جی این این سوشل

پاکستان

تحائف خریدنے کے لیے عمران خان کےپاس پیسے کہاں سے آئے:مریم نواز

لاہور:رہنما مسلم ن مریم نواز نے کہا ہےکہ اصل سوال یہ ہےکہ تحائف خریدنے کے لیے عمران خان کےپاس پیسے کہاں سے آئے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

تحائف خریدنے کے لیے عمران خان کےپاس پیسے کہاں سے آئے:مریم نواز
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ ٹوئیٹر پر جاری پیغام میں مریم نے کہا کہ عمران خان نےگھڑی اور ہار پہلے خریدے پھر بیچ دیے، یہ اصل کہانی نہیں ہء۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے وہ گھڑی اور ہار کتنے میں حکومت سے خریدے اور کتنے میں بیچ دیے، اصل کہانی یہ ہے۔

اپنے ٹوئیٹ میں ان کا کہنا تھا کہ اصل سوال یہ ہے کہ تحائف خریدنے کے لیے سابق وزیر اعظم عمران خان کےپاس پیسے کہاں سے آئے؟

کیونکہ وزیراعظم کی تنخواہ کے علاوہ ان کا کوئی ذریعہ آمدن نہیں۔

پاکستان

چیف الیکشن کمیشن سمیت دیگر ممبران کیخلاف سپریم جوڈیشنل کونسل میں شکایت دائر

شکایت حلیم عادل شیخ، جسٹس (ر) نور الحق قریشی اور شبیر احمد نے مشترکہ طور پر دائر کی 

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چیف الیکشن کمیشن سمیت دیگر ممبران کیخلاف سپریم جوڈیشنل کونسل میں شکایت دائر

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ اور الیکشن کمیشن کے دیگر ممبران کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں شکایت دائر کردی گئی۔

شکایت حلیم عادل شیخ، جسٹس (ر) نور الحق قریشی اور شبیر احمد نے مشترکہ طور پر دائر کی ہے ۔

شکایت کے متن کے مطابق چیف الیکشن کمشنر اور ارکان آئینی ذمے داری ادا کرنے میں ناکام رہے، انہوں تحریک انصاف کےمینڈیٹ اور عدالتی فیصلوں کو نیچا دکھانے کی کوشش کی۔

حلیم عادل شیخ، جسٹس (ر) نور الحق قریشی اور شبیر احمد نے کہا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر اور ارکان مس کنڈکٹ کے مرتکب ہوئے ہیں، الیکشن کمیشن نے سیاسی طور پر تعینات بیوروکریسی کو آر او اور ڈی آر او تعینات کیا۔

شکایت میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ سابق کمشنر راولپنڈی نے انکشاف کیا کہ راولپنڈی کے ہر حلقہ میں ن لیگ کو 70 ہزار ووٹ ڈلوا کر جتوایا گیا، لیاقت چٹھہ نے یہ بھی انکشاف کیا کہ چیف الیکشن کمشنر اور چیف جسٹس اس عمل میں ملوث ہیں، الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو پہلےانتخابی نشان پھر اس کے نامزد ارکان کو پارٹی نام سے محروم کیا ، چیف الیکشن کمشنر اور ارکان کے اقدامات سے 12 کروڑ سے زائد ووٹرز متاثر ہوئے۔

شکایت میں استدعا کی گئی ہے کہ چیف الیکشن کمشنر اور ارکان پر عائد الزامات کی انکوائری کی جائے اور انکوائری میں الزامات ثابت ہونے پر چیف الیکشن کمشنر اور ارکان کی برطرفی کی سفارش کی جائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پنجاب کے بیشتر اضلاع میں بارش کا امکان

لاہور میں سورج اپنے جلوے دکھا رہا ہے  تپش کا راج بھی مسلسل برقرار ہے ، شہر کا کم سے کم درجہ حرارت 31 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پنجاب کے بیشتر اضلاع میں بارش کا امکان

لاہور: لاہورسمیت  پنجاب کے بیشتر اضلاع میں آج موسلا دھار بارشوں کا امکان ہے۔

ترجمان پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ لاہور، سیالکوٹ، نارووال، گوجرانولہ، فیصل آباد اور راولپنڈی میں مون سون بارشیں ہونگی۔ خیبر پختونخوا،  وسطی اور جنوبی پنجاب  ، سندھ اورشمال مشرقی بلوچستان ، اسلام آباد، کشمیر اور گلگت بلتستان میں چند مقامات پر آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان رہا ۔

 موسم گرم اور حبس کا راج رہا   تاہم محکمہ  موسمیات کے مطابق رات کے وقت ابرآلود رہنے کا امکان ہے۔ جبکے درجہ 35سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

لاہور میں سورج اپنے جلوے دکھا رہا ہے  تپش کا راج بھی مسلسل برقرار رہا ، شہر کا کم سے کم درجہ حرارت 31 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے، محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹے کے دوران بارش کی پیشگوئی کی گئی ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

ایم ڈی کیٹ امتحان 22 ستمبر کو منعقد ہوگا

ایم ڈی کیٹ کا نصاب اگلے ہفتے پی ایم ڈی سی کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کر دیا جائے گا اور رجسٹریشن کے لیے رجسٹریشن پورٹل بھی کھلا رہے گا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایم ڈی کیٹ امتحان 22 ستمبر کو منعقد ہوگا

لاہور: پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل (پی ایم ڈی سی) نے میڈیکل اور ڈینٹل کالجوں میں داخلے کے لیے میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالج داخلہ ٹیسٹ (ایم ڈی کیٹ) 22 ستمبر 2024 (اتوار) کو منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کونسل نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ ایم ڈی کیٹ کا نصاب اگلے ہفتے پی ایم ڈی سی کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کر دیا جائے گا اور رجسٹریشن کے لیے رجسٹریشن پورٹل بھی کھلا رہے گا۔

پی ایم ڈی سی کے صدر پروفیسر ڈاکٹر رضوان تاج نے کہا کہ طلباء کی سہولت کے لیے کونسل نے نصاب میں کوئی تبدیلی نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، لہٰذا ایم ڈی کیٹ کا نصاب برقرار رہے گا اور پچھلے سال کی طرح ہی ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ کونسل نے تمام صوبائی سیکرٹریز کو ہدایت کی ہے کہ وہ ایم ڈی کیٹ امتحان کی تیاری شروع کر دیں۔

پروفیسر رضوان تاج نے کہا کہ یہ فیصلہ طلباء کے وسیع تر مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال تقریباً 180,534 طلبہ امتحانات میں شریک ہوئے تھے، جبکہ اس سال 200,000 طلبہ کے امتحان میں بیٹھنے کا امکان ہے۔

پروفیسر رضوان تاج نے کہا کہ ایم ڈی سی اے ٹی پیپر مشکل انڈیکس کو بھی طلباء کی سہولت کے لیے میرٹ پر سمجھوتہ کیے بغیر ایڈجسٹ کیا جائے گا تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ تمام صوبوں نے طلبہ کو بغیر کسی پریشانی کے امتحانات کا انعقاد کیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll