جی این این سوشل

جرم

بڑی تباہی سے قبل خفیہ اداروں کی کارروائی

سکیورٹی فورسز نے خود کش حملہ آوروں کے بڑے نیٹ ورک کو گرفتار کرلیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

بڑی تباہی سے قبل خفیہ اداروں کی کارروائی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پشاور: انٹیلی جنس ایجنسیوں کی بروقت کارروائی، سکیورٹی فورسز نے خود کش حملہ آوروں کے بڑے نیٹ ورک کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سکیورٹی ایجنسیوں کی کارروائی کے دوران دہشت گرد نیٹ ورک سے افغان موبائل سمز، منشیات اور کرنسی بھی برآمد کی گئی ہیں۔

اطلاعات کے مطابق 19جنوری کو جمرود تختہ بیگ چیک پوسٹ پر خود کش حملہ آور داخل ہوا تھا، اس حملے میں دہشت گرد کی فائرنگ سے 3 پولیس اہلکار شہید ہوئے تھے، فائرنگ کے تبادلے کے دوران حملہ آور نے خود کو بم سے اڑا لیا تھا، حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی تھی۔

بعد ازاں فورسز نے دہشت گردوں کی گولیوں کے خول اور جسم کے اعضا کو فرانزک ٹیسٹ کیلئے لیبارٹری بھیجا تھا۔

ٹی ٹی پی رکن عمر کو تحصیل جمرود کے رہائشی ستانا جان نے سہولت فراہم کی، 23جنوری کو خودکش حملہ آور سے تعلق رکھنے والے دو ملزمان فرمان اللہ اور عبدالقیوم کو پکڑا گیا، 27 جنوری کو 3 مشتبہ افراد کی پہلے سے موجودگی کی اطلاع پر ایک آپریشن کیا گیا، آپریشن میں سہولت کار فضل امین، فضل احمد، محمد عامر اور حماد اللہ کو حراست میں لیا گیا۔

جرم

حکومت کے اسمگلنگ اور ٹیکس چوری کے واقعات کے خلاف قانونی اقدامات

اس ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے نفاذ کی کوشش ریگولیٹری سالمیت ریگولیٹری انٹیگرٹی  کو یقینی بنائے گی جو معاشی ترقی کیلئے حکومت پاکستان کے عزم کی عکاسی کرتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

حکومت کے اسمگلنگ اور ٹیکس  چوری کے واقعات کے خلاف قانونی  اقدامات

خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل  کی اسمگلنگ اور ٹیکس چوری کو روکنے کیلئے اقدامات ، ٖحکومت پاکستان جامع ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے ذریعے سمگلنگ اور ٹیکس چوری کو روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔

اس سسٹم کو خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل کی طرف سے سپورٹ کیا جا رہا ہے تاکہ ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے ذریعے شفافیت قائم کی جائے جس سے مزید سرمایہ کاری کی رغبت بڑھے گی۔

ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم تمباکو، کھاد اور چینی کی سمگلنگ کی روک تھام کیلئے کلی اور سیمنٹ کے شعبے میں جزوی طور پر لاگو کیا جا رہا ہے۔

اس مہم کا مقصد غیر قانونی تجارتی سرگرمیوں کو ناکام بنانا، محصولات میں اضافہ، شفافیت کو بڑھانا اور منصوبہ بندی میں سہولت فراہم کرنا ہے ، اس سسٹم کا نفاذ سروس فراہم کرنے والے اداروں، صنعت اور حکومت پر عمل درآمد کرنے والی ایجنسیوں سمیت تمام سٹیک ہولڈرز کیلئے ایک چیلنج ہے جس سے نمٹنے کیلئے سرتوڑ کوشش کی جا رہی ہے۔ 

اس ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے نفاذ کی کوشش ریگولیٹری سالمیت ریگولیٹری انٹیگرٹی  کو یقینی بنائے گی جو معاشی ترقی کیلئے حکومت پاکستان کے عزم کی عکاسی کرتی ہے۔

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

بشریٰ بی بی کو قید تنہائی میں رکھنا ایک طرح کا تشدد ہے، جسٹس میاں گل حسن

بشریٰ بی بی کے وکلاء سے آئندہ سماعت پر تحریری دلائل طلب

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بشریٰ بی بی کو قید تنہائی میں رکھنا ایک طرح کا تشدد ہے، جسٹس میاں گل حسن

جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ بشریٰ بی بی کو قید تنہائی میں رکھنا ایک طرح کا تشدد ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے بشریٰ بی بی کو بنی گالہ سے اڈیالہ جیل منتقل کرنے کی درخواست پر سماعت کی، بشریٰ بی بی کی جانب سے وکیل عثمان ریاض گل اور خالد یوسف چودھری عدالت پیش ہوئے۔

دوران سماعت اسٹیٹ کونسل نے ایک ہفتے کا وقت مانگا تو عدالت نے استدعا منظور کر لی۔

سٹیٹ کونسل نے کہا کہ سب جیل کے قیام سے متعلق ہم اپنے طور پر دیکھ رہے ہیں کوئی چیز غیر قانونی تو نہیں جس کیلئے کچھ وقت چاہیے۔

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ چیف کمشنر خود کو کیسے صوبائی حکومت قرار دے سکتا ہے، آپ نے انہیں قید تنہائی میں رکھا ہوا ہے، یہ ایک طرح تشدد ہے، اس کیس میں ایک رٹ اور چھ متفرق درخواستیں آئی ہوئی ہیں۔

جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے سٹیٹ کونسل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے پاس کوئی گراؤنڈز نہیں ہے۔

عدالت نے وکیل بشریٰ بی بی سے استفسار کیا کہ آپ ابھی بھی بشریٰ بی بی کو بنی گالہ سے اڈیالہ جیل منتقل کرانا چاہ رہے ہیں، جس پر وکیل عثمان ریاض گل نے جواب دیا کہ جی بالکل ہم بشریٰ بی بی کو اڈیالہ جیل منتقل کرانا چاہتے ہیں۔

عدالت نے بشریٰ بی بی کے وکلاء سے آئندہ سماعت پر تحریری دلائل طلب کرتے ہوئے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ اس کیس میں اب مزید تاخیر نہ ہو۔

بعدازاں عدالت نے سٹیٹ کونسل کی وقت مانگنے کی استدعا منظور کر کے سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کر دی۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

پبلک ٹرانسپورٹ میں مزید 630 بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری

وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز کی زیر صدارت کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ و ترقی کا اجلاس ہوا جس میں سینئر صوبائی وزیر مریم اورنگزیب، وزیر خزانہ مجتبیٰ شجاع الرحمان، سینیٹر پرویز رشید، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل (آئی جی) نے شرکت کی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پبلک ٹرانسپورٹ   میں مزید 630  بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز نے  شہری علاقوں کے ٹرانسپورٹ سسٹم میں مزید 630 پبلک بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری دے دی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز کی زیر صدارت کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ و ترقی کا اجلاس ہوا جس میں سینئر صوبائی وزیر مریم اورنگزیب، وزیر خزانہ مجتبیٰ شجاع الرحمان، سینیٹر پرویز رشید، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل (آئی جی) نے شرکت کی ۔ پنجاب، چیئرمین پی اینڈ ڈی، سیکرٹری خزانہ، لوکل گورنمنٹ، اطلاعات اور دیگر حکام نے شرکت کی۔


ملاقات میں وزیراعلیٰ پنجاب کو مختلف ترقیاتی منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔


صوبائی کابینہ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے گورنمنٹ پائلٹ بوائز ہائی سکول وحدت روڈ کی اپ گریڈیشن کے لیے فنڈز کی منظوری دے دی۔ اجلاس میں محکمہ پولیس کی لیڈی پولیس افسران کے لیے 150 ای بائیکس کی بھی منظوری دی گئی۔


اجلاس میں پنجاب کے شہری علاقوں کے ٹرانسپورٹ سسٹم میں مزید 630 پبلک بسیں شامل کرنے کے لیے فنڈز کی منظوری دی گئی۔ منصوبے کے تحت لاہور، راولپنڈی، ملتان، فیصل آباد اور بہاولپور میں نئی ​​بسیں فراہم کی جائیں گی۔

قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے محکمہ انسداد دہشت گردی کے 332 انڈر افسران کے لیے خصوصی الاؤنس اور ساہیوال میں واٹر اینڈ سینی ٹیشن سروسز کمپنی بنانے کی بھی منظوری دی جب کہ لاہور کے ترقیاتی منصوبے میں 34 ارب کی ترقیاتی سکیموں کو شامل کرنے کی تجاویز کی بھی منظوری دی۔ .


یاد رہے کہ اجلاس کے دوران حکومت کو اپ گریڈ کرنے کی بھی اصولی منظوری دی گئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll