جی این این سوشل

تفریح

نیٹ فلکس کا صارفین کی جانب سے پاس ورڈ شئیر کرنے کے خلاف کریک ڈاؤن

کمپنی کے مطابق پاس ورڈ شیئرنگ سے نئے ٹی وی شو اور فلموں کی تیاری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ تا ہے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

نیٹ فلکس کا صارفین کی جانب سے پاس ورڈ شئیر کرنے کے خلاف کریک ڈاؤن
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

امریکی ویب سائٹ نیٹ فلکس نے صارفین کی جانب سے پاس ورڈ شئیر کرنے کے خلاف گھیرا تنگ کرنے کی کوششیں تیز کر دی ہیں کمپنی کے ایک بیان کے مطابق "ایک نیٹ فلکس اکائونٹ ایک گھرانے کے لئے ہے۔"

اس سے قبل نیٹ فلکس نے بتایا تھا کہ تقریبا دس کروڑ صارفین اپنا پاس ورڈ دیگر لوگوں سے شئیر کر رہے ہیں۔ کمپنی کے مطابق اس عمل سے نئے ٹی وی شو اور فلموں کی تیاری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔

نیٹ فلکس نے شئیرڈ اکائونٹ کا اضافہ کیا تھا جن میں صارفین اضافی قیمت کے بدلے نئے صارفین ڈال سکتے ہیں یا نیٹ فلکس پروفائل کو نئے اکائونٹ میں ٹرانسفر کر سکتے ہیں۔ کمپنی کے مطابق اسی تجربے کو اب 100 سے زائد ممالک میں لاگو کیا جا رہا ہے۔

امریکی کمپنی کے شریک چیف ایگزیکیٹو ٹیڈ سرانڈوس کے مطابق اکائونٹ شئیرنگ کا یہ اقدام ہمیں نئے صارفین کو شامل کرنے کا موقع دے گا جس سے نیٹ فلکس کو طویل مدتی ترقی میں مدد ملے گی۔

نیٹ فلکس نے اس سے قبل پاس ورڈ شئیر کرنے والے اکائونٹس کے خلاف کریک ڈائون کرنے کو ملتوی کر دیا تھا تاکہ صارفین کو بہتر تجربہ فراہم کیا جاسکے۔"

نیٹ فلکس کے مطابق اپریل میں صارفین کی تعداد 232.5 ملین "23 کروڑ 25 لاکھ" تک پہنچ گئی تھی جو کہ ایک ریکارڈ ہے۔

پاکستان

کہا ہے وہ لوگ جنہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کےلئے فارغ کیا جاتا ہے، نو منتخب صدر مسلم لیگ ن

آج سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا، نواز شریف

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کہا ہے وہ لوگ جنہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کےلئے فارغ کیا جاتا ہے، نو منتخب صدر مسلم لیگ ن

مسلم لیگ (ن) کے قائد اور نومنتخب صدر نواز شریف نے کہا ہے کہ آج ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا، بلائیں ان لوگوں کو جنہوں ںے فیصلہ دیا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کے لیے فارغ کیا جاتا ہے۔

پارٹی کے جنرل کونسل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ثاقب نثار نے مجھے زندگی بھر کے لیے پارٹی کی صدارت سے ہٹایا، آج لوگوں نے ثاقب نثار کا فیصلہ ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا، بلائیں ان لوگوں کو جنہوں ںے فیصلہ دیا تھا کہ نواز شریف کو ہمیشہ کے لیے فارغ کیا جاتا ہے مگر آج نواز شریف ایک بار پھر آپ کے سامنے کھڑا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میرے خلاف فیصلہ بھی کیا تھا؟ بیٹے سے تنخواہ نہ لینے کا؟ میں نے اپنے بیٹے سے تنخواہ نہیں لی تمہارے بیٹے سے تو تنخواہ نہیں مانگی تھی؟

نواز شریف نے کہا کہ میرے اور شہباز شریف کے رشتے کے درمیان دراڑیں ڈالنے کی کوشش کی، آفرین ہے شہباز شریف پر کہ وہ جھکے اور بکے نہیں اور اپنے بھائی کے ساتھ کھڑے رہے، مجھے اپنے بھائی پر فخر ہے، شہباز شریف کو کہا گیا کہ نواز شریف کو چھوڑیں اور آپ وزیراعظم بنیں اس پر میں گواہ ہوں کہ شہباز نے کہا میں ایسی وزارت عظمی کو ٹھوکر مارتا ہو جس میں بھائی سے بے وفائی کرنی پڑے، وہ جیل تک چلے گئے مگر اُف تک نہ کی۔

نواز شریف نے اپنی بیٹی مریم نواز کو مبارک باد دی اور کہا کہ مریم نے جیلیں کاٹیں، پارٹی کو متحرک کیا ہر امتحان میں پورا اتریں، حمزہ شہباز کو سراہتا ہوں کہ جواں مردی کے ساتھ جیل کاٹی اور جیل تک نہ کی میرے سامنے انہیں ہتھکڑیاں لگا کر لے جایا گیا، شاہد خاقان عباسی نے میرے ساتھ جیلیں کاٹیں اور اف تک نہ کی۔

انہوں نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ان کے خلاف تمام مقدمات درست ہیں اور ان پر بیرون ملک دھرنوں کے ذریعے حکومت کو کمزور کرنے کا الزام لگایا۔ نواز نے پی ٹی آئی پر تیسری قوت کی پیداوار ہونے کا الزام لگایا اور عمران خان کی دیانتداری پر سوالیہ نشان لگا دیا۔

انہوں نے کہا کہ 1990ء میں جب حکومت بنائی اور وزیراعظم بنا اور بیچ میں ٹانگیں کھینچنے والے نہ آتے تو یہاں غربت اور بے روزگاری نام کی چیز نہ ہوتی، 2017ء میں اشیا کی قیمتیں کیا تھیں اور اب کیا ہیں؟

نوازشریف نے کہا کہ وفا کے جرم میں شہبازشریف جیل تک گئے اُف تک نہیں کی، ہمارا رشتہ قائم و دائم اور پہلے سے زیادہ مضبوط رہے گا، مریم نواز نے بھی کڑے وقت میں پارٹی کو متحرک رکھا، مریم نواز بھی ہر امتحان میں پورا اتریں۔

ان کا کہناتھا کہ رانا ثنا اللہ، خواجہ سعد رفیق، حنیف عباسی، اسحاق ڈار، احسن اقبال، خواجہ آصف اور ہمارے دوست شاہد خاقان عباسی نے بھی مصیبتیں برداشت کیں، کبھی اُف تک نہیں کی۔

نوازشریف نے مزید کہا کہ جب بھی (ن) لیگ کی حکومت آئی ہم نے ملک کی تقدیر بدلی، اگر ہماری حکومتوں میں خلل نہ آتا تو پاکستان اس خطے کی بہت بڑی طاقت ہوتا، بدقسمتی سے ٹانگیں کھینچنے کا سلسلہ 1947ء سے لیکر آج تک جاری ہے، افسوس اس سلسلے نے پاکستان کو بہت کمزور کیا۔

صدر ن لیگ کا کہنا تھا کہ مان لینا چاہئے ہم نے اپنے پاؤں پر خود کلہاڑیاں ماری ہیں، 1990ء میں جب وزیراعظم بنا بیچ میں ٹانگیں کھینچنے والے نہ ہوتے تو آج پاکستان میں غربت، بے روزگاری نام کی کوئی چیز نہ ہوتی، میرے دورمیں ڈالر 104 روپے کا تھا، میں آج کے دور کی نہیں اپنے دور کی بات کروں گا۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ 2017ء میں جو کچھ ہوا قوم کو پتہ چلنا چاہئے، میرے دورمیں آٹا 35 روپے کلو تھا، روٹی 4 روپے، چینی 50 روپے، پٹرول 65 روپے لٹر تھا، سونا فی تولا 50 ہزار روپے کا تھا، سبزیاں10،10 روپے کلو ملتی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف ہمارے دور میں اس وقت کوئی کشکول نہیں تھا، ہم نے اس وقت سب کچھ اپنے وسائل سے کام کئے تھے، ہماری حکومت نے کراچی کا امن بحال کیا تھا، 1947ء سے لیکر 2024ء تک کسی نے کوئی موٹروے بنائی تو دکھائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

ملک بھر میں سونے کی قیمتوں میں بڑی کمی

مقامی صرافہ مارکیٹوں میں 24 قیراط کے حامل فی تولہ سونے کی قیمت میں 500 روپے کی کمی ہوئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملک بھر میں سونے کی قیمتوں میں بڑی کمی

عالمی اور مقامی مارکیٹوں میں سونے کی قیمتوں میں کمی کر دی گئی۔

مقامی صرافہ مارکیٹوں میں 24 قیراط کے حامل فی تولہ سونے کی قیمت میں 500 روپے کی کمی ہوئی جس کے بعد فی تولہ سونا 2 لاکھ 40 ہزار 3 سو روپے کا ہو گیا۔ اسی طرح 10 گرام سونے کی قیمتوں میں 429 روپے کمی کے ساتھ 10 گرام سونے کی قیمت 2 لاکھ 6 ہزار 18 روپے ہو گئی۔

دوسری جانب عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمتوں میں کمی ریکار ڈ کی گئی۔ عالمی مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت 4 ڈالر کی کمی کے بعد 2339کی سطح پر آگئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

اسپین کا فلسطین کی حقیقت کو تسلیم کرنا بین الاقوامی منظر نامے پر مثبت پیش رفت ہے، وزیراعظم

سپین نے نہتے فلسطینیوں پر اسرائیل کی جانب سےظلم و جبر اور غاصبانہ عزائم کو اس فیصلے سے مسترد کر دیا، شہباز شریف

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسپین کا فلسطین کی حقیقت کو تسلیم کرنا بین الاقوامی منظر نامے پر  مثبت پیش رفت ہے، وزیراعظم

وزیراعظم محمد شہباز شریف نے سپین کے وزیراعظم پیڈرو سانچیز کے فلسطین کو باضابطہ آزاد ریاست تسلیم کرنے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپین جیسے ملک کا فلسطین کی حقیقت کو تسلیم کرنا بین الاقوامی منظر نامے پر ایک مثبت پیش رفت اور خوش آئند امر ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پیڈرو سانچیز اور سپین کے لوگوں نے نہتے فلسطینیوں پر اسرائیل کی جانب سے جاری تاریخی ظلم و جبر اور غاصبانہ عزائم کو اس فیصلے سے مسترد کر دیا ہے۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ رفح میں اسرائیل کی بلا اشتعال بمباری کے نتیجے میں مزید 45 فلسطینی شہید ہوئے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ فلسطین میں جاری اسرائیلی نسل کشی کو ختم ہونا چاہئے، پاکستان اپنے نہتے فلسطینی بہن بھائیوں کی ایک آزاد فلسطین اور بیت ا

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll