جی این این سوشل

کھیل

دوبارہ کوچنگ کے لیے اپلائی نہیں کروں گا: مصباح الحق

لاہور: پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کی دوبارہ کوچنگ کے لیے اپلائی نہیں کروں گا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

دوبارہ کوچنگ کے لیے اپلائی نہیں کروں گا: مصباح الحق
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق مصباح الحق  کا کہنا تھا کہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں ٹیم شاندار کھیلی ، اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ ان کے جانے کے بعد ٹیم اچھا کھیل رہی ہے تو بھی مان لیتے ہیں ، یہ اُن کے لیے خوشی کی بات ہے ۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ مصباح الحق کا کہنا تھا کہ ان کے دور میں بھی ٹیم کی کارکردگی اچھی رہی ۔

خیال رہے کہ  مصباح الحق قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ، بیٹنگ کوچ رہے چکے ہیں انہوں نے رواں سال ستمبر میں استعفیٰ دیا تھا۔

 

 

 

 

عمر نواز گزشتہ چھ ماہ سے جی این این کے ساتھ بطور ویب جرنلسٹ کام کر رہے ہیں۔ وہ پنجاب یونیورسٹی سے ڈویلپمنٹ جرنلزم میں گریجویٹ ہیں۔ جناب عمر اس سے قبل چینل 24 نیوز ایچ ڈی کے ساتھ بطور پینل پروڈیوسر، وقت نیوز چینل اور 7 نیوز میں بطور نیوز رپورٹر اور روزنامہ اوصاف سب ایڈیٹر کے طور پر کام کر چکے ہیں۔

پاکستان

 ’ پہلی تھری سٹار جنرل کی بطور کرنل کمانڈنٹ اے ایم سی پاکستان کے لیے قابل فخر ہے ‘

راولپنڈی : آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے اے ایم سی کی پہلی خاتون کرنل کمانڈنٹ لیفٹیننٹ جنرل نگار جوہر کو بیج لگائے۔

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

 ’ پہلی تھری سٹار جنرل کی بطور کرنل کمانڈنٹ اے ایم سی پاکستان کے لیے قابل فخر ہے ‘

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر ) کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق  آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے  آرمی میڈیکل سینٹر ایبٹ آباد کا دورہ کیا، آرمی چیف نے یاد گار شہدا پر حاضری دی، پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔

ترجمان پاک فوج کے مطابق  آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اے ایم سی کی پہلی خاتون کرنل کمانڈنٹ لیفٹیننٹ جنرل نگار جوہر کو بیج لگائے۔ آرمی چیف نے امن اور جنگ کے ماحول میں صحت کی سہولیات دینے میں اے ایم سی کے کردار کو سراہا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ  آرمی چیف نے کورونا وبا کے دوران آرمی میڈیکل کور کے کردار کی تعریف کی، پہلی تھری سٹار جنرل کی بطور کرنل کمانڈنٹ اے ایم سی پاکستان کے لیے قابل فخر ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

پاکستانی باکسر محمد وسیم نے ڈبلیو بی سی چیمپئن شپ میں سلور ٹائٹل جیت لیا 

دبئی: عالمی شہرت یافتہ  پاکستانی پروفیشنل باکسر محمد وسیم نے ڈبلیو بی سی سِلور ٹائٹل فائٹ جیت لی ہے ۔ 

پر شائع ہوا

Asma Rafi

کی طرف سے

پاکستانی باکسر محمد وسیم نے ڈبلیو بی سی چیمپئن شپ میں سلور ٹائٹل جیت لیا 

تفصیلات کے مطابق دبئی کے باکسنگ ایرینا میں ہونے والے مقابلے میں پاکستانی باکسر  محمد وسیم نے کولمبیئن باکسر روبر باریرا  کو شکست دے کر ڈبلیو بی سی کا سلور ٹائٹل اپنے نام کیا۔ رپورٹس کے مطابق 12راؤنڈز پر مشتمل فائٹ میں ججز نے محمد وسیم کو فاتح قرار دیا تھا۔

واضح رہے کہ دونوں باکسرز کے درمیان یہ باؤٹ فلائی ویٹ کیٹیگری میں ہوئی، اس سے قبل پاکستان کے محمد وسیم 12 فائٹ جیت چکے ہیں جبکہ ایک میں اُنہیں شکست ہوئی ہے۔

کولمبین باکسراگرچہ محمد وسیم سے زیادہ تجربہ کار ہیں، وہ 26 مقابلوں  میں حصہ لے چکے ہیں جس میں انہیں  13  میں کامیابی ہوئی جبکہ بریرا صرف  3 فائٹس میں شکست کھا چکے ہیں ۔

یاد رہے کہ سال 2017 میں ورلڈ باکسنگ کونسل کی جاری کردہ رینکنگز میں پاکستانی باکسر محمد وسیم کو فلائی ویٹ کیٹیگری میں عالمی نمبر ایک باکسر قرار دیا گیا تھا ۔ محمد وسیم یہ اعزاز حاصل کرنے والے پہلے پاکستانی باکسر ہیں ۔ 

جولائی 2018 میں محمد وسیم نے ملائشیا میں جنوبی افریقہ کے موروتی متھالینی سے آئی بی ایف فلائی ویٹ ٹائٹل کے لیے مقابلہ کیا تھا۔ انھیں اس مقابلے میں شکست ہوئی تھی مگر اس کے بعد سے ان کا ریکارڈ 0-2 ہے۔

محمد وسیم اس سے قبل 2015 میں ساؤتھ کوریا بینٹم ویٹ ٹائٹل، اور 2016 میں ورلڈ باکسنگ کونسل کا سلور فلائی ویٹ ٹائٹل جیت چکے ہیں جبکہ  نومبر 2016 میں انھوں نے اپنے ٹائٹل کا کامیابی دفاع کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

سائبریا میں کوئلے کی کان میں  دھماکے  سے 50 سے زائد افراد جاں بحق

روس:  سائبریا میں کوئلے کی کان میں  دھماکے  سے 50 سے زائد افراد جاں بحق ہوگئے ہیں ۔

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

سائبریا میں کوئلے کی کان میں  دھماکے  سے 50 سے زائد افراد جاں بحق

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطا بق سائیبیریا میں کوئلے کی کان میں زوردار دھماکے کے نتیجے میں  46 کان کن اور 6 ریسکیو اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں  اور 90 کے قریب کان کن ملبے تلے دب گئے۔

ریسکیو ادارے  کے مطابق  امدادی کارروائی میں  کان  سے  38 کان کنوں کو بحفاظت نکال کر اسپتال منتقل کردیا گیا۔

اسپتال ذرائع  کے مطابق  100 سے زائد افراد کو ایمرجنسی وارڈ میں لایا گیا ہے جن میں 52 افراد اسپتال پہنچنے سے قبل ہی دم توڑ چکے تھے ،ہلاک ہونے والوں میں 46 کان اور 6 ریسکیو اہلکار  جب کہ زخمیوں میں 38 کان کن اور 11 ریسکیو اہلکار شامل ہیں۔

امدادی کارروائی کے دوران  امدادی کارکنوں   کوئلے کی کان سے ایک  زندہ بچ جانے والا شخص ملا ہے ۔

گورنر سرگئی تسیویلیوف نے کہا کہ زندہ بچ جانے والا شخص لِسٹویازنیا کان میں پایا گیا اور اسے ہسپتال لے جایا جا رہا ہے۔جبکہ  اس مقام پر دیگر زندہ بچ جانے والوں کی تلاش جاری ہے۔

یہ 2010 کے بعد روس میں کان کا سب سے مہلک حادثہ تھا، جب اسی کیمیروو کے علاقے میں راسپڈسکایا کان میں دو میتھین دھماکوں اور آگ لگنے سے 91 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll