جی این این سوشل

کھیل

فاطمہ ثناء کا انجری کے بعد واپسی پر کیریئر کا بہترین اسپیل

فاطمہ ثنا نے پاکستان کو نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز میں فتح دلائی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

فاطمہ ثناء   کا انجری کے بعد واپسی پر کیریئر کا بہترین اسپیل
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پاکستانی ویمن کرکٹ ٹیم کی فاسٹ باؤلر فاطمہ ثناء نے اتوار، 3 نومبر کو ڈنیڈن کے یونیورسٹی اوول میں نیوزی لینڈ کے خلاف تین میچوں کی سیریز کے پہلے ٹی ٹوئنٹی میں اپنے کیریئر کے بہترین اسپیل کے ساتھ بین الاقوامی کرکٹ میں شاندار واپسی کی۔

22 سالہ نوجوان نے 4-0-18-3 کے اعداد و شمار کے ساتھ مکمل کیا اور ویمن ان گرین نے وائٹ فرنز کو سات وکٹوں سے شکست دینے کے بعد پلیئر آف دی میچ کا ایوارڈ جیتا۔

ثنا نے سوزی بیٹس، کیٹ اینڈرسن اور برناڈائن بیزوڈین ہاٹ کی وکٹیں حاصل کیں، جس سے پاکستان نے ہوم ٹیم کو 20 اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 127 تک محدود کرنے میں مدد کی۔

کراچی میں پیدا ہونے والی ثنا نے 2010 کے بعد اپنی نویں میٹنگ میں ویمنز T20I میں نیوزی لینڈ کے خلاف پہلی جیت میں پاکستان کی رہنمائی بھی کی۔

پاکستان نے 10 گیندیں باقی رہ کر ہدف کا تعاقب کیا جب 18 سالہ شوال ذوالفقار نے 42 گیندوں پر سات چوکوں کی مدد سے 41 رنز بنائے۔ منیبہ علی اور ندا ڈار نے 23 اور عالیہ ریاض نے 12 گیندوں پر ناقابل شکست 25 رنز بنائے۔

پاکستان

ملک کے مختلف شہروں میں شدید بارشوں کی پیشگوئی

جمعرات کے روز بلوچستان، خیبر پختونخوا ، کشمیر اورگلگت بلتستان میں اکثر مقامات پر آندھی جھکڑ چلنےاور گرج چمک کے ساتھ بارش اور پہاڑوں پر برف باری کا امکان ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملک کے مختلف شہروں میں شدید بارشوں کی پیشگوئی

آئندہ تین روز کے دوران ملک کے مختلف علاقوں میں موسلا دھار بارشوں کے امکان کے پیش نظر برساتی و مقامی ندی نالوں میں طغیانی اور پہاڑی علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ کے ساتھ ساتھ کمزور انفراسٹرکچر کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ظاہر کیا گیا ہے، اس دوران شدید بارش برف باری سے رابطہ سڑکیں بند ہونے کا خدشہ ہے۔

یکم اور2 مارچ کو مری، گلیات، ناران، کاغان، دیر، سوات، کوہستان، مانسہرہ، ایبٹ آباد، شانگلہ، استور، ہنزہ، سکردو، وادی نیلم، باغ، پونچھ اور حویلی میں شدید بارش / برفباری سے رابطہ سڑکیں بند ہونے کا خدشہ ہے ۔اس دوران بالائی خیبر پختونخوا، مری، گلیات، کشمیر اور گلگت بلتستان میں لینڈسلائیڈنگ کا بھی خدشہ ہے۔آندھی/جھکڑ / گرج چمک اور تیز بار ش کے باعث کمزور انفرا سٹرکچر ( بجلی کے کھمبے،گاڑیوں سولر پینل وغیرہ)کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق 29 فروری اور یکم مارچ کو موسلا دھار بارشوں کے باعث گوادر، کیچ، تربت، پنجگور، آواران، بارکھان، کوہلو، سبی، نصیر آباد، دالبندین، خضدار اور ڈیرہ غازی خان جبکہ یکم اور2 مارچ کو خیبرپختونخوا، کشمیر، مری، گلیات اور اسلام آباد/راولپنڈی کے برساتی/مقامی ندی نالوں میں طغیانی کا خدشہ ہے ۔

جمعرات کے روز بلوچستان، خیبر پختونخوا ، کشمیر اورگلگت بلتستان میں اکثر مقامات پر آندھی جھکڑ چلنےاور گرج چمک کے ساتھ بارش اور پہاڑوں پر برف باری کا امکان ہے۔

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

الیکشن کمیشن نے ہمیں مخصوص نشستیں نہ دیں تو سپریم کورٹ جائیں گے، بیرسٹر علی ظفر

اگر ہماری سیٹیں چھین کر بانٹ دی گئیں تو صدر اور وزیر اعظم سمیت تمام الیکشن متنازع ہو جائیں گے،رہنما پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

الیکشن کمیشن نے ہمیں مخصوص نشستیں نہ دیں تو سپریم کورٹ جائیں گے، بیرسٹر علی ظفر

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما بیرسٹر علی ظفر نے کہا ہے کہ اگر ہماری سیٹیں چھین کر بانٹ دی گئیں تو صدر اور وزیر اعظم سمیت تمام الیکشن متنازع ہو جائیں گے، اُمیدہے آئین اور قانو ن کے مطابق فیصلہ ہوگا،اگر الیکشن کمیشن نے ہمیں مخصوص نشستیں نہ دیں تو سپریم کورٹ جائیں گے۔

مخصوص نشستوں سے متعلق الیکشن کمیشن کی جانب سے فیصلہ محفوظ ہونے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کے رہنما بیرسٹر علی ظفر نے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن میں مخصوص نشستوں کی سماعت ہوئی، ہماری سیاسی جماعتیں جمہوریت کی بات کرتی ہےلیکن عمل نہیں کرتی، آئین کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا، آئین میں جو حصہ دوسری جماعتوں کا ہے آپ وہ انہیں دے چکے ہیں اور پی ٹی آئی ارکان کو آئین کے مطابق حصہ دینا ہی دینا ہے۔

علی ظفر نے کہا کہ یہ چاہتے ہیں کہ ہماری مخصوص نشستیں خود میں تسلیم کرلیں، مخصوص نشستیں کوئی خیرات نہیں آئینی حق ہے، ہم نے کہا الیکشن کمیشن یہ معاملہ خالی بھی نہیں چھوڑسکتا، جنہیں نشستیں مل گئی انہیں دوبارہ نہیں مل سکتیں، دوران سماعت کہا گیا کہ سنی اتحاد کونسل ایک سیاسی جماعت تو ہے لیکن انہوں نے پارلیمنٹ میں کوئی سیٹ نہیں جیتی ، اس لئے آزاد ارکان کی اس جماعت میں شمولیت کے بعد بھی کوئی مخصوص نشستیں نہیں دی جا سکتی،ہم نے آرٹیکل 51 دکھایا کہ ارکان کسی بھی پارٹی میں شامل ہوسکتے ہیں،آئین میں کہیں یہ قدغن نہیں لگائی کہ اسی سیاسی جماعت میں شامل ہو سکتے ہیں جو پارلیمنٹ میں ہو۔

رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ دوسری بحث یہ کی کہ سنی اتحاد کونسل نے مخصوص نشستوں سے متعلق کوئی لسٹ الیکشن کمیشن میں جمع نہیں کرائی جس کے جواب میں ہم نے کہا کہ قانون میں کہا لکھا ہے کہ لسٹ بعد میں جمع نہیں کرائی جا سکتی۔اگر مخصوص نشستیں چھین کر دوسری جماعتوں میں بانٹی گئیں تو وہ سپریم کورٹ جائیں گے لیکن اگر ایسی بانٹ ہوئی تو صدر کا الیکشن، چیئرمین سینیٹ اور اسپیکر کے الیکشن سمیت تمام الیکشن متنازع ہو جائیں گے۔

پی ٹی آئی رہنما علی ظفر کا مزید کہنا تھا کہ خط میں کہیں نہیں لکھا کہ ہمیں مخصوص سیٹیں نہیں چاہیئے، اس خط کا مخصوص نشستوں سے کوئی تعلق نہیں بنتا۔  سنی اتحاد کونسل کے سربراہ کا خط انہیں دکھایا نہیں گیا لیکن انہیں معلوم ہوا ہے کہ وہ خط رول 206 کے تحت لکھا گیا تھا، جب الیکشن کمیشن نے رسمی کارروائی کے لیے سنی اتحاد کونسل سے پوچھا کہ انہوں نے مخصوص نشستوں کے لیے ترجیحی فہرست فراہم نہیں کی تو جواب میں سنی اتحاد کونسل نے کہا کہ انہوں نے الیکشن نہیں لڑا اور اس فہرست کی ضرورت نہیں۔

اس موقع پر پی ٹی آئی رہنما بیرسٹر گوہر نے کہا کہ آئین کے مطابق پی ٹی آئی کے 293 اراکین نے سنی اتحاد جوائن کیا، قومی اسمبلی سے پی ٹی آئی کے 86 اراکین نے سنی اتحاد جوائن کیا، پنجاب سے 107، خیبرپختونخوا سے 91 جبکہ سندھ اسمبلی سے 9 ایم پی ایز نے جوائن کیا۔

اس سے قبل سنی اتحاد کونسل کو مخصوص نشستیں الاٹ کرنے سے متعلق درخواستوں پر فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر الیکشن کمیشن آف پاکستان نے فیصلہ محفوظ کرلیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

بلوچ طلباء بازیابی کیس ، انوار الحق کاکڑ اسلام آباد ہائیکورٹ پیش

 نگران وزیر اعظم انوارلحق کاکڑ نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کو اس مسئلے کے حل کے لئے مل کر کام کرنا چاہیے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بلوچ طلباء بازیابی کیس ، انوار الحق کاکڑ اسلام آباد ہائیکورٹ پیش

نگران وزیر اعظم انوارالحق کاکڑ بلوچ طلباء مقدمے کی سماعت کےلئے آج اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش ہوئے۔

جسٹس محسن اختر کیانی  پر مشتمل ہائیکورٹ کے ایک رکنی بنچ نے مقدمے کی سماعت کی  ،  نگران وزیر اعظم نے عدالتی کٹہرے میں کھڑے ہوکر کہا کہ ہم آئین وقانون کے پابند ہیں ، انہوں نے کہا کہ ہم قانون کی بالا دستی پر یقین رکھتے ہیں ۔ 

 انہوں نے کہا کہ  لاپتہ  افراد کی بازیابی کےلئے ایک کمیشن تشکیل دیاگیا ہے ، انہوں نے کہا کہ کمیشن لاپتہ ہونے والے بلوچوں کے بار ے میں تحقیق کرے گا اور قانون کے مطابق فیصلہ کریں گے ۔ 

 نگران وزیر اعظم انوارلحق کاکڑ نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کو اس مسئلے کے حل کے لئے مل کر کام کرنا چاہیے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll