جی این این سوشل

علاقائی

لاہور: فیکٹری میں بوائلرز پھٹنے سے دھماکہ 

لاہور: دھماکوں کی شدت سے فیکٹری کی دیوار گر گئی اور قریبی گھڑوں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

لاہور: فیکٹری میں بوائلرز پھٹنے سے دھماکہ 
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق اعوان ٹاون کے قریب جوس بنانے والے فیکٹری میں بوائلر پھٹنے سے خوفناک دھماکوں کی فوٹیج منظر عام پر آگئی ، پہلا دھماکہ صبح 7 بج کر 20 منٹ پر  جبکہ دوسرا  اور شدت میں بڑا دھماکہ 7 بج کر 30 منٹ پر ہواجس کے بعد اگ کے شعلے بڑھک اٹھے۔ آگ کے باعث فیکٹری میں موجود مشینری اوردیگرسامان جل گیا، دھماکوں کی شدت سے فیکٹری کی دیوار گر گئی اور قریبی گھڑوں کو بھی نقصان پہنچا ۔

ریسکیو ذرائع کے مطابق بوائلر دھماکے کی آواز سے سڑک پر موجودشہری یاسین گھبرا کر ٹریکٹر ٹرالی سے ٹکرا کر ہلاک  ہوگیا۔

ریسکیو ذرائع کے مطابق آتشزدگی سے فیکٹری کا ملازم شبیر احمد جھلس گیا، جسے طبی امداد کے لئے ہسپتال منتقل  کیا گیا،  دھماکوں سےقریبی مکانوں کو بھی نقصان  پہنچا ، متاثرین کا کہنا تھا دھماکے سےپورے علاقے میں خوف ہراس پھیل گیا۔وزیر اعلی عثمان بزدار نے فیکٹری میں واقعہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا  ہے۔

علی رضا گزشتہ ڈیڑھ سال سے ویب جرنلسٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے پنجاب یونیورسٹی سے گریجویشن کیا ہے۔ علی رضا اس سے قبل معروف نیوز آرگنائزیشنز کے لیے کام کر چکے ہیں اور اب جی این این کے ساتھ بطور سینئر کنٹینٹ رائٹر وابستہ ہیں۔

پاکستان

وطن کے دفاع میں جان دینے والے میجر شبیر شریف شہید کا 50 واں یوم شہادت 

راولپنڈی :  مادر وطن کا دفاع کرنے والے میجر محمد شبیر شریف شہید نشان حیدر کا آج 50 واں یوم شہادت ہے۔ پاک فوج نے میجر شبیر شریف شہید کو ان کی شہادت کی برسی کے موقع پر خراج عقیدت پیش کیا ہے۔

پر شائع ہوا

Asma Rafi

کی طرف سے

وطن کے دفاع میں جان دینے والے میجر شبیر شریف شہید کا 50 واں یوم شہادت 

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے میجرشبیرشریف شہید کی بہادری اور شہادت کی عظیم قربانی پر خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ڈی جی آئی ایس پی آر نے اپنے پیغام میں کہا  کہ میجرشبیرشریف شہیدکویوم شہادت پرخراج عقیدت پیش کرتےہیں ، میجرشبیرشریف شہید پاک فوج کےانتہائی بہادرافسرتھے، میجرشبیرشریف شہید نے1965کی جنگ میں ستارہ جرأت حاصل کیا، انہوں نے1971کی جنگ میں نشان حیدرحاصل کیا۔ 

ڈی جی آئی ایس پی آر کاکہنا تھا کہ میجرشبیرشریف کوہیڈسلیمانکی سیکٹرمیں دلیرانہ ،ہیروکا کرداراداکرنےپرنشان حیدرملا، مادروطن کی حفاظت سےزیادہ کوئی بھی فریضہ مقدس نہیں اور میجرشبیرشریف شہیدکی عظیم قربانی اس کی یاددلاتی ہے۔ 

 

میجر شبیر شریف شہید نشان حیدر 28اپریل 1943 کو ضلع گجرات کے قصبے کنجاہ میں  میں پیدا ہوئے اور لاہور کے سینٹ انتھونی اسکول اور گورنمنٹ کالج سے اپنی تعلیم مکمل کی۔ میجر شبیر شریف نے 1965ء کے پاک بھارت معرکے میں ٹروٹی کے محاذ پر دوران گشت بھارتی آرٹلری بیٹری کی گن پوزیشنوں پر حملہ کرکے اس پر کنٹرول حاصل کیا اور چار فوجیوں کو جنگی قیدی بناکر دو گنز تباہ کرکے اور ایک قبضے میں لے لی ۔ ان کی اس کامیابی سے 10 انفینٹری بریگیڈ، 6 ایف ایف، 13 لانسرز اور 14 پنجاب ریجمنٹ کو نمایاں پیش رفت کا موقع ملا اور بھارتی فوجی ٹروٹی اور جوڑیاں سے بوکھلا کر میدان چھوڑ کر بھاگنے پر مجبور ہوگئے۔

اس بہادری پر انہیں ستارہ جرأت سے نوازا گیا، انہیں دسمبر 1971ء میں بطور کمپنی کمانڈر 6 ایف ایف یہ آرڈر ملا کہ وہ اپنے جوانوں پر مشتمل کمپنی کے ہمراہ سلیمانکی ہیڈ ورکس کے قریب سبونہ بند کے اہم مقام کا کنٹرول حاصل کریں ، اس مقام پر دشمن کی آسام ریجمنٹ کی کمپنی سے زائد نفری پر مشتمل ٹیم تعینات تھی ، جسے ٹینکوں کے اسکواڈرن کی سپورٹ بھی حاصل تھی ۔

میجر شبیر شریف اگلے 3 دن اور راتیں منظم کوشش اور اعلیٰ مہارت سے دشمن کے لیے چھلاوا بنے رہے۔ انہوں نے  دشمن کے 43 فوجی جہنم واصل کرتے ہوئے 4 ٹینک تباہ کرکے حریف پر کاری ضرب لگائی۔ میجر شبیر شریف اور ان کے ساتھیوں نے دشمن کی 2 بٹالین کو سخت مزاحمت دی، اس مقام پر دوران جنگ بھارتی میجر نارائن سنگھ نے میجر شبیر شریف کو للکارا جس کا جواب میجر شبیر شریف نے دشمن کے سامنے کھڑے ہوکر دیا ۔ میجر نارائن سنگھ کے پھینکے گرنیڈ سے میجر شبیر شریف کی شرٹ آگ لگنے سے جل گئی ، دونوں کے درمیان دو بدو مقابلہ ہوا، جس میں میجر شبیر شریف نے اپنے دشمن کو زمین پر گرا کر اپنا گھٹنا اس کے سینے پر رکھ کر قابو کیا اور پھر مشین گن کا پورا برسٹ اس پر خالی کردیا۔

شبیر شریف نے 4 سے 6 دسمبر تک مسلسل دشمن کے کئی حملے ناکام بنائے، میجر شبیر شریف نے 6 دسمبر کو دشمن کے فضائی تعاون اور ٹینکوں سے کیے گئے بڑے حملےکو ناکام بناتے ہوئے اپنے سینے پر وار سہا اور وطن کی راہ میں جام شہادت نوش کیا

ان کی ہمت اور بہادری کے اعتراف میں انھیں پاکستان کے اعلیٰ ترین فوجی اعزاز نشان حیدر سے نواز گیا ۔ انھیں یہ اعزاز حاصل ہے کہ وہ نشان حیدر اور ستارہ جرات حاصل کرنے والی واحد شخصیت ہیں ۔  

میجر شبیر شریف کے چھوٹے بھائی جنرل راحیل شریف پاک فوج کے سپہ سالار کے طور پر فرائض سر انجام دے چکے ہیں ۔ جبکہ ان کے قریبی عزیز میجر عزیز بھٹی نے 1965ء کی جنگ میں دلیری کی بے مثال داستان رقم کرکے نشان حیدر حاصل کیا تھا۔

میجر شبیر شریف کے یوم شہادت کے موقع پر میں ملک بھر میں تقریبات منقعد کی جائیں گی ، شہید کی قبر پر فاتحہ خوانی بھی کی جائے گی ۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

کوئی ان ہاؤس تبدیلی نہیں ہورہی: پرویز خٹک

پشاور: وزیردفاع پرویز خٹک کا کہنا ہے کہ کوئی ان ہاؤس تبدیلی نہیں ہو رہی، میں وزیراعظم عمران خان کے ساتھ کھڑا ہوں اور کوئی جرات نہیں کرسکتا کہ اسمبلی میں ہماری حکومت کو گرائے۔

پر شائع ہوا

Umar Nawaz

کی طرف سے

کوئی ان ہاؤس تبدیلی نہیں ہورہی: پرویز خٹک

تفصیلات کے مطابق وزیر دفاع پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ تنقید کے باوجود بی آر ٹی بس سروس کا منصوبہ مکمل کیا ہے،پشاور سے ڈیرہ اسماعیل خان موٹروے بنائی جارہی ہے۔

پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں ،تنقید کے ساتھ اصلاح کی بھی ضرورت ہے ،ایکسپورٹ 3 گناہ بڑھ رہی ہے ،مہنگائی ایک عالمی مسئلہ ہے جبکہ تیل کی طلب و رسد میں فرق ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ کسی کے پاس تنقید کے سوا حل ہو وہ بتائیں ،سابقہ حکمرانوں نے اربوں روپے کے قرضے لئے ہیں اورحکومت کی توجہ قرضوں کی واپسی پر بھی ہے۔

وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ سپلائی اور ڈیمانڈ برابر ہو جائے تو مہنگائی کی صورتحال بہتر ہوگی، کیا آئی ایم ایف کے پاس جانا ہمارا قصور ہے؟، سابقہ حکمرانوں نے پاکستان کو قرض دار بنایا ہے۔ 

ان کا مزید کہنا تھا کہ اپوزیشن کون ہوتی ہے مجھے نوشہرہ آنے سے روکنے والی، میں نے نہ کوئی جلسہ کیا ہے  نہ انتخابی مہم چلائی، اپوزیشن سے کہتا ہوں مقابلہ کریں۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

متحدہ عرب امارات کے اعلیٰ سکیورٹی عہدیدار آج ایران پہنچیں گئے

رواں برس اپریل میں سعودی عرب نے بھی ایران کے ساتھ  بات چیت کا آغاز کیا تھا۔

پر شائع ہوا

Muhammad Akram

کی طرف سے

متحدہ عرب امارات کے اعلیٰ سکیورٹی عہدیدار آج ایران پہنچیں گئے

متحدہ عرب امارات کے قومی سلامتی امور کے اعلیٰ سطحی مشیر شیخ طحنون بن زائد النہیان آج تہران کے دورے پر ایران پہنچیں گے۔

رپورٹ کے مطابق ایرانی سکیورٹی حکام کے ساتھ ملاقات کے دوران اعلیٰ سکیورٹی عہدیدار  دوطرفہ تعلقات کے فروغ پر بات چیت کریں گے۔ متحدہ عرب امارات کے کسی عہدیدار کا یہ 2016 کے بعد سے ایران کے ساتھ یہ پہلا دورہ ہوگا۔

روئٹرز کے مطابق شام کے وزیر خارجہ فیصل مقداد بھی دو روزہ دورے کے لیے ایران پہنچ چکے ہیں۔ ایرانی میڈیا کے مطابق شیخ طحنون کی ایرانی سپریم نیشنل سکیورٹی کونسل کے سیکریٹری جنرل علی شامخانی اور دیگر اعلیٰ سطحی اہلکاروں سے ملاقات متوقع ہے۔ شامخانی اور شیخ طحنون دوطرفہ تعلقات کو وسعت دینے پر تبادلہ خیال کریں گے۔

متحدہ عرب امارات کے صدر کے سفارتی مشیر کا گذشتہ منگل کو کہنا تھا کہ  تہران کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے کے لیے ایک وفد جلد ایران بھیجا جائے گا۔
یاد رہے رواں برس اپریل میں سعودی عرب نے بھی ایران کے ساتھ  بات چیت کا آغاز کیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll