جی این این سوشل

صحت

عید کے موقع پر کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کیا جائے : وزیر صحت 

اسلام آباد:وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل  کاکہنا ہے کہ  عیدالاضحی کے موقع پر کوویڈ 19کے پھیلائو کو روکنے کیلئے کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کیا جائے۔ 

پر شائع ہوا

کی طرف سے

عید کے موقع پر کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کیا جائے : وزیر صحت 
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

وفاقی وزیر نیشنل ہیلتھ سروسز، ریگولیشنز و کوآرڈینیشن عبدالقادر پٹیل نے قوم پر زور دیا ہے کہ عید الاضحی کی چھٹیوں کے دوران حفظان صحت کی ہدایات پر سختی سے عمل کیا جائے غیر ضروری سفر سے اجتناب کیا جائے تاکہ کورونا وائرس کے پھیلائو کو کم سے کم کیا جا سکے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ عوام کوچاہئے کہ وہ رش والی جگہوں پر نہ جائیں، ماسک پہنیں ،ایک دوسرے سے فاصلے پر رہیں اور کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں۔

 انہوں نے مزید کہا کہ مذہبی سکالرز کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ مساجد میں ایس او پیز پر عمل کو یقینی بنائیں جبکہ عوام عید کی نماز کے بعد ایک دوسرے سے گلے ملنے اور ہاتھ ملانے سے گریز کریں۔

عبدالقادر پٹیل نے عوام پر زور دیا کہ وہ بوسٹر ڈوزلگوائیں کیونکہ ملک میں کورونا کے پھیلائو کی شرح میں اضافہ کا رجحان ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا  کہ حکومت اس حوالہ سے جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات کو یقینی بنا رہی ہے تاہم عوام کی بھی ذمہ داری ہے کہ قربانی کرتے وقت احتیاطی تدابیر پر عمل کریں کیونکہ وائرس کے پھیلائو پر قابو پانے کے حوالہ سے احتیاط بہترین راستہ ہے۔

انہوں نے شہریوں کو ہدایت کی کہ قصابوں کو دستانے استعمال کرنے کا کہیں اور جانوروں  کی قربانی کے بعد اچھی طرح ہاتھ دھوئیں۔

پاکستان

ملک کے مختلف حصوں میں بارشوں کی پیشگوئی ، الرٹ جاری 

اسلام آباد ، پنجاب ، خیبر پختون خوا اور بلوچستان میں آج سے 13 اگست تک تیز ہواؤں اور گرج چمک کے ساتھ  بارشوں کا امکان ہے ۔  

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملک کے مختلف حصوں میں بارشوں کی پیشگوئی ، الرٹ جاری 

تفصیلات کے مطابق محکمہ موسمیات نے ملک کے بیشتر حصوں میں آج سے بارشوں کی  پیش گوئی کردی ہے ۔ شہر قائد میں  بارش کا سلسلہ 14 اگست تک جاری رہ سکتا ہے جس دوران سمندر میں شدید طغیانی ہوسکتی ہے۔ بارش سے کراچی کے نشیبی علاقے بھی زیر آب آنے کا خدشہ ہے۔ 

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مون سون سسٹم وسطی بھارت اور گجرات کے قریب موجود ہے، مون سون کے کم دباو کی شدت تاحال برقرار ہے جس کے باعث آج دوپہر میں ہلکی بارش ہوسکتی ہے۔ چار سے پانچ دن کے اس اسپیل میں کراچی میں  100 سے 150 ملی میٹر بارش کی امید کی جارہی ہے ، بلوچستان میں بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے 16 یا 17 اگست تک جاسکتا ہے۔

کراچی میں بدھ کے روز بھی بعض علاقوں میں علی الصبح بوندا باندی ہوئی جبکہ  شہر  میں چند مقامات پر موسلا دھار بارش کا بھی امکان ہے۔ 

اندرون سندھ بارشوں سے ٹھٹھہ ، بدین ، دادو، جام شورو ، لاڑکانہ ، شہید بینظیرآباد اور میرپور خاص میں نشیبی علاقے زیر آب آ سکتے ہیں۔

محکمہ  موسمیات  کے مطابق بلوچستان میں آج سے 13 اگست تک مون سون کے نئے اسپیل سے متعلق الرٹ جاری کیا گیا ہے۔  ژوب، بارکھان ، آواران، واشک ، خاران، قلات ، پنجگور، کیچ،خضدار اور لسبیلہ میں کہیں ہلکی اور کہیں موسلادھار بارش کی پیش گوئی  ہے۔  

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

چیئرمین تحر یک انصاف عمران  خان نے آج اہم اجلاس طلب کرلیا

اسلام آباد:  پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے پارٹی کی سینئر لیڈرشپ کا اجلاس آج بنی گالا میں طلب کرلیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چیئرمین تحر یک انصاف عمران  خان نے آج    اہم اجلاس طلب کرلیا

ذرائع کے مطابق کستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے زرصدارت اجلاس مں  مرکزی قیادت کے ساتھ پنجاب کے اہم رہنماؤں کو بھی بلایا گیا ہے ۔

اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال اور آئندہ کی حکمت عملی پر غور ہو گا۔

اجلاس میں 13 اگست کے لاہور جلسہ سمیت مجموعی سیاسی صورتحال اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کئے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی عمران خان کی زیر صدارت پارٹی قیادت کا اہم اجلاس ہوا جس میں 13 اگست کے جلسے اور شہباز گل کی گرفتاری کی صورتحال  پر غور کیا گیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ڈاکٹررتھ فاؤ کو بچھڑے 5  برس بیت گئے

پاکستان میں جذام کے مریضوں کے لیے مسیحا ڈاکٹر رتھ فاؤ کی آج   پانچویں   برسی منائی جارہی ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ڈاکٹررتھ فاؤ کو بچھڑے 5  برس بیت گئے

 جرمنی میں پیدا ہونے والی یہ عظیم خاتون 57 سال پاکستان میں مقیم رہیں اورجذام کا مرض مملکت خداد سے ختم کرنے میں سب سے کلیدی کردار ادا کیا ۔ ڈاکٹر رتھ فاؤ 9ستمبر1929 کو جرمنی کے شہر لیپ زگ میں پیدا ہوئی تھیں ، ڈاکٹر رتھ فاؤ1960 میں پاکستان آئیں اور پھر جذام کے مریضوں کے لیے اپنی ساری زندگی وقف کردی تھی ،  وہ جذام کے مریضوں کو مفت علاج کی سہولیات فراہم کرتی تھیں۔

جرمنی کی سماجی تنظیم ’ڈاٹرز آف ہارٹ آف میری‘ کی جانب سے جب انہوں نے پہلی مرتبہ کراچی کا دورہ کیا تو جذام کے مریضوں کو دیکھ کر انہوں نے فیصلہ کیا کہ وہ پاکستان میں رہ کراس مرض کے خاتمے کے لیے کوشش کریں گی۔

ڈاکٹر رتھ فاؤ نے 1963 میں آئی آئی چندریگر روڈ (پرانا میکلوروڈ) سے ملحقہ جذام کے مریضوں کی بستی میں مفت کلینک کا آغاز کیا تو اس وقت پاکستان میں ہزاروں مریض تھے۔ اس زمانے میں لوگوں کا عمومی رویہ تھا کہ ایسے مریضوں سے میل جول سے اجتناب برتتے تھے۔

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے سنہ1996 میں پاکستان کو کوڑھ کے مرض پر قابو پالینے والے ممالک میں شامل کرلیا گیا اور پاکستان کو یہ اعزاز دلانے میں ڈاکٹررتھ فاؤ نے سب سے اہم کردار اداکیا ۔

ڈاکٹر رتھ فاؤ جذام کے مریضوں کی مسیحائی کرنے کے لیے سندھ، خیبر پختونخواہ، بلوچستان اور شمال میں دور دراز علاقوں میں بھی گئیں اورایسے مریضوں جذام کے زیادہ سے زیادہ مریضوں کی مسیحائی کے لیے انہوں نے کراچی کے دوسرے علاقوں میں بھی  چھوٹے کلینک قائم کیے اور یہ نیٹ ورک بڑھتے بڑھتے 157 لیپرسی سینٹرز تک پہنچ گیا۔

ان گراں قدر خدمات کے اعتراف میں پاکستانی حکومت کی جانب سے انہیں 1979 میں ہلال امتیاز اور 1989 میں ہلال پاکستان کے اعزازت سے نوازا گیا جبکہ 1988 میں انہیں پاکستانی شہریت دی گئی ۔

لاکھوں مریضوں کے چہروں پر مسکراہٹ بکھیرنے والی ڈاکٹر رتھ فاؤ 10 اگست 2017 کو طویل علالت کے بعد انتقال کر گئیں۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll