جی این این سوشل

ٹیکنالوجی

آن لائن لرننگ ڈرائیونگ لائسنس ایپ کا باضابطہ آغاز

شہری اب لرننگ ڈرائیونگ لائسنس گھر بیٹھے بنواسکیں گے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آن لائن لرننگ ڈرائیونگ لائسنس  ایپ کا باضابطہ آغاز
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

لاہور: پنجاب خاص طور پر لاہور میں ڈرائیونگ لائسنس بنوانے کے رش میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور اس میں آسانی کے لیے ایک معاون ایپ اور آن لائن لرنر لائسنس بنوانے کی سہولت فراہم کی جارہی ہے۔

لاہور ٹریفک پولیس کے ترجمان رانا عارف نے انڈپینڈنٹ اردو سے بات کرتے ہوئے بتایا  ’ہر روز پنجاب بھر میں کم سے کم  10 ہزار ریگولر ڈرائیونگ لائسنس کا اجرا کیا جا رہا ہے باقی اس کے علاوہ ہیں۔‘ 

یہی وجہ ہے کہ پولیس خدمت مراکز میں نہ صرف لائسنس بنوانے والوں کا رش لگ چکا ہے بلکہ اس قدر کام میں اضافے کے سبب خدمت مراکز کے کمپیوٹر سسٹم ڈاؤن ہونے کی شکایات بھی سامنے آرہی ہیں جس کی وجہ سے عوام کو کئی کئی گھنٹوں اپنی باری کا انتظار کرنا پڑتا ہے۔ 

اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے ہفتے کو یہ ہدایات جاری کیں تھیں کہ جنہیں لائسنس کا ٹوکن مل چکا ہے ان کا تین روز تک چالان نہ کیا جائے۔ 

پاکستان

منیٰ میں پا کستانی حج عازمین کو شدید مشکلات کا سامنا

یہ شکایات بھی موصول ہوئیں کہ منیٰ میں پاکستانی حج رضا کار بھی موجود نہیں، جس کی وجہ سے پاکستان عازمین حج کو شدید مشکلات کا سامنا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

منیٰ میں پا کستانی حج عازمین کو شدید مشکلات کا سامنا

پاکستان سمیت دنیا بھر سے لاکھوں عازمین حج کی سعادت حاصل کرنے کیلئے مناسک حج میں مصروف ہیں تاہم غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق منیٰ میں پاکستانی عازمین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

یہ اطلاعات بھی ہیں کہ خیمے نہ ملنے کی وجہ سے پاکستانیوں نے پورا دن کڑی دھوم میں گزارا، عازمین بسوں اور خیموں کے باہر بیٹھے رہے جب کہ عازمین حج کو کھانا بھی فراہم نہیں کیا گیا۔

منیٰ میں پاکستانی حکام کی جانب سے بدانتظامی اور مشکلات کی اطلاعات سامنے آئی ہیں، پاکستانی عازمین کو منیٰ میں مکتب فراہم نہیں کیا گیا، پاکستان کےلئے مختص مکتب میں دیگر ممالک کے عازمین موجود ہیں۔

یہ شکایات بھی موصول ہوئیں کہ منیٰ میں پاکستانی حج رضا کار بھی موجود نہیں، جس کی وجہ سے پاکستان عازمین حج کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

غزہ جنگ بند ی میں سب سے بڑی رکاوٹ حماس ہے ، امریکی صدر

جو بائیڈن کا کہنا تھا کہ حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ بندی معاہدہ جلد ہونے کا امکان نہیں ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غزہ جنگ بند  ی میں سب سے بڑی رکاوٹ حماس ہے ،  امریکی صدر

امریکا کے صدر جوبائیڈن نے حماس کو غزہ جنگ بندی معاہدے میں واحد رکاوٹ قرار دے دیا۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے میڈیا سے گفتگو میں غزہ جنگ بندی معاہدے سے متعلق منصوبے پر حماس سے کوششیں تیز کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ جنگ بندی منصوبے میں سب سے بڑی رکاوٹ حماس ہے۔

جو بائیڈن کا کہنا تھا کہ حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ بندی معاہدہ جلد ہونے کا امکان نہیں ہے۔

امریکی صدر نے کہا کہ غزہ میں جنگ بندی کے لیے منصوبہ اور تجاویز پیش کی تھیں جنہیں سلامتی کونسل، جی سیون اور اسرائیل نے منظور کرلیا تاہم حماس نے دستخط کرنے سے انکار کردیا۔

انہوں نے کہا کہ غزہ میں جنگ بندی پر ہمت نہیں ہاری ہے تاہم یہ بہت مشکل ہوگا۔ حماس جنگ بندی منصوبے پر عمل درآمد اور غزہ میں قیدیوں کی رہائی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

علاقائی

ڈاکٹر محمد یوسف کی تصنیف ریسرچ اور تہذیب کے لیے اہم سنگ میل ہے،صوبائی وزیر تعلیم

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم رانا سکندر حیات نے کہا کہ اس کتاب کی صورت میں ڈاکٹر یوسف بشیر نے گلوبل ساؤتھ کی ثقافتی تاریخ کو محفوظ کردیا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ڈاکٹر محمد یوسف کی تصنیف ریسرچ  اور تہذیب کے لیے اہم سنگ میل ہے،صوبائی وزیر تعلیم


لاہور : ڈاکٹر محمد یوسف کی تصنیف ریسرچ ،ثقافت اور تہذیب کے لیے اہم سنگ میل ہے ۔ 
ڈاکٹر شاہد منیر نے کہا کہا کہ یہ تحقیقی کام قابل ستائش ہے اور عالمی جنوبی خطے کے اسکالرز کے لیے مشعل راہ ہے ۔
معروف محقق ،استاد اور میڈیا سکالر پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف بشیر کی تدوین کردہ کتاب ،،دی کنسٹرکشن آف کلچر اینڈ کمیونیکیشن ان گلوبل ساؤتھ کی تعارفی تقریب قاسم علی شاہ فاؤنڈیشن میں منعقد ہوئی ۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم رانا سکندر حیات نے کہا کہ اس کتاب کی صورت میں ڈاکٹر یوسف بشیر نے گلوبل ساؤتھ کی ثقافتی تاریخ کو محفوظ کردیا ہے ۔اس طرح کے تحقیقی کام کی ہرصورت میں بھرپور حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے ۔ پروفیسر ڈاکٹر شاہد منیر چئیر پرسن پنجاب ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے اپنے خطاب میں ڈاکٹر محمد یوسف کے تخلیقی کام کو سراہا اور اس کتاب کو عالمی جنوبی خطے کے اساتذہ اور طلبہ کے لیے اہم دستاویز اور سنگ میل قرار دیا ۔

پروفیسر ڈاکٹر نوشینہ سلیم ڈائریکٹر انسٹیٹیوٹ آف کمیونیکیشن نے اپنے خطاب میں کہا کہ انہیں فخر ہے کہ صاحب کتاب ان کے شاگردوں میں سے ہیں ۔کاشف منظور ڈائریکٹر جنرل پبلک لائبریز نے کہا کہ پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف بشیر کی کاوش لائق تحسین اور اس کے زریعے بہت سے مسائل کا حل مل سکتا ہے ۔پروفیسر ڈاکٹر زاہد بلال نے کہا کہ آج ہمیں اپنے کلچر اور اقدار سے جڑنے کی ضرورت ہے ۔

کتاب کے ایڈیٹر ڈاکٹر محمد یوسف نے کہا   کی ہم نے اس کتاب میں مغرب کے برعکس دوسرے ممالک میں تخلق ہونے والے علم اور اسکی تدوین کا خلاصہ بیان کرنے کی کوشش کی ہے۔ کا مرزا محمد یسین بیگ نے کہا کہ ایسی کتب سے مقامی منظر نامے کو سمجھنے میں مدد ملے گی ۔دیگر مقررین میں ڈاکٹر مبینہ افتخار  نے اپنی پی ایچ ڈی ڈگری کے سفر کا تذکرہ  کرتے ہرے بتایا کہ ڈاکٹر محمد یوسف نے انکے زندگی کو تبدیل کر کے رکھ دیا ہے۔ ڈاکٹر مرتضی عاشق نے کہا یہ کتاب پاکستان میں اساتذہ اور طلبا کے لیے ریفریس کا کام کرے گئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll