 فیصد رکھ کرآئی ایم ایف کوخوش کرنے کی کوشش کی اور مالی استحکام کیلئے ٹیکسوں میں اضافے اورشرح نموپرانحصارکیا گیا۔

بین الاقوامی ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے کہا کہ اصلاحات پرقائم رہنا بجٹ اہداف کے حصول کیلئے اہم ہوگا، مہنگائی کی وجہ سے سماجی تناؤ دوبارہ پیدا ہوسکتا ہے، مہنگائی کا اصلاحات کے پروگرام پراثرہوسکتا ہے۔

موڈیز نے کہا کہ حکومت کے پاس مضبوط الیکٹورل مینڈیٹ نہ ہونے کی وجہ سے اصلاحات پرعمل مشکل ہوسکتا، ریونیومیں40 فیصد اضافہ ٹیکسوں میں اضافے کی وجہ سےہے، توانائی کے شعبے میں 1.4 ٹریلین روپے سبسڈی ظاہرکرتی ہے کہ اصلاحات محدود ہیں۔

علاقائی

کوئٹہ : تربت میں زلزلے کے جھٹکے

تفصیلات کے مطابق زلزلے کا مزکز تربت سے 24 کلومیٹر مغرب کی جانب تھا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کوئٹہ : تربت میں زلزلے کے جھٹکے

کوئٹہ : کوئٹہ تربت میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ۔ 

تفصیلات کے مطابق زلزلے کا مزکز تربت سے 24 کلومیٹر مغرب کی جانب تھا ۔ 

زلزلہ پیما کے مطابق زلزلہ کی شدت 4.2 ریکارڈ کی گئی ہے ۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

چاہتا ہوں جب بھی مارشل لاء کا خطرہ ہو عدالتیں کھلی ہوئی ہوں، جسٹس اطہر من اللہ

کاش عدالتیں 5 جولائی کو بھی کھلی ہوتیں جب جنرل ضیاء نے منتخب وزیراعظم کوہٹایا تھا، سپریم کورٹ جج

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چاہتا ہوں جب بھی مارشل لاء کا خطرہ ہو عدالتیں کھلی ہوئی ہوں، جسٹس اطہر من اللہ

سپریم کورٹ کے جج جسٹس اطہرمن اللہ نے کہا ہے کہ چاہتا ہوں جب بھی مارشل لاء کا خطرہ ہو عدالتیں کھلی ہوئی ہوں، کاش عدالتیں 5 جولائی کو بھی کھلی ہوتیں جب جنرل ضیاء نے منتخب وزیراعظم کوہٹایا تھا

نیویارک بار سے خطاب کرتے ہوئے جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ میں ٹی وی چینل کا نام لینا نہیں چاہ رہاجس نے عدم اعتماد کے وقت ایسا ماحول بنایا جیسے مارشل لاء لگنے والا ہے، میں چاہتا ہوں جب بھی مارشل لاء کا خطرہ ہو عدالتیں کھلی ہوئی ہوں۔ 

انہوں نے کہا کہ کاش عدالتیں 5 جولائی کو بھی کھلی ہوتیں جب ضیاء نے منتخب وزیراعظم کوہٹایا تھا، کاش عدالتیں 12 اکتوبر1999  کوکھلی ہوتیں جب مشرف نے منتخب وزیراعظم کوباہرپھینکا،اسلام آباد ہائی کورٹ بھی رات کو کھولی گئی کیونکہ ٹی وی چینل نے ایسا ماحول بنا دیا تھا کہ مارشل لاء لگنے والا ہے۔ کسی نے اس وقت کے وزیراعظم عمران خان کو ہٹانےکی کوشش کی ہوتی تویہ امتحان اسلام آباد ہائیکورٹ کا ہوتا کہ وہ آئین کی بالادستی کےلیےکھڑی ہوتی ہے یا نہیں۔ 

جسٹس اطہر نے مزید کہا کہ جو لوگ 2022 تک میرے خلاف پروپیگنڈا کرتے تھے وہ اچانک تبدیل ہوگئے، آج پروپیگنڈا وہ کررہے ہیں جنہوں نے اس وقت اسلام آباد ہائیکورٹ سے فائدہ اٹھایا تھا، اس وقت انہیں ملک کی کوئی ہائیکورٹ ریلیف نہیں دے رہی تھی، یہ جج کا اصل امتحان ہوتا ہے جس سے جج اور عدالت پر عوام کا اعتماد بڑھتا ہے، تنقید سے جج کو خوفزدہ نہیں ہونا چاہیے۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

وفاقی کابینہ کی جانب سے آن لائن ویزہ درخواستوں کے نظام کے نفاذ کی منظوری

اس سلسلے میں وزارت داخلہ میں ایک ڈیش بورڈ قائم کیاجائے گا تاکہ آن لائن ویزے کے نظام کی نگرانی کی جاسکے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

وفاقی کابینہ کی جانب سے  آن لائن ویزہ درخواستوں کے نظام کے نفاذ کی منظوری

وفاقی کابینہ نے آن لائن ویزہ درخواستوں کے نظام کے نفاذ کی منظوری دے دی ۔

جس کے تحت 126 ملکوں کے شہری 24 گھنٹے کے اندر کاروباری اورسیاحتی ویزے حاصل کرسکیں گے ان 125 ملکوں کے شہریوں کو ویزہ فیس سے استثنی حاصل ہوگا۔

کابینہ نے جس کا اجلاس وزیراعظم شہبازشریف کے زیر صدارت آج(بدھ) کو اسلام آباد میں ہوا ویزہ آن ارائیول  کی ایک ذیلی کیٹگری کی بھی منظوری دی جس کا مقصد تیسرے ملک کے پاسپورٹ رکھنے والے سکھ یاتریوں کوسہولت فراہم کرنا ہے۔

اس سلسلے میں وزارت داخلہ میں ایک ڈیش بورڈ قائم کیاجائے گا تاکہ آن لائن ویزے کے نظام کی نگرانی کی جاسکے۔

کابینہ نے ملک کے مختلف شہروں میں خصوصی اور بینکنگ عدالتوں کے نوٹی فیکیشن کی منظوری دی یہ عدالت سیکورٹی اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان کے تحت کام کریں گی۔

کابینہ نے پاکستان اور ڈنمارک کے درمیان لاجسٹکس ، ٹرانسپورٹ، سرسبز اور پائیدار ترقی واٹر WASTE مینجمنٹ ، شہری علاقوں میں ماحول دوست منصوبوں کی ترقی ، قابل تجدید توانائی اور سرکاری ونجی شراکت کے تحت بنیادی ڈھانچے کی تعمیر سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کو فروغ دینے کیلئے ایک مفاہمتی یادداشت پردستخط کرنے کی بھی منظوری دی۔

وفاقی کابینہ نے ایک قرارداد بھی منظور کی ہے جس میں اسرائیل کی مذمت اور فلسطینیوں کی حمایت کی گئی ہے اور جنگی جرائم کے ارتکاب پر اسرائیل کے خلاف مقدمہ چلانے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

اجلاس میں کہا گیا کہ اسرائیلی فورسز کی بلاامتیاز بمباری سے شہری آبادی، ہسپتال، سکول، اقوام متحدہ کے دفاتر اور صحافی کچھ بھی محفوظ نہیں ہے۔

اجلاس میں کہا گیا کہ مقبوضہ فلسطینی علاقے قبرستان اور ملبے کا ڈھیر بن چکے ہیں۔

اجلاس میں مزیدکہا گیا کہ عالمی عدالت انصاف فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی اقدامات کو پہلے ہی غیر قانونی اور بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی قرار دے چکی ہے۔

اجلاس میں اس مسئلے سے موثر طور پر نمٹنے کے لئے تمام بین الاقوامی فورمز پر اسلامی ممالک کی جانب سے متحدہ حکمت عملی کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا۔

وفاقی کابینہ نے مسئلہ فلسطین پر شنگھائی تعاون تنظیم کے موقف کو بھی سراہا اور عالمی برادری پر زور دیا کہ غزہ میں اسرائیل کے مذموم جنگی جرائم کے خلاف کارروائی کرے۔

اجلاس میں اس تنازع کے حل کے لئے1967 سے پہلے کی سرحدوں اور دارالحکومت القدس الشریف کے ساتھ فلسطینی ریاست کے قیام پر مبنی دو ریاستی حل کے حوالے سے پاکستان کے دیرینہ موقف کا اعادہ کیا گیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll