جی این این سوشل

ٹیکنالوجی

متحدہ عرب امارات اورپاکستان کے درمیان جدت پرمبنی ٹیکنالوجی کی ترقی پر اجلاس

وزیراعظم نے معیشت کو ڈیجیٹلائز کرنے کیلئے متحدہ عرب امارات اور پاکستانی کمپنیوں کے درمیان مشترکہ منصوبوں کو بھی سراہا اور اس رجحان کو پاکستان میں بڑھانے کی خواہش کااظہارکیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

متحدہ عرب امارات اورپاکستان کے درمیان جدت پرمبنی ٹیکنالوجی کی ترقی  پر اجلاس
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

وزیراعظم شہبازشریف نے پاکستان کی معیشت کو متحدہ عرب امارات کے ساتھ روابط، مشترکہ منصوبوں اور شراکت داری کے ذریعے مکمل طورپر تبدیل کرنے کیلئے حکومت کے عزم کااظہار کیا ہے ۔

وزیر اعظم شہباز شریف نے  ابو ظہبی میں متحدہ عرب امارات اورپاکستان کے درمیان جدت پرمبنی ٹیکنالوجی کی ترقی کے موضوع پر گول میز اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت برآمدات میں اضافے کیلئے معیشت کے مختلف شعبوں میں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور مصنوعی ذہانت کے فروغ پر توجہ دے رہی ہے ۔

وزیراعظم نے معیشت کو ڈیجیٹلائز کرنے کیلئے متحدہ عرب امارات اور پاکستانی کمپنیوں کے درمیان مشترکہ منصوبوں کو بھی سراہا اور اس رجحان کو پاکستان میں بڑھانے کی خواہش کااظہارکیا-

انہوں نے نوجوانوں کو بااختیار بنانے کی غرض سے آئی ٹی کی مہارت کے فروغ پر بھی زوردیا جو پاکستان کی آبادی کا ساٹھ فیصد ہیں ۔

 

علاقائی

بین الاقوامی نتھیاگلی سمر کالج کا افتتا ح کل کیا جائےگا

واضح رہے کہ پاکستان CERN کا ایسوسی ایٹ رکن ہے جس کے ساتھ اس کا شاندار تعاون جاری ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بین الاقوامی نتھیاگلی سمر کالج کا افتتا ح کل کیا جائےگا

پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن نے اعلان کیا ہے کہ طبیعات اور جدید دور کے تقاضوں کے بارے میں بین الاقوامی نتھیاگلی سمر کالج کا کل افتتاح کیا جائے گا۔

منصوبہ بندی و ترقی کے وزیر احسن اقبال اس موقع پر مہمان خصوصی ہوں گے۔سمر کالج کے افتتاح کے بعد ایٹمی تحقیق کی یورپی تنظیمCERN کے قیام کے70 سال مکمل ہونے پر پاکستان اور CERN کے درمیان اشتراک کے بارے میں خصوصی اجلاس منعقد ہوگا۔

واضح رہے کہ پاکستان CERN کا ایسوسی ایٹ رکن ہے جس کے ساتھ اس کا شاندار تعاون جاری ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

بین الا قوامی برادری موسمیاتی تبدیلیوں سے بچنے کیلئے اقدامات کرے ، سیکرٹری جنرل یواین او

انہوں نے کہا کہ نیپال 30 برس میں اپنے ہاں ایک تہائی برف کھو چکا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بین الا قوامی برادری موسمیاتی تبدیلیوں سے بچنے کیلئے اقدامات کرے ، سیکرٹری جنرل یواین او

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتوینو گوتریس نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ موسمیاتی تبدیلی کے حوالے سے ہنگامی اقدامات کرے۔

سوشل میڈیا ایکس پر اپنے ایک پیغام میں انہوں نے کہا کہ عالمی درجہ حرارت میں ایک اعشاریہ پانچ ڈگری سینٹی گریڈ کے اضافے اورموسمیاتی تبدیلی کے تباہ کن اثرات سے بچاؤ کے اقدامات کیلئے آئندہ ڈیڑھ سال انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیپال 30 برس میں اپنے ہاں ایک تہائی برف کھو چکا ہے جہاں گزشتہ سال گلیشیئر اس سے پچھلے برس کے مقابلے  میں 65 فیصد زیادہ تیزی سے پگھلے ہیں۔ ہمالیہ کے علاقے ایورسٹ میں گلیشیئروں کےپگھلاؤ نے پورے کے پورے علاقوں کو معدومیت کے خطرے سے دوچار کر دیا ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان تحریک انصاف کی کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت

اس موقع پر اپوزیشن لیڈر عمر ایوب کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان تحریک انصاف کی کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت کر دی۔

قومی اسمبلی کے بجٹ اجلاس سے احتجاجاً واک آؤٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی چیئرمین بیرسٹر گوہر خان نے کہا کہ کسی بھی آپریشن کے لیے پارلیمان کو اعتماد میں لینا ضروری ہے، کوئی بھی کمیٹی کتنی ہی بڑی ہو آئین کے مطابق پارلیمان سپریم ہے۔

بیرسٹر گوہر نے مزید کہا کہ ہم اپنے آئینی فرائض سرانجام دے رہے ہیں، ہمارا مطالبہ یہی ہے کہ پارلیمان کو اعتماد میں لیے بغیر کوئی آپریشن شروع نہ ہو، ہمیں ٹائم نہیں ملا اس لیے ہم نے اجلاس سے واک آوٹ کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے بغیرجمہوریت نہیں ڈکٹیٹر شپ ہوتی ہے، اپوزیشن کاسب سے زیادہ کردار ہوتا ہے، پوائنٹ آف آرڈر پر بات کرنے کی اجازت مانگی تھی، کوئی بھی کمیٹی آئین کو نظر انداز نہیں کرسکتی، پہلے بھی فوجی آپریشن کے لیے پارلیمان نے آئین میں ترمیم کی، کسی آپریشن کے لیے پارلیمان کو اعتماد میں لینا ضروری ہے۔

 

“اتنے بڑے فیصلے پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا جارہا”

دوسری جانب میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے رہنما اسد قیصر نے کہا کہ اتنے بڑے فیصلے پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا جارہا، ایک طرف آپریشن، دوسری طرف فاٹا، پاٹا پر ٹیکس لگائے جارہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ مارشل لا ذہنیت ہے، بہت سے آپریشن ہوئے آج تک کونسا آپریشن کامیاب ہوا؟ میڈیا نمائندگان پر پابندیاں لگی ہوئی ہیں۔

“کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں”

اس موقع پر اپوزیشن لیڈر عمر ایوب کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں، چین سے آئے ساتھیوں نے واضح طور پر کہا تھا سی پیک پر سیکیورٹی خدشات ہیں، بانی پی ٹی آئی کئی بار کہہ چکے ہیں ملک میں امن رول آف لاء سے آئے گا، ملک میں رول آف لاء ہوگا تب ملک ترقی کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ ہم عوام کی نمائندگی کررہے ہیں، ان کا رویہ اپوزیشن کے ساتھ ٹھیک نہیں، فارم 45 کےتحت پی ٹی آئی کی 180 سیٹیں بنتی ہیں، ایوان میں بات کرنی چاہی تو اسپیکر نے موقع نہیں دیا۔

عمر ایوب نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت اینٹی اسٹیٹ ہے، یہ بجٹ اقتصادی دہشتگرد کا بجٹ ہے اسے مسترد کرتے ہیں۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll