جی این این سوشل

علاقائی

پولیس کا چوہدری پرویز الٰہی کی رہائش گاہ پر چھاپہ

گھر کی حفاظت پر مامور ملازمین کو حراست میں لیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پولیس کا چوہدری پرویز الٰہی کی رہائش گاہ پر چھاپہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

گجرات: سابق وزیر اعلی پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کے گھر پر چھاپہ مارا گیا ہے،  

ذرائع کے مطابق پولیس کی جانب سے چوہدری پرویزالٰہی کے گھر کی حفاظت پر مامور ملازمین کو حراست میں لیا گیا ہے،  پنجاب پولیس رہائش گاہ کنجاہڑی ہاؤس پر چھاپامارا پولیس کی کچھ گاڑیاں رہائش گاہ کے قریب بھی گشت کرتی رہیں۔

چوہدری پرویز الٰہی اور انکے بیٹے مونس الٰہی گھر پر نہیں بلکہ لاہور میں موجود ہیں، پولیس کی جانب سے کسی بھی قسم کے مؤقف دینے سے انکار کیا گیاصرف گھریلو ملازمین گھر پر موجود ہیں، اب تک یہ بتایا نہیں گیا کہ پولیس نے کارروائی کس مقصد کے تحت کی ہے۔

پاکستان

کل ضمنی الیکشن نہیں بلکہ ایک ڈھونگ رچایا گیا، عمر ایوب

پی ٹی آئی کا آئین و قانون کے اندر رہ کر پنجاب سے تحریک کا آغاز کرنےکا اعلان

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کل ضمنی الیکشن نہیں بلکہ ایک ڈھونگ رچایا گیا، عمر ایوب

اپوزیشن لیڈر عمر ایوب نے کہا ہے کہ ضمنی الیکشن نہیں بلکہ ایک ڈھونگ رچایا گیا۔

اسلام آباد میں بیرسٹر گوہر اور صاحبزادہ حامد رضا کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمر ایوب نے کہا کہ الیکشن کے روز انٹرنیٹ سروسز بند کر دی گئی۔ہمارے سامنے گجرات میں نیوز چینلز کے کیمرہ مین اور رپورٹر کو گھسیٹ کر جس طرح بے دردی سے پنجاب پولیس نے گرفتار کیا اور ان پر تشدد کیا۔

پوچھنے پر ہمیں بتایا گیا کہ پولیس کی وردی میں ایجنسیز کے لوگ پھر رہے ہیں گرفتاریاں وہ لوگ کررہے ہیں درندگی اور لاقانونیت کی ہر حد پار کرچکے ہے یہ لوگ کل مجھے اور بیرسٹر گوہر کو پولیس کی جانب سے متعدد بار گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی اور پولنگ اسٹیشن کے اندر ہمیں نہیں داخل ہونے دیا گیا۔

عمر ایوب نے کہا کہ انشاء اللہ تعالیٰ تحریک تحفظ آئین پاکستان فیصل آباد سے جلسوں کا آغاز کرے گی اس کے بعد پانچ مئی کو ہمارا جلسہ کراچی میں ہوگا،پنجاب، اندرون سندھ اور خیبرپختونخوا میں بھی جلسے ہونگے اس جمعہ کو پورے پاکستان میں صوبائی اسمبلی کی سیٹوں پر ہمارے امیدوار ہمارے منتخب نمائندوں کا ایک بھرپور احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹر گوہر نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں گجرات پولنگ اسٹیشن میں ہمیں روکا گیا، 700 ووٹ والے پولنگ اسٹیشن میں 900 سے زائد ووٹ ڈالے گئے، الیکشن کمیشن حکام نے خود بتایا کہ دھاندلی جاری ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے مزید کہا کہ الیکشن کمیشن سے مطالبہ ہے پنجاب میں جیت کے نوٹیفکیشن روکے جائیں، الیکشن کمیشن اورسپریم کورٹ سے استدعا ہے کہ آر او جوڈیشری سے لیں، الیکشن کمیشن نے عدلیہ سے آر او کیوں نہیں لیے۔ ہر بار ملک میں ووٹ اور جمہوریت کے ساتھ کھیلا جاتا ہے، حقیقی عوامی منتخب نمائندے ہوں گے تو ملک میں بہتری آئے گی۔

تحریک انصاف کے رہنما کا یہ بھی کہنا ہے کہ بانیٔ پی ٹی آئی کی رہائی اور مہنگائی کم ہونے پر بات کرنا چاہتے ہیں۔

سنی اتحاد کونسل کے سربراہ حامد رضا نے کہا کہ ہم آئین و قانون کے اندر رہ کر پنجاب سے تحریک کا آغاز کرنے جارہے ہیں،تحریک کے ذریعے کچے اور پکے کے ڈاکوؤں کا احتساب کریں گے-

انہوں نے کہا کہ کل والے الیکشن کو الیکشن کہنا بھی الیکشن کی توہین ہے جس طرح کل آر اوز سے زبردستی نتائج لیے گئے، پریزائیڈنگ افسران سے زبردستی فارم 45 پر دستخط لیے ان پر تشدد کیا گیا، گورنر ہاؤس میں لوگوں کو پیسے دینے کی ویڈیو بنائی گئی اس کی صرف مذمت کافی نہیں۔

الیکشن کمیشن ، حکومت پنجاب ان کے اوپر غداری آرٹیکل 6 کی ایف آئی آرز ہونے چاہیے اس طرح آئین پاکستان کا کھلم کھلا مزاق تاریخ میں نہیں اڑایا گیا ہم ان الیکشن کو ہم ان نتائج کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ایرانی صدر سید ابراہیم رئیسی کی صدر مملکت آصف علی زرداری سے ملاقات

صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ میرے بھائی اور ایران کے صدر کا استقبال کرنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر سید ابراہیم  رئیسی کی صدر مملکت آصف علی زرداری سے  ملاقات

ایران کے صدر نے آج صدر مملکت آصف علی زرداری سے ملاقات کی۔
تفصیلات کے مطابق ایران کے صدر ابراہیم رئیسی نے صدر مملکت آصف علی زرداری سے ایوان صدر میں ملاقات کی ، دونوں رہنماؤں کی ملاقات کی تفصیلات صدر آصف علی زرداری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس پر جاری کر دی ہیں۔

صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ میرے بھائی اور ایران کے صدر کا استقبال کرنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے دو طرقہ تعلقات کی رفتار پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں، وزیر اعلیٰ کے پی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور نے الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ بے نقاب ہو گئے ہیں، ہم  آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ ہمیں ہماری مخصوص نشستیں واپس دیں۔

پشاور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈا پور نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر قانون پر عمل کریں اور پی ٹی آئی کی حمایت یافتہ سنی اتحاد کونسل کو ان کے جائز حقوق دیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر ای سی پی نے انہیں ان کا حق واپس نہ دیا تو وہ اپنے حقوق کی واپسی کے لیے ہر حد تک جائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مخصوص نشستوں کے حوالے سے اپنے حقوق کے لیے اپیل دائر کرنے کے لیے متعلقہ فورم سے رجوع کریں گے۔ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں۔

کے پی کے وزیراعلیٰ نے کہا کہ جو لوگ مینڈیٹ کے بغیر اقتدار میں بیٹھے ہیں وہ ہمیں مجبور نہ کریں۔ خیبر پختونخوا کے لیے ان کی واجب الادا رقم بھی حاصل کریں گےاور صوبے کے حقوق کے لیے آواز اٹھاتے رہیں گے۔ہم اس لاقانونیت کو مزید نہیں ہونے دیں گے۔ ہم اپنے صوبے کے لیے کھڑے ہوں گے۔

ضمنی انتخابات سے متعلق سوال کے جواب میں کے پی کے کے وزیراعلیٰ گنڈا پور نے کہا کہ پنجاب میں کل ہونے والے انتخابات میں بڑے پیمانے پر دھاندلی کی گئی۔

علی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ ہمارےامیدواروں کوانتخابی مہم نہیں چلانےدی گئی ، ہم نےخیبرپختونخوامیں سب کومکمل آزادی دی ، پنجاب میں کچھ نشستوں پرپہلےسےزیادہ ووٹ ملے۔

بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ پرعلی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ وفاق سےخط ملا کہ بجلی چوری پربات کرناچاہتےہیں، لیکن یہاں بات چیت سے پہلے ہی واپڈا کے ذریعے وفاق نے کارروائیاں شروع کر دیں۔

انہوں نے کہاکہ ہمارے لوگوں کوچورچورنہ کہا جائے، چوری ہم نہیں کرتے،آپ کاڈپارٹمنٹ کرواتاہے، مجھ سےبات کریں،عوام سےمیں بات کروں گا، اپنی عوام کیلئےچورکا لفظ برداشت نہیں کروں گا، اگر میں صوبے کا حق نہیں لےسکتا تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ صوبے لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کریں گے، اور انہوں نے انہیں ہیلتھ کارڈ کی سہولت فراہم کی کیونکہ وہ علاج کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll