جی این این سوشل

علاقائی

پنجاب میں نیا آئینی بحران جنم لینے والا ہے:شاہ محمود قریشی

ملتان:سابق وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہے پنجاب میں نیا آئینی بحران جنم لینے والا ہے،صوبائی انتظامیہ جانبداری کا مظاہرہ نہ کرے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پنجاب میں نیا آئینی بحران جنم لینے والا ہے:شاہ محمود قریشی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے نائب چیئرمین مخدوم شاہ محمود قریشی نے پریس کانفرس میں کہا کہ پنجاب کی انتظامیہ قانون کے دائرے میں رہ کر اپنی ڈیوٹی سر انجام دے، پنجاب میں نیا آئینی بحران جنم لینے والا ہے، صوبائی انتظامیہ جانبداری کا مظاہرہ کرنے سے گریز کرے۔

سابق وزیر خارجہ نے کہا کہ حمزہ شہباز اب آئینی وزیراعلیٰ نہیں رہے، ان کا وزارت اعلیٰ کا الیکشن کالعدم قرار دیا جا سکتا ہے اور لاہور ہائی کورٹ دوبارہ الیکشن کا حکم دے سکتا ہے، اتحادی جماعتیں ساتھ چھوڑ دیں تو شہباز حکومت بھی خطرے میں پڑ جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت گرانے کے لیے غیر فطری اتحاد بنایا گیا، 11 جماعتی اتحاد میں اب دراڑیں واضح ہو چکی ہیں، اتحادی جماعتوں نے بلدیاتی الیکشن کو مسترد کر دیا ہے، سندھ میں بلدیاتی الیکشن کے نتائج کو جے یو آئی ف نے مسترد کر دیے، ایم کیو ایم کو بھی شکوے ہیں، ان کا کہنا ہے پیپلز پارٹی نے اپنے وعدے پورے نہیں کیے، اسعد محمود نے سود کے معاملے پر شہباز شریف کو احتجاج ریکارڈ کروایا ہے۔

پاکستان

ہمیں جناح اور بھٹو کا پاکستان بنانا ہے، شیری رحمان

وفاقی وزیر ماحولیاتی تبدیلی اور رہنما پاکستان پیپلز پارٹی شیری رحمان  کا کہنا ہے کہ ہمیں جناح اور بھٹو کا پاکستان بنانا ہے، جس میں ہر شہری برابر ہو، جس میں تقسیم، نفرت اور تفریق کی کوئی جگا نہ ہو۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ہمیں جناح اور بھٹو کا پاکستان بنانا ہے، شیری رحمان

 

قائد اعظم محمد علی جناح نے 11 اگست 1947 کے دن پاکستان کی پہلی دستور ساز اسمبلی سے تاریخی خطاب کیا تھا۔ جناح نے اس تقریر میں واضع کر دیا تھا وہ کس طرح کا پاکستان بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے ایک ایسے پاکستان کی بنیاد رکھی تھی جس میں اکثریت اور اقلیت کو برابر کے حقوق حاصل ہوں۔

جناح نے قانون ساز اسیمبلی کے خطاب میں واضع کر دیا تھا کہ وہ اکثریت اور اقلیت میں تفریق نہیں چاہتے۔ انہوں نے مساوات، ہم آہنگی اور ترقی پسند سوچ پر زور دیا، اس لئے اقلیتوں کا تحفظ کرنا اور ان کے حقوق اور آزادیوں کو یقینی بنانا ریاست اور ہر شہری کا آئینی اور قومی فرض بنتا ہے۔

انہوں نے مزید لکھا کہ جناح کے ویژن کے مطابق شہید ذوالفقار علی بھٹو نے 1973 میں اقلیتوں کے حقوق اور آزادیوں کو آئین کا حصہ بنایا۔ شہید بھٹو کا آئین اقلیتوں کو برابر کا شہری تصور کرتا ہے۔ شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے 1988 میں اقلیتوں کے حقوق پر خصوصی توجہ دی اور ‘اقلیت ہمارہ اعتماد’ کا نعرہ لگایا۔

2009 میں آصف علی زرداری نے 11 اگست کو اقلیتوں کا قومی دن منانے کا اعلان کیا۔ یہ دن منانے کا مقصد جناح کی 11 اگست 1947 کے خطاب کو اجاگر کرنا اور اس پر عمل کرنا ہے۔ ہمیں جناح اور بھٹو کا پاکستان بنانا ہے، جس میں ہر شہری برابر ہو۔ جس میں تقسیم، نفرت اور تفریق کی کوئی جگا نہ ہو۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

مشاورت کے ساتھ ہی ٹیم کا اعلان ہوا ، اب تبدیلی کا وقت نہیں : بابر اعظم

لاہور : قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے کہا ہے کہ پاکستان کے لیے جو بیسٹ تھا وہی ٹیم کا اعلان ہوا، اتنا وقت نہیں ہے کہ اب ٹیم میں تبدیلی ہو۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

مشاورت کے ساتھ ہی ٹیم کا اعلان ہوا ، اب تبدیلی کا وقت نہیں : بابر اعظم

تفصیلات کے مطابق نیدر لینڈز کے ساتھ ون ڈے سریز کے لیے روانگی سے قبل لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کپتان بابراعظم نے کہا کہ ون ڈے میچز کافی دیر بعد ہو رہے ہیں ، ینگ اور تجربہ کار کھلڑیوں  پر مشتمل سکواڈ کا اعلان کیا گیا ، نئے کھلاڑیوں کو ضرور چانس دیں گے۔

کپتان بابر اعظم نے کہا کہ ہم کسی ٹیم کو ہلکا نہیں لے رہے ، ٹیم کوئی بھی ہو ہم نے پاکستان کے لیے کھیلنا ہے ۔ ایشیا کپ کیلیے شاہین فٹ ہوجائے ، ہمارے فاسٹ باولرز پرفارم کررہے ہیں، حسن علی کو میچ ونر کی وجہ سے سپورٹ کرتا ہوں ، عماد وسیم کا کیرئیر ختم نہیں ہوا،ہمیں جب بھی ضرورت ہوگی ہم اسے کھیلائیں گے ۔ 

بابر اعظم نے کہا کہ دورہ نیدر لینڈ کا کوئی خوف نہیں ہے،وہاں بھی انگلینڈ جیسا موسم ہوگا ، شعیب اور حفیظ کے بغیر ہمیں زیادہ فوکس ہونا ہوگا۔ آصف علی،خوشدل،افتخار پر اعتماد کریں گے ۔ انڈیا کیخلاف کوئی پریشر نہیں،جس طرح ورلڈ میں پرفارم کیا ویسا کرنے کی کوشش کریں گے۔ 

انہوں نے کامن ویلتھ گیمز میں گولڈ میڈل جیتنے والے کھلاڑیوں کو مبارکباد بھی پیش کی۔

واضح رہے کہ  پاکستان اور نیدرلینڈز کے مابین تین ون ڈے انٹرنیشنل میچز کی سیریز 16 اگست سے روٹرڈم میں شروع ہوگی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

اسلام امن اور رواداری کا مذہب ہے ، اقلیتوں کے قومی دن پر وزیراعظم کا پیغام 

اسلام آباد: وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان محمد شہباز شریف کی طرف سے اقلیتوں کے قومی دن کے مو قع پرخصوصی  پیغام    جاری کیا گیا ہے ۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسلام امن اور رواداری کا مذہب ہے ، اقلیتوں کے قومی دن پر وزیراعظم کا پیغام 

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ اسلام امن اور رواداری کا مذہب ہے، دین کے معاملے میں کوئی جبر نہیں ہے ، ہمارے آئین میں مذہب کی آزادی اور ہماری اقلیتوں کی جان ومال اور املاک کی تکریم کو باقاعدہ قانونی شکل دی گئی ہے ، پاکستان بلا کسی ذات پات، رنگ و نسل اور مذہب کی تفریق کے ہم سب کا ہے اور ہم سب نے مل کر ہی اسکی ترقی و خوشحالی کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھنی ہے۔

اقلیتوں کے قومی دن کے مو قع پر وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان محمد شہباز شریف نے اپنے پیغام میں ہر سال پاکستان کی تعمیر و ترقی میں اقلیتوں کے کلیدی کردار کو خراجِ تحسین پیش کرنے ، انکے ہماری عظیم قوم کا لازم حصہ ہونے اور مذہبی اقلیتوں کے احترام کے عزم کا اعادہ کرنے کیلئے 11 اگست کو “قومی اقلیتی دن” کے طور پر منایا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے آئین میں مذہب کی آزادی اور ہماری اقلیتوں کے افراد اور املاک کی تکریم کو باقاعدہ قانونی شکل دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو نہ صرف ان ذمہ داریوں کا بخوبی ادراک ہے بلکہ ان مقاصد کے حصول کے لیے اپنے عزم کی مستقل یاد دہانی کے طور پر حکومت نے 11 اگست کو سرکاری سطح پر شاندار طریقے سے قومی اقلیتی دن کے طور پر منانے فیصلہ کیا ہے ۔ ان اسباب کا خاتمہ اور خامیوں کی اصلاح کرنا جو سماجی و مذہبی استحصال کا باعث بن سکتی ہیں، ہماری حکومت کی پالیسیوں کا بنیادی ستون ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے کہاکہ سماجی و اقتصادی خلیج کو پورا کرنے اور ہماری اقلیتوں کے لیے تعلیمی اداروں اورنمایاں خدمات کے لیے نمائندہ فورمز پر خصوصی کوٹہ مختص کرنے جیسے اقدامات سے قومی سطح پر ہر کسی کو یکساں تعلیم و ترقی کے مواقع کی فراہمی یقینی بنانے کی کوشش کی گئی ہے ۔  اس کے علاوہ اقلیتوں کے معاشی طور پر کمزور طبقات کے حقوق کے یقینی تحفظ اور ترقی کے لیے وقف مالی امداد بھی ان اقدامات کا حصہ ہے۔

شہبازشریف  نے کہا کہ میں اقلیتوں کی بہتری اور ہماری قومی ترقی کی کوششوں اور جدوجہد میں ان کی مکمل شمولیت کے لیے اپنی کوششوں کو جاری رکھنے، وسائل کو بروئے کار لانے اور انہیں مزید وسعت دینے کے حکومت کے عزم کا اعادہ کرتا ہوں۔

وزیر اعظم نے کہاکہ میں اس موقع پر تمام اقلیتی برادریوں کے اپنے بھائیوں سے بھی اپیل کروں گا کہ وہ رواداری اور باہمی اتفاق کی فضا کو فروغ دینے کے لیے اپنا کردار ادا کرتے رہیں کیونکہ ہمارے معاشرے میں یہی واحد راستہ ہے جو بین المذاہب ہم آہنگی اور امن کو فروغ دینے کے ہمارے مشترکہ مقصد کے حصول کا باعث بنے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان بلا کسی ذات پات، رنگ و نسل اور مذہب کی تفریق کے ہم سب کا ہے اور ہم سب نے مل کر ہی اسکی ترقی و خوشحالی کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھنی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll