جی این این سوشل

جرم

نور مقدم کیس :نورمقدم کے والد کا عدالتوں سے انصاف کا مطالبہ

والد شوکت مقدم اور انعام الرحیم نے اپنے تحفظات کا اظہار کرنے کے لیے سول سوسائٹی کے ارکان کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس بھی کی تھی ۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

نور مقدم کیس :نورمقدم کے والد کا  عدالتوں سے انصاف کا مطالبہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

اسلام آباد: نورمقدم اور سارہ انعام کے والد نے اتوار کے روز قتل کے مقدمات میں تیزی سے ٹرائل کا مطالبہ کیا تاکہ انصاف کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے اور مجرموں کا احتساب کیا جائے۔  والد شوکت مقدم اور انعام الرحیم نے اپنے تحفظات کا اظہار کرنے کے لیے سول سوسائٹی کے ارکان کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس بھی کی تھی ۔

 شوکت مقدم نے سارہ انعام کے قتل کی سفاکانہ نوعیت پر روشنی ڈالی اور ذکر کیا کہ وہ اور ان کی اہلیہ نے سارہ کے اہل خانہ کو ان کے غم کی گھڑی میں مدد کی پیشکش کی۔ انہوں نے ابتدائی طور پر عدالتوں کے ذریعے انصاف طلب کیا تھا اور ان سے منصفانہ ٹرائل کا وعدہ کیا گیا تھا، لیکن یہ عمل طول پکڑ گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان کی بیٹی نور مقدم کے کیس کی ہائی کورٹ نے سماعت کی تھی، جس کے نتیجے میں اس کے قاتل ظاہر جعفر کو سزا سنائی گئی تھی، جسے اسلام آباد ہائی کورٹ (IHC) کے چیف جسٹس عامر فاروق نے سزائے موت سنائی تھی۔  لیکن اب یہ کیس سپریم کورٹ کے زیر غور ہے، اور شوکت مقدم نے تاخیر کی وجہ سے عدالتی نظام پر اعتماد برقرار رکھنے  کے لیے اس کی تیزترین  سماعت کا مطالبہ کیا۔

 

پاکستان

9 مئی کے سہولت کاروں اور منصوبہ سازوں کو کیفر کردار تک نہ پہنچایا تو فاشزم مزید پھیلے گی ، ترجمان پاک فوج

خوارج اور ڈیجیٹل دہشت گردی دونوں کا ٹارگٹ فوج ہے، لیفٹیننٹ جنرل احمد شریف چودھری

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

9 مئی کے سہولت کاروں اور منصوبہ سازوں کو کیفر کردار تک نہ پہنچایا تو فاشزم مزید پھیلے گی ، ترجمان پاک فوج

ڈی جی آئی ایس پی آر لیفٹیننٹ جنرل احمد شریف نے کہا ہے کہ 9 مئی پر کہا گیا کہ حملے ہو رہے تھے تو فوج کہا تھی، روکا کیوں نہیں، 9 مئی کے سہولت کاروں اور منصوبہ سازوں کو کیفر کردار تک نہ پہنچایا تو فاشزم مزید پھیلے کی، امن و امان کی صورتحال قابو کرنا صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے فوج کی نہیں،۔خوارج اور ڈیجیٹل دہشت گردی دونوں کا ٹارگٹ فوج ہے، ڈیجیٹل دہشت گردی کو قانوں اور مانیٹرنگ سے روکنا ہے۔

لیفٹیننٹ جنرل احمد شریف چودھری  نے نیوزکانفرنس کرتے ہوئے کہا  کہ اس پریس کانفرنس کا مقصد بعض اہم امور پر افواج کا مؤقف واضح کرنا ہے، جیسا کہ علم میں ہے کہ حالیہ کچھ عرصے میں مسلح افواج کے خلاف منظم پروپیگنڈا، جھوٹ، غلط معلومات کے پھیلاؤ اور ان سے منسوب من گھڑت خبروں میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اس لیے ان معاملات پر بات کرنا ضروری ہے۔ 

انہوں  نے کہا کہ عزم استحکام آپریشن کاؤنٹر ٹیررازم کے حوالے سے ہمہ گیر اور منظم مہم ہے، یہ ملٹری آپریشن نہیں ،  22جون کو عزم استحکام آپریشن پر ایک اجلاس ہوا، اجلاس میں متعلقہ وزرا، وزرائے اعلیٰ اور چیف سیکرٹریز موجود تھے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ 22جون کو اجلاس کے بعد اعلامیہ جاری ہوتا ہے، ایپکس کمیٹی نے 2021کے نظر ثانی شدہ نیشنل ایکشن پلان میں پیشرفت کاجائزہ لیا، ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں سول اور ملٹری افسران بھی شریک تھے، اعلامیہ کے مطابق ایپکس کمیٹی میں ماضی میں کیے گئے آپریشنز کا موازنہ کیا گیا، اعلامیہ میں کہا گیا کہ قومی اتفاق رائے سے کاؤنٹر ٹیررازم  مہم شروع کی جائے، ایک بیانیہ بنایا گیا کہ ہم اس کی مخالفت کرتے ہیں، یہ قومی بقا کا ایشو ہے جس کو مذاق بنایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ  اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ دہشت گردی کے خلاف مہم کو عزم استحکام کے نام سے منظم کیا جائے گا، اعلامیہ میں لکھا گیا کہ ایک قومی دھارے کے تحت اتفاق رائے پیدا کیا جائے گا، یہ قومی وحدت کا معاملہ ہے اس کو بھی سیاست کی نذر کیا جاتا ہے،  کیوں ایک مافیا، سیاسی مافیا اور غیرقانونی مافیا کھڑا ہوگیا اور کہنے لگا اس کو ہم نے ہونے نہیں دینا، یہ سیاسی مافیا چاہتا ہے کہ عزم استحکام کو متنازع بنایا جائے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ پاکستان میں کوئی نوگو ایریا نہیں ، عزم استحکام سے متعلق 24 جون کو وزیرِ اعظم آفس سے ایک بیان جاری کیا گیا، عزم استحکام فوجی آپریشن نہیں، اس کو متنازع کیوں بنایا جا رہا ہے؟ ایک مضبوط لابی ہے جو چاہتی ہے کہ نیشنل ایکشن پلان کے اغراض ومقاصد پورے نہ ہوں۔

 ان کا کہنا تھا کہ اس آپریشن کا ایک مقصد دہشتگردوں اور کرمنل مافیا کے رابطے کو بریک کرنا ہے ، کاؤنٹر ٹیررازم کی مد میں اس سال سکیورٹی فورسز نے مجموعی طور پر اب تک 22 ہزار 409 انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کیے، اس دوران 398 دہشتگردوں کو جہنم واصل کیا گیا، دہشتگردی کے ناسور سے نمٹنے کے لیے روزانہ 112 سے زائد آپریشن افواج پاکستان، پولیس، انٹیلیجنس ایجنسی اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے انجام دے رہے ہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ اس کے دوران انتہائی مطلوب 31 دہشتگردوں کی ہلاکتیں ہوئی ہیں، رواں سال 137 افسر اور جوانوں نے ان آپریشن میں جام شہادت نوش کیا، پوری قوم ان بہادروں کو خراج تحسین پیش کرتی ہے جنہوں نے قیمتی جانیں ملک کے  امن و سلامتی پر قربان کی ہیں۔

 لیفٹیننٹ جنرل احمد شریف نے کہاکہ ہم ہر گھنٹے میں 4سے 5انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کررہے ہیں، خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں سب سے زیادہ دہشتگردی ہے، خیبرپختونخوا میں سی ٹی ڈی کے 537فیلڈ آپریٹر ہیں ، 2014سے سنتے آرہے ہیں کہ مدارس کو ریگولرائزڈ کرنا ہے، 50فیصد سے زیادہ مدارس کا پتہ ہی نہیں کہ کون چلا رہا ہے، 16 ہزار مدارس رجسٹرڈ ہیں، اب بھی 50 فیصد مدارس رجسٹرڈ نہیں، کیا یہ فوج نے کرنا ہے؟ ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ دہشتگردی سے نمٹنے کیلئے اینٹی ٹیررایسٹ کورٹ بنائے گئے، نیکٹا کے مطابق کے پی میں اے ٹی سی کورٹس 13 اور بلوچستان میں 9 ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

اسرائیلی فوج نے غزہ پر وحشیانہ حملے تیز ، ایک ہی دن میں 64 سے زائد فلسطینی شہید

7 اکتوبر 2023 سے اب تک کم از کم 38 ہزار 983 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے شامل ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسرائیلی فوج نے غزہ پر وحشیانہ حملے تیز ، ایک ہی دن میں  64 سے زائد  فلسطینی شہید

اسرائیلی فوج نے غزہ پر وحشیانہ حملے تیز کر دیئے، ایک ہی دن میں 64 سے زائد فلسطینی شہید اور 100 سے زائد زخمی ہو گئے۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کی ایک رپورٹ میں غزہ کی وزارت صحت نے کہا کہ بہت سے متاثرین اب بھی ملبے تلے دبے ہوئے ہیں۔ سول ڈیفنس کے اہلکار ان تک پہنچنے سے قاصر ہیں، 7 اکتوبر 2023 سے اب تک کم از کم 38 ہزار 983 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے شامل ہیں، جب کہ زخمیوں کی تعداد 89 ہزار 727 سے تجاوز کر چکی ہے۔

حالیہ دنوں میں اسرائیلی فوج نے نصرت پناہ گزین کیمپوں کو نشانہ بنایا ہے۔ بے گھر ہونے والے غزہ کے رہائشی تیمور ابرکان، جو دیر البلاح میں ہیں، نے کہا، "ہم نے نصرت کیمپ میں دھماکوں کی آوازیں سنی اور دیر البلاح میں یہاں سے دھواں اٹھتے دیکھا"۔ ہمیں ڈرایا جا رہا ہے کہ یہاں بھی ٹینک آ کر تباہی کر سکتے ہیں۔

انہوں نے سوال اٹھایا کہ اب وہ کہاں جائیں؟ پورا غزہ آگ کی لپیٹ میں ہے اور انہیں جنگل میں ہرنوں کی طرح شکار کیا جا رہا ہے، جنگ کب ختم ہوگی؟

اسرائیلی فورسز نے غزہ کے جنوبی شہر رفح میں بھی اپنی جارحیت جاری رکھتے ہوئے ساحلی پٹی کے وسط میں ان علاقوں پر حملہ کیا جہاں ہزاروں بے گھر فلسطینی پناہ کی تلاش میں ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

سمند ر پار پاکستانیوں کو 60 روز میں پا سپورٹ جاری کیا جائے گا ، وزیر خارجہ

نائب وزیراعظم کو یقین دہانی کروائی گئی کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو 60 روز کے اندر پاسپورٹ جاری کیاجائے گا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سمند ر پار پاکستانیوں کو 60 روز میں پا سپورٹ جاری کیا جائے گا ، وزیر خارجہ

نائب وزیراعظم اور وزیرخارجہ اسحاق ڈار کی زیرصدارت آج(پیر) اسلام آباد میں ایک اجلاس میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی فلاح وبہبود سے متعلق امور کاجائزہ لیا گیا۔

نائب وزیراعظم کو سیکرٹری داخلہ، امیگریشن اور پاسپورٹ کے محکمے ڈائریکٹرجنرل نے پاسپورٹ کے بروقت اجراء کے حوالے سے ایک جامع بریفنگ دی۔

واضح رہے کہ نائب وزیراعظم کو یقین دہانی کروائی گئی کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو 60 روز کے اندر پاسپورٹ جاری کیاجائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll