جی این این سوشل

پاکستان

وزیراعظم کا شفافیت کے برعکس اقدامات کے خلاف عالمی سطح پر جرمانے عائد کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے عالمی مالیاتی احتساب سے شفافیت کے برعکس اقدامات کے خلاف عالمی سطح پر جرمانے عائد کرنے کا مطالبہ کر دیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

وزیراعظم کا شفافیت کے برعکس اقدامات کے خلاف عالمی سطح پر جرمانے عائد کرنے کا مطالبہ
وزیراعظم کا شفافیت کے برعکس اقدامات کے خلاف عالمی سطح پر جرمانے عائد کرنے کا مطالبہ

عالمی مالیاتی احتساب  کی شفافیت پر  جاری رپورٹ کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے ورچوئل خطاب کیا جس میں ان کا کہنا تھا کہ ترقی پذیر ممالک سے کھربوں روپے غیر قانونی طور پر بیرون ملک منتقل ہوئے،مالیاتی شفافیت کے حوالے سے تجاویز پیش کرنا چاہتے ہیں،غیر مساویانہ معاہدوں کا ازسرنور جائزہ لیا جائے، شفافیت کے برعکس اقدامات کے خلاف عالمی سطح پر جرمانے عائد کیے جائیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ کوٹیکس اصلاحات ،منی لانڈرنگ سےمتعلق اقدامات کرنےہونگے اور رقوم کی غیرقانونی ترسیل پرقابوپانےکیلئے متعلقہ اداروں کومضبوط بناناہوگا،ملک کےاندراوربیرون ملک مالیاتی لین دین کو قانون کےدائرےمیں لاناہوگا۔

پاکستان

موسمی اثرات سے نمٹنے کیلئے اقدا مات کیے جا رہے ہیں ، کوآرڈینیٹر برائے موسمیاتی تبدیلی

کوآرڈینیٹر برائے موسمیاتی تبدیلی رومینہ خورشید عالم نے کہا کہ صرف 2022 میں تباہ کن سیلاب کے نتیجے میں 30 ارب ڈالر سے زیادہ کا معاشی نقصان ہوا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

موسمی اثرات سے نمٹنے کیلئے اقدا مات کیے جا رہے ہیں ، کوآرڈینیٹر برائے موسمیاتی تبدیلی

نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے زیر اہتمام نیشنل یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی میں ،،ڈیزاسٹر ریسیلینٹ پاکستان،، کے عنوان سے سیمنار منعقد ہوا۔سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کی کوآرڈینیٹر برائے موسمیاتی تبدیلی رومینہ خورشید عالم نے کہا کہ پاکستان موسمیاتی تبدیلیوں بالخصوص ہیٹ ویوز اور سیلاب کے بڑھتے ہوئے اثرات سے نمٹنے کے لیے جدوجہد کر رہا ہے۔ گزشتہ ایک دہائی میں مجموعی طور پر موسم کے معمولات میں مسلسل رکاوٹوں نے ملک کی زرعی پیداوار کو شدید متاثر کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ صرف 2022 میں تباہ کن سیلاب کے نتیجے میں 30 ارب ڈالر سے زیادہ کا معاشی نقصان ہوا ۔

رومینہ خورشید عالم نے موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کیلئے حکومتی اقدامات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں موجودہ حکومت وزیر اعظم شہباز شریف کی زیرقیادت ہمہ گیر پالیسی اقدامات کر رہی ہے۔ ریچارج پاکستان اور گرین پاکستان سمیت دیگر خصوصی پروگرامز کے تحت دو ارب دس کروڑ درخت لگائے گئے ہیں۔

وزیر اعظم کی کوآرڈینیٹر برائے موسمیاتی تبدیلی نے نجی شعبے پر زور دیا کہ وہ حکومت کے موسمیاتی لچک کی تعمیر کے اقدامات کی حمایت اور فنڈز فراہم کرنے کے لیے آگے بڑھیں ۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپیہ مستحکم

اوپن مارکیٹ میں روپیہ ڈالر کے مقابلے میں 0.13 روپے کی کمی سے 280.25 روپے پر طے ہوا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپیہ  مستحکم

کراچی: انٹربینک مارکیٹ میں جمعرات کو  ڈالر کے مقابلے پاکستانی روپے کی قدر میں دو پیسے کا اضافہ ہوا۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق مقامی یونٹ گرین بیک کے مقابلے میں دو پیسے اضافے کے بعد 278.61 پر بند ہوا۔ 

اوپن مارکیٹ میں روپیہ ڈالر کے مقابلے میں 0.13 روپے کی کمی سے 280.25 روپے پر طے ہوا۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

چینی وزیر اعظم کی نیوزی لینڈ کی گورنر سنیتھا کیرو سے ملاقات

 لی چھیانگ نے نشاندہی کی کہ چین اور نیوزی لینڈ کے ترقیاتی تصورات، ثقافتی اقدار اور بین الاقوامی تجاویز ملتے جلتے ہیں، اور سالوں سے ایک دوسرے کی ترقی سے فائدہ اٹھایا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چینی وزیر اعظم کی نیوزی لینڈ کی گورنر سنیتھا کیرو سے ملاقات

 چینی  وزیر اعظم لی چھیانگ  نے ویلنگٹن گورنر ہاؤس میں نیوزی لینڈ کی گورنر سنتھیا کیرو سے ملاقات کی۔

 لی چھیانگ نے صدر شی جن پھنگ کی جانب سے گورنر کیرو کو نیک خواہشات پیش کیں۔لی چھیانگ نے کہا کہ  نیوزی لینڈ کا میرا دورہ چین اور  نیوزی لینڈ کے درمیان جامع اسٹریٹجک شراکت داری کے قیام کی 10 ویں سالگرہ کے موقع پر ہو رہا ہے اور یہ دوستی اور تعاون کا سفر ہے۔ چین  نیوزی لینڈ کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لئے تیار ہے تاکہ دونوں ممالک اور دنیا کے عوام کے فائدے کے لئے چین  نیوزی لینڈ جامع اسٹریٹجک شراکت داری کا اپ گریڈ ورژن تیار کیا جاسکے۔

 لی چھیانگ نے نشاندہی کی کہ چین اور نیوزی لینڈ کے ترقیاتی تصورات، ثقافتی اقدار اور بین الاقوامی تجاویز ملتے جلتے ہیں، اور سالوں سے ایک دوسرے کی ترقی سے فائدہ اٹھایا ہے، اور دونوں فریقوں کو ہمیشہ مشترکہ ترقی میں شراکت دار ہونا چاہئے ۔ 

چین نیوزی لینڈ کے ساتھ تعاون کے تعلقات کو مزید مستحکم کرنے، تعلیمی، ثقافتی اور عوامی سطح پر دیگر تبادلوں کو مضبوط بنانے، عوامی سطح پر تبادلوں کو وسعت دینے اور دوستانہ تبادلوں کی مزید کہانیاں لکھنے میں  کام کرنے کے لئے تیار ہے۔

سنتھیا  کیرو نے کہا کہ نیوزی لینڈ چین کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون کو گہرا کرنے، لوگوں کے درمیان اور ثقافتی تبادلوں کو مضبوط بنانے، دونوں عوام کے درمیان دوستی کو مزید بڑھانے اور ماحولیاتی تبدیلی جیسے عالمی مسائل کو مشترکہ طور پر حل کرنے کا خواہاں ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll