جی این این سوشل

کھیل

آل پاکستان سپورٹس گالا 20 دسمبر سے اسلام آباد میں شروع ہو گا

گرلز کھلاڑیوں کے مقابلے 20 سے 23 دسمبر تک کھیلے جائیں گے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آل پاکستان سپورٹس گالا 20 دسمبر سے اسلام آباد میں شروع ہو گا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

اسلام آباد: آل پاکستان سپورٹس گالا 20 دسمبر سے پاکستان سپورٹس کمپلیکس، اسلام آباد میں شروع ہو گا۔ آرگنائزنگ سیکرٹری محمد بخش مری نے بتایا کہ سپورٹس گالا کی تیاریاں زور و شور سے جاری ہیں۔

سپورٹس گالا میں ملک بھر سے گرلز اور بوائز ٹیموں کے الگ، الگ بورڈز کی ٹیمیں مختلف کھیلوں کے مقابلوں میں حصہ لیں گی۔ گرلز کھلاڑیوں کے مقابلے 20 سے 23 دسمبر تک کھیلے جائیں گے جبکہ بوائز کھلاڑیوں کے مقابلے 25 سے 28 دسمبر تک کھیلے جائیں گے۔

گرلز کھلاڑیوں کے مقابلوں میں اتھلیٹکس، ٹیبل ٹینس، بیڈمنٹن اور ہاکی کے مقابلے جبکہ اتھلیٹکس، ٹیبل ٹینس، والی بال اور کبڈی کے مقابلے شامل ہیں۔ مقابلوں کے اختتام پر کامیابی حاصل کرنے والے کھلاڑیوں میں انعامات تقسیم کئے جائیں گے۔

تجارت

سوتی دھاگہ کی برآمدات میں 49 فیصد اضافہ

گزشتہ مالی سال برآمدات سے ملک کو 449 ملین ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہوا تھا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سوتی دھاگہ کی برآمدات میں 49 فیصد اضافہ

اسلام آباد: سوتی دھاگہ کی برآمدات میں جاری مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں سالانہ بنیادوں پر 49 فیصد کی نمو ریکارڈ کی گئی ہے۔

پاکستان بیورو برائے شماریات کے اعدادوشمار کے مطابق مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں سوتی دھاگہ کی برآمدات سے ملک کو 670 ملین ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہوا جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 49 فیصد زیادہ ہے۔

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں سوتی دھاگہ کی برآمدات سے ملک کو 449 ملین ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہوا تھا۔ جنوری میں سوتی دھاگہ کی برآمدات کا حجم 81 ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا جو گزشتہ سال جنوری کے مقابلے میں 20 فیصد زیادہ ہے۔ گزشتہ سال جنوری میں سوتی دھاگہ کی برآمدات سے ملک کو 68 ملین ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہوا تھا۔

دسمبر کے مقابلے میں جنوری میں سوتی دھاگہ کی برآمدات میں ماہانہ بنیادوں پر 15 فیصد کی کمی ہوئی ہے۔ دسمبر میں سوتی دھاگہ کی برآمدات سے ملک کو 95 ملین ڈالر حاصل ہوئے جو جنوری میں کم ہو کر 81 ملین ڈالر ہوگئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

طلبہ ملک کا مستقبل اور قوم کا سرمایہ ہیں، نواز شریف

آج مجھے اس پر وقار تقریب میں شریک ہو کر دلی خوشی محسوس ہو رہی ہے، سابق وزیراعظم

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

طلبہ ملک کا مستقبل اور قوم کا سرمایہ ہیں، نواز شریف

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن)کے قائد محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ طلبہ ملک کا مستقبل اور قوم کا سرمایہ ہیں، ناکامی کا خوف رکھنے والا شخص کبھی کامیاب نہیں ہو سکتا، نوجوانوں نے اتحاد ، اصلاح ،فلاح اور معاشرے میں بہتری کیلئے دل لگا کر محنت کرنی ہے اور خود کو انتشار ،تقسیم ،گالی گلوچ اور بد تہذ یبی سے دور رکھنا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کے روز شریف میڈیکل ٹرسٹ کے سالانہ کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر نامزد وزیر اعظم محمد شہباز شریف، نامزد وزیر اعلی پنجاب مریم نواز شریف، گورنر پنجاب ووائس چانسلر یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز بلیغ الرحمن ، اسحاق ڈار، مریم اورنگزیب اور ادارے کے منتظمین سمیت اساتذہ ، گریجوایشن کرنے والے طلبا و طالبا ت اور ان کے والدین بھی موجود تھے۔

محمد نواز شریف نے کہا کہ آج مجھے اس پر وقار تقریب میں شریک ہو کر دلی خوشی محسوس ہو رہی ہے ،آپ کی برسوں کی والہانہ محنت نے آج آپ کو کامیابی کا دن دکھایا ہے جس پر میں آپ کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتا ہوں، میں ان اساتذہ کرام کو بھی مبارکباد دینا چاہتا ہوں جنہوں نے ہمدردانہ شفقت اور محنت سے آپ کو اس مقام پر پہنچایا ، طلبہ کے والدین ان کی اس کامیابی میں برابر کے شریک ہیں،والدین نے اپنی ضروریات اور خواہشات کو پس پشت ڈال کر آپ کی تعلیم مکمل کرائی،یہ ان کی آپ کیلئے بہت بڑی خدمت ہے ۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

دنیا کی نصف سے زیادہ آبادی کو خسرہ کا شدیدیاانتہائی شدید خطرہ ہے،عالمی ادارہ صحت

خسرہ کے بارے میں ہم انتہائی فکر مند ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

دنیا کی نصف سے زیادہ آبادی کو خسرہ کا شدیدیاانتہائی شدید خطرہ ہے،عالمی ادارہ صحت

جنیوا: عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)نے دنیا بھر میں خسرہ کے پھیلاؤ بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ سال دنیا بھر میں اس بیماری کے 30 لاکھ 6,000 سے زیادہ کیس رپورٹ ہوئے جو 2022 کے مقابلے میں 79 فیصد زیادہ تھے۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق عالمی ادارہ صحت میں خسرہ اور روبیلا کے بارے میں ٹیکنیکل ایڈوائزر نتاشا کروکرافٹ نے کہا ہے کہ خسرہ کے بارے میں ہم انتہائی فکر مند ہیں۔ قاہرہ سے ویڈیو لنک کے ذریعے انہوں نے جنیوا میں صحافیوں کو بتایا کہ 2022 میں خسرہ کے کیسز میں اتنے زیادہ اضافے کو سامنے رکھتےہوئے ہم اندازہ لگا سکتے ہیں کہ یہ سال بہت زیادہ مشکل ہونے والا ہے۔

انہوں نے انتباہ کیا کہ اس وقت دنیا بھر کے نصف سے زیادہ ملکوں کے بارے میں خیال ہے کہ اس سال کے آخر تک ان میں خسرہ کی وبا کے پھوٹنے کا بہت زیادہ خطرہ ہوگا اور ایک اندازے کے مطابق لگ بھگ 14 کروڑ بیس لاکھ بچوں کو بیماری کا خطرہ لاحق ہوگا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کسی بھی علاقے میں اس وبا کو روکنے کے لیے کم از کم 95 فیصد بچوں کو اس بیماری سے بچاؤ کے لیے مکمل حفاظتی ٹیکے لگانے کی ضرورت ہوتی ہے ، لیکن عالمی سطح پر ویکسینیشن کی شرح 83 فیصد تک کم ہو گئی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll