جی این این سوشل

جرم

توہین مذہب کے الزام میں شخص کو زندہ جلا نے کے الزام میں 23 افراد گرفتار

 گرفتار افراد کے خلاف تھانے پر حملہ کرنے اور جلاؤ گھیراؤ کا مقدمہ پہلے سے درج تھا، پولیس نے گرفتار افراد کو تحقیقات کے لئے نامعلوم مقام منتقل کردیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

توہین مذہب کے الزام میں شخص  کو زندہ جلا نے کے الزام میں 23 افراد  گرفتار
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

سوات : سوات کے علاقے مدین میں توہین مذہب کے الزام میں ایک شخص کو زندہ جلانے اور تھانے کو نذر آتش کرنے کے الزام میں 23 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

 گرفتار افراد کے خلاف تھانے پر حملہ کرنے اور جلاؤ گھیراؤ کا مقدمہ پہلے سے درج تھا، پولیس نے گرفتار افراد کو تحقیقات کے لئے نامعلوم مقام منتقل کردیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مزید افراد کی گرفتاری کے لئے چھاپے جاری ہے، مدین میں پرتشدد واقعے کے خلاف دو ایف آئی آر درج کی گئی ہیں، ایک مقدمہ مدین پولیس سٹیشن پر حملہ کرنے والوں کے خلاف درج ہے جبکہ دوسری ایف آئی آر بے حرمتی کرنے والے ملزم سلیمان کے خلاف درج کی گئی ہے ۔

مدین واقعے پر وفاقی تحقیقاتی ادارے کی رپورٹ بھی گزشتہ روز سامنے آئی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ ہوٹل انتظامیہ نے مبینہ ملزم سلیمان کو کمرے کا دروازہ کھولنے کا کہا، ملزم نے دروازہ کھولا اور مبینہ توہین مذہب سےانکار کردیا، مقامی پولیس ملزم کو تھانے لے گئی۔

دوسری جانب مدین واقعے کی تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دی گئی ہے جس کا اعلامیہ جاری کر دیا گیا ہے،اعلامیے کے مطابق جے آئی ٹی 9 ارکان پر مشتمل ہے، ایس پی انویسٹی گیشن کمیٹی کے سربراہ ہوں گے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ملزم کو تھانے لے جانا اہم غلطی تھی، متعلقہ ایس ایچ او نے کسی افسرسے رہنمائی حاصل نہیں کی تھی اور نہ ملزم کو محفوظ مقام پرمنتقل کیا، پولیس نے ملزم کو 40 منٹ تک حراست میں رکھا، دوران حراست بھی ملزم نے توہین مذہب سے انکار کیا۔

تحقیقاتی ادارے کی پورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ ملزم کو تھانے لے جانا اہم غلطی تھی، متعلقہ ایس ایچ او نے کسی افسرسے رہنمائی حاصل نہیں کی تھی اور نہ ملزم کو محفوظ مقام پرمنتقل کیا، پولیس نے ملزم کو 40 منٹ تک حراست میں رکھا، دوران حراست بھی ملزم نے توہین مذہب سے انکار کیا۔

 

پاکستان

پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی معظم جتوئی مبینہ طور پر اغواء

سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے باوجود کہ کسی کو بھی نہیں اٹھایا جائے گا پھر بھی ناقابل تصور اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں، چیئرمین پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی معظم جتوئی  مبینہ طور پر  اغواء

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین بیرسٹر گوہر علی خان نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی جماعت سے تعلق رکھنے والے مظفر گڑھ کے حلقے سے رکن قومی اسمبلی معظم جتوئی کو اغوا کر لیا گیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس (ٹوئٹر) اپنے ایک ٹویٹ میں بیرسٹر گوہر نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے باوجود کہ کسی کو بھی نہیں اٹھایا جائے گا پھر بھی ناقابل تصور اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔

معظم جتوئی کو آج صبح مظفر گڑھ میں ان کے گھر سے اغوا کیا گیا ہے تاہم ان کے مطابق معظم جتوئی پہلے ہی سپریم کورٹ کی روشنی میں تحریک انصاف میں شمولیت کے لیے اپنا بیان حلفی جمع کرا چکے ہیں۔

بیرسٹر گوہر نے کہا کہ ہم ایسے اقدامات کی شدید مذمت کرتے ہیں اور رکن قومی اسمبلی کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتے ہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے مزید کہا کہ ہم ایسے اغوا سے متعلق عدالت کو آگاہ رکھیں گے اور انہیں امید ہے کہ عدالت اس پر کارروائی کرے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں طوفانی بارشوں نے 83 سالہ ریکارڈ توڑ دیا، سیلابی صورتحال

مسلسل بارش کے باعث شہر کی سڑکیں تالاب بن گئیں اور پانی کا ریلا رہائشی علاقوں میں داخل ہو گیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں طوفانی بارشوں نے 83 سالہ ریکارڈ توڑ دیا، سیلابی صورتحال

ٹورنٹو:کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں اتوار کو طوفانی بارشوں نے تباہی مچا دی، جس کے نتیجے میں سیلابی صورتحال پیدا ہو گئی اور 83 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا۔

رپورٹس کے مطابق، ٹورنٹو میں 100 ملی میٹر سے زائد بارش ہوئی، جس سے 1941 میں ہونے والی 83 ملی میٹر بارش کا ریکارڈ ٹوٹ گیا۔ مسلسل بارش کے باعث شہر کی سڑکیں تالاب بن گئیں اور پانی کا ریلا رہائشی علاقوں میں داخل ہو گیا۔

سیلاب کی وجہ سے ٹورنٹو کا ٹریفک نظام درہم برہم ہو گیا۔ ڈان ویلی پارک وے اور اونٹاریو ہائی وے 410 کو سیلابی پانی کی وجہ سے بند کر دیا گیا ہے جبکہ کئی دیگر سڑکیں بھی ٹریفک کے لیے بند ہیں۔ بجلی کے نظام کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے اور شہر کے کئی علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی ہے۔

کینیڈا کے محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اتنی شدید بارش کی توقع نہیں تھی۔ محکمہ نے مزید بارشوں کا انتباہ جاری کیا ہے اور شہریوں کو گھروں سے باہر نہ نکلنے کی ہدایات دی ہیں۔

سیلاب سے ہونے والے نقصانات کا ابھی تک اندازہ نہیں لگایا جا سکا ہے تاہم خدشہ ہے کہ املاک اور انفراسٹرکچر کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا ہے۔

ادارہ برائے ہنگامی حالات کے مطابق، امدادی ٹیمیں متاثرہ علاقوں میں امدادی کاموں میں مصروف ہیں۔ سیلاب سے متاثرہ افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے اور انہیں کھانا پانی اور دیگر ضروری اشیاء فراہم کی جا رہی ہیں۔

شہر کے باسیوں نے حکومت سے امداد کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت کو سیلاب سے متاثرہ افراد کی مدد کے لیے فوری اقدامات کرنے چاہئیں۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ کینیڈا پر موسمیاتی نظام کا دباؤ برقرار ہے اور اگلے چند دنوں تک بارشوں کا سلسلہ جاری رہنے کا امکان ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

صوبائی حکومت پر دہشتگردی کی ذمہ داری ڈالنا وفاق کی ناکامی کا ثبوت ہے، بیرسٹر سیف

خواجہ آصف ہروقت زہریلے لہجے میں اپنا بغض نکالتے رہتے ہیں، مشیر اطلاعات کے پی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

صوبائی حکومت پر دہشتگردی کی ذمہ داری ڈالنا وفاق کی ناکامی کا ثبوت ہے، بیرسٹر سیف

پی ٹی آئی رہنما اور مشیر اطلاعات خیبر پختونخوا بیرسٹر سیف نے  نے خواجہ آصف کو ملکی سیاست کی پھپھے کٹنی قرار دیتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف ہروقت زہریلے لہجے میں اپنا بغض نکالتے رہتے ہیں اگر یہ جنگ صوبوں نے ہی لڑنی ہے تو آپ کیا تبرک بانٹنے کیلئے وزیر دفاع بنے بیٹھے ہیں ۔

بیرسٹر سیف کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت پر دہشتگردی کی ذمہ داری ڈالی جارہی ہے۔ ایسا کرنا وفاقی حکومت کی نااہلی ہے۔ خواجہ آصف ملکی سیکورٹی جیسے اہم معاملات پر بھی سیاسی بیان بازی سے باز نہیں آتے ہیں۔ حکومت پی ٹی آئی کے خلاف بیان بازی کے بجائے ملکی دفاع پر توجہ دے۔

انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف سیکیورٹی جیسے اہم معاملات پر بھی بیان بازی سے باز نہیں آتے، اپنے فرائض میں ناکامی دوسروں کے سر ڈالنا وفاقی حکومت کی نااہلی کا ثبوت ہے، دہشت گردی کی حالیہ لہر کی وجہ سے خیبر پختونخوا کے عوام کا خون بہہ رہا ہے۔ خیبر پختونخواہ لہو لہان ہے لیکن یہ شخص پشتونوں کے زخموں پر نمک چھڑک رہا ہے۔

بیرسٹر سیف نے کہا کہ سب کو پتہ ہے کہ دہشت گردی کراس بارڈر مسئلہ ہے، ملکی سرحدوں کی حفاظت وزارت دفاع کی ذمہ داری ہے، جھوٹ اور الزامات کی سیاست خواجہ آصف کا پرانا وطیرہ ہے، خواجہ آصف کے بے ہودہ بیانات شہدا کے لواحقین کی دل ازاری کا موجب بن رہے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll