جی این این سوشل

ٹیکنالوجی

یوٹیوب کے انڈین نژاد نئے سربراہ نیل موہن کون ہیں؟

یوٹیوب کی چیف ایگزیکٹیو سوزین ووچتسکی نے طویل عرصے بعد اپنے عہدے سے دستبردار ہونے کا اعلان کیا اور اب ان کی جگہ نیل موہن لیں گے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

یوٹیوب کے انڈین نژاد نئے سربراہ نیل موہن کون ہیں؟
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

خیال رہے سوزین ووچتسکی کے کار گیراج میں برسوں پہلے یوٹیوب کی پیرنٹ کمپنی گوگل کی شروعات ہوئی تھی۔
جمعرات کو سوزین نے اعلان کیا کہ یوٹیوب سے بطور چیف پروڈکٹ آفیسر منسلک نیل موہن اب ویڈیو سٹریمنگ پلیٹ فارم کے نئے باس ہوں گے۔
انڈین نژاد امریکی نیل موہن سٹین فورڈ یونیورسٹی کے گریجویٹ ہیں جنہوں نے سنہ 2008 میں یوٹیوب بحیثیت چیف پروڈکٹ آفیسر جوائن کیا تھا۔ نیل موہن اس سے پہلے آئی ٹی مصنوعات اور سافٹ ویئر بنانے والی کمپنی مائیکروسوفٹ کے لیے بھی کام کر چکے ہیں اور اس کے علاوہ برطانوی تھنک ٹینک کونسل آن فارن ریلیشنز کا بھی حصہ ہیں۔
نیل موہن نے الیکٹریکل انجینیئرنگ میں سٹین فورڈ یونیورسٹی سے پہلے بیچلرز کی ڈگری حاصل کی اور پھر اسی یونیورسٹی کے گریجویٹ سکول آف بزنس سے ایم بی اے کیا۔
تعلیم سے فراغت کے بعد نیل موہن لمبے عرصے تک ڈبل کلک نامی انٹرنیٹ ایڈورٹائزنگ کمپنی کے ساتھ منسلک رہے اور جب گوگل نے 2007 میں اس کمپنی کو خریدا تو نیل موہن بھی گوگل کی ٹیم کا حصہ بن گئے۔
بزنس انسائیڈر کی ایک رپورٹ کے مطابق 2013 میں نیل موہن کو ٹوئٹر میں بطور چیف پروڈکٹ آفیسر کام کرنے کی پیشکش ہوئی تھی لیکن گوگل نے تقریباً 100 ملین ڈالر خرچ کر کے نیل موہن کو رُکنے پر مجبور کر دیا تھا۔
نیل موہن سے قبل انڈیا میں خاندانی جڑیں رکھنے والی کئی شخصیات دنیا کی بڑی ٹیکنالوجی اور آئی ٹی کمپنیوں کے سربراہ کے طور پر کام کر چکی ہیں۔
ان شخصیات میں مائیکروسوفٹ کے سی ای او ستیا نڈیلا، ایڈوبی کے سی ای او شانتانو نارائن اور ایلفابیٹ کے سی ای او سندر پچائی بھی شامل ہیں۔

پاکستان

باڈر لائن کے دونوں جانب آج کشمیری یوم شہدا منا رہے ہیں

مقبوضہ جموں و کشمیر میں مکمل ہڑتال کی جائے گی اور سرینگر کے علاقے نقشبند صاحب میں واقع شہداقبرستان کی طرف مارچ کیا جائے گا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

باڈر لائن کے دونوں جانب آج  کشمیری یوم شہدا منا رہے ہیں

کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج یوم شہدائے کشمیر منا رہے ہیں جس کا مقصد 13 جولائی 1931 اورتحریک آزادی کشمیرکے ان تمام شہداکو خراج عقیدت پیش کرنا ہے ۔جنہوں نے بھارتی غلامی سے آزادی کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔ مقبوضہ جموں و کشمیر میں مکمل ہڑتال کی جائے گی اور سرینگر کے علاقے نقشبند صاحب میں واقع شہداقبرستان کی طرف مارچ کیا جائے گا جہاں 13 جولائی کے شہدامدفون ہیں۔ ہڑتال کی اپیل کل جماعتی حریت کانفرنس کی نظر بند قیادت نے کی ہے۔

1931 میں آج کے روزڈوگرہ مہاراجہ کے فوجیوں کی گولیوں کا نشانہ بننے والے 22 کشمیری شہداکو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے آزاد کشمیر اور دنیا بھر کے بڑے شہروں میں ریلیوں، سیمینارزاور دیگر تقریبات کا اہتمام کیا جائے گا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

جرم

کوئٹہ میں گاڑی کے قریب دھماکہ، 1 شخص جاں بحق

پولیس، بم ڈسپوزل سکواڈ اور ایف سی کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کئے اور تفتیش کا آغاز کر دیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کوئٹہ میں گاڑی کے قریب دھماکہ، 1 شخص جاں بحق

کوئٹہ میں گاڑی کے قریب دھماکے میں ایک شخص جاں بحق جبکہ ایک زخمی ہوگیا۔

ریسکیو ذرائع کے مطابق دھماکا بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے علاقے اختر آباد میں مغربی بائی پاس کے قریب پیش آیا۔

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنیوالے اداروں کے اہلکار اور ریسکیو حکام جائے وقوعہ پہنچ گئے، پولیس، بم ڈسپوزل سکواڈ اور ایف سی کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کئے اور تفتیش کا آغاز کر دیا۔

ریسکیو حکام کا کہنا ہے کہ جاں بحق ہونے والے شخص اور زخمی کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

عدت نکاح کیس میں  عمران خان اور بشری بی بی کی سزائیں کالعدم، بری کرنے کا حکم

عدالت نے سابق وزیر اعظم اور ان کی اہلیہ کے خلاف عدت نکاح کیس میں سزا کے خلاف اپیلیں منظور کرتے ہوئے ان کی7،7سال قیدکی سزائیں معطل کردیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عدت نکاح کیس میں  عمران خان اور بشری بی بی کی سزائیں کالعدم، بری کرنے کا حکم


اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت نے سابق وزیر اعظم عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے خلاف عدت نکاح کیس میں محفوظ فیصلہ سنا دیا۔

عدالت نے سابق وزیر اعظم عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے خلاف عدت نکاح کیس میں سزا کے خلاف اپیلیں منظور کرتے ہوئے ان کی7،7سال قیدکی سزائیں معطل کردیں۔

عدت نکاح کیس میں سزا کیخلاف اپیلوں پر سماعت ایڈیشنل اینڈ سیشن جج افضل مجوکا نے کی، خاور مانیکا کے وکیل زاہد آصف ایڈووکیٹ اور عمران خان کے وکیل عمران صابر، مرتضیٰ طوری، زاہد ڈار عدالت میں پیش ہوئے۔

وکیل زاہد آصف نے مؤقف اپنایا کہ اگر ملزمان کوئی مزید شواہد پیش کرنا چاہتے ہیں ، تو پیش کر سکتے ہیں، ہمیں کوئی اعتراض نہیں، مزید کہنا تھا کہ کسی بھی پارٹی سے ان کے فقہ کے بارے میں نہیں پوچھا گیا۔

وکیل زاہد آصف نے دلائل دیے کہ مفتی سعید نے بھی نہیں کہا کہ ملزمان حنفی فقہ سے ہیں، سلمان اکرم راجہ کہتے ہیں کہ ان کے کلائنٹ بانی پی ٹی آئی عمران خان نے شادی کی ہے انہیں عدت کے بارے میں علم نہیں۔

وکیل زاہد آصف کا کہنا تھا کہ تمام تر ذمہ داری بشری بی بی کے کندھوں پر منتقل کی جارہی ہے، شوہر عورت کی قربانیوں کو سائیڈ پر رکھ کر کہہ رہا ہے میں نے کچھ نہیں کیا، خاتون مشکل وقت میں خاوند کے ساتھ کھڑی رہی۔

وکیل زاہد آصف نے دلائل جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ایک لیڈر سے ایسی توقع نہیں کی جاسکتی، بیوی بنی گالہ کی آسائش چھوڑ کر اڈیالہ جیل تک چلی گئی، ایسے ہو ہی نہیں سکتا اگر شادی ہوئی تو دونوں ذمہ دار ہیں۔

وکیل زاہد آصف نے کہا کہ بشری بی بی کی جانب سے کہا گیا کہ اپریل 2017 میں زبانی طلاق دی گئی، اگر خاتون کہتی ہے کہ اسے زبانی طلاق دی گئی تو کیا اس کی زبانی بات پر اعتبار کیا جائے گا، زبانی طلاق کی کوئی حیثیت نہیں ہے اس حوالے سے عدالتی فیصلے موجود ہیں، قانون کہتا ہے دستاویزی ثبوت زبانی بات پر حاوی ہو گا۔

وکیل زاہد آصف نے کہا کہ بشری بی بی نے کس بیان میں کہا شادی عدت کے دوران نہیں ہوئی، مفتی سعید نے بشری بی بی کی بہن کے کہنے پر کہ شادی کے لوازمات پورے ہیں نکاح پڑھوایا، کسی جگہ بشری بی بی نے مفتی سعید کو نہیں کہا کہ انکی عدت پوری ہے ، جس بہن نے عدت پوری ہونے کا کہا اسے پھر بطور گواہ لایا جاتا۔

جج افضل مجوکا نے کہا کہ پراسیکوشن کی ڈیوٹی ہے کہ وہ ثابت کرے کہ عدت پوری نہیں، 16وکیل زاہد آصف نے کہا کہ جنوری 2024 کو بشری بی بی پر فرد جرم عائد ہوئی اور صحت جرم سے انکار کیا، بشری بی بی نے نہیں کہا کہ انھوں نے عدت مکمل ہونے پر شادی کی، بانی پی ٹی آئی کا بیان پر فرد جرم عائد ہوئی، جس کے جواب میں بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ یہ جھوٹا کیس ہے اور لندن پلان کا حصہ ہے اور اس کا مقصد پارٹی کا ختم کرنا اور سافٹ ویئر اپ ڈیٹ کرنا ہے۔

وکیل زاہد آصف نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی نے بھی کہیں نہیں کہا کہ انھوں نے عدت مکمل ہونے پر شادی کی، اگر ٹرائل کورٹ میں کوئی غیر قانونی کام ہوا تو کیا کیس ریمانڈ بیک کروانا چاہتے ہیں۔

وکیل عثمان گل نے کہا کہ ہم کیس ریمانڈ بیک نہیں بلکہ ہائی کورٹ کی ٹائم لائن کے مطابق اپیلوں پر فیصلہ چاہتے ہیں۔

وکیل زاہد آصف نے کہا کہ بشری بی بی کا کوئی بیان دکھا دیں جس میں کہا گیا ہو کہ عدت مکمل کرنے پر شادی کی، پوری کیس فائل میں ایسا بیان موجود نہیں، بطور گواہ عدالت میں پیش ہونے سے بھی دونوں ملزمان نے انکار کیا، بانی پی ٹی آئی اور بشری بی بی اس کیس میں بہترین گواہ تھے۔

وکیل زاہد آصف نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی اور بشری بی بی حلف پر اپنے حق میں گواہی دیتے، طلاق ڈیڈ پر ٹمپرنگ کا کہا گیا مگر شواہد پیش نہیں کیے گئے، ہم مطمئن ہیں کہ طلاق ڈیڈ پر کوئی ٹمپرنگ نہیں، اپریل میں کوئی طلاق نہیں دی نومبر 2017 خاور مانیکا نے تحریری طلاق دی۔

انہوں نے مؤقف اپنایا کہ قرآن پاک میں ہے دوران عدت رجوع کرنے کا حق اور عدت مکمل ہونے پر دوسری شادی کی اجازت دی گئی، عدت کے دوران دوسری شادی کا فیصلہ بھی نہیں کیا جا سکتا، اسلام کہتا ہے کہ اکٹھی تین طلاقوں کو ایک تصور کیا جائے گا، خاور مانیکا نے کہیں نہیں کہا کہ وہ فقہ حنفی سے ہیں وہ بطور مسلمان عدالت میں پیش ہوئے ہیں۔

وکیل زاہد آصف کا کہنا تھا کہ جب تک عدت مکمل نہیں ہوتی خاتون طلاق دینے والے کی بیوی ہی تصور گی۔

بعد ازاں محفوظ فیصلہ جاری کرتے ہوئے عدالت نے دورانِ عدت نکاح کیس میں سزا کیخلاف مرکزی اپیلیں منظور کرتے ہوئے عمران خان اور ان کی اہلیہ کی7،7سال قیدکی سزائیں کالعدم قرار دے دیں۔

عدالت نے بانی پی ٹی آئی اور سابق خاتون اول کو بری کرنے کا حکم دیا ور کہا کہ کسی دوسرے مقدمے میں مطلوب نہیں تو فوری رہا کیا جائے۔

جج افضل مجوکا نے بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کی رہائی کی روبکار جاری کردیے، عدالت نے کہا کہ میڈیکل بورڈ اور علماء کی رائے سے متعلق دونوں درخواستیں مسترد کی جاتی ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll